کوئلہ بحران کا حل نکالنے کی جگہ ریاستوں کو قصوروار ٹھہرانے کی ہو رہی کوشش!

Source: S.O. News Service | Published on 12th October 2021, 11:34 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12؍اکتوبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) ہندوستان میں کوئلہ بحران کے اندیشوں کا اعتراف کرنے اور اس سے پیدا ہونے والے بجلی بحران کا حل نکالنے کی جگہ مرکز ہر بار کی طرح قصور ریاستی حکومتوں پر ڈالنے کی کوشش کر رہا ہے۔ مرکز نے ریاستوں کو غیر الاٹ بجلی نہیں فروخت کرنے کی تنبیہ دیتے ہوئے واپس لے لینے کی دھمکی دی ہے۔ مرکز نے متنبہ کیا ہے کہ اگر بجلی کا استعمال صارفین کی ضرورتوں کو پورا کرنے کے لیے نہیں کیا جا رہا ہے، بلکہ فائدے کے لیے اسے زیادہ قیمتوں پر بجلی ایکسچینج کو فروخت کیا جا رہا ہے، تو ایسی ریاستوں کو الاٹ نہیں کی گئی بجلی واپس لے لی جائے گی۔

مرکز نے یہ ہدایت غیر الاٹ (الاٹ نہیں کی گئی) بجلی کو لے کر جاری کی ہے۔ مرکز کا کہنا ہے کہ بجلی بحران کے درمیان بجلی کے اس حصے کے استعمال کو روکنے کے لیے یہ قدم اٹھایا گیا ہے۔ مرکزی وزارت برائے توانائی کی یہ ہدایت کئی ریاستوں کے ذریعہ طلب میں اچانک اضافہ کے سبب بجلی کی کمی کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد جاری ہوئی ہے۔ اس کے ساتھ ہی فائدہ کو زیادہ کرنے کے لیے ایکسچینجوں پر دستیاب بجلی کا ایک حصہ فروخت کرنے سے بجلی کی ایک یونٹ کے لیے قیمتیں 15 روپے تک پہنچ گئی ہیں۔

تمل ناڈو، پنجاب، دہلی، راجستھان، آسام، مدھیہ پردیش سمیت کئی ریاستوں نے کوئلہ پر مبنی پاور پلانٹس میں ایندھن کی کمی کے مدنظر اپنے یہاں بجلی کی حالت میں سنگین بحران کی جانکاری دی ہے، جب کہ وبا کے بعد بجلی کی طلب میں غیر معمولی اضافہ دیکھا جا رہا ہے، کیونکہ اب ملک بھر میں معاشی سرگرمیاں تیز ہو چکی ہیں۔

وزارت مالیات کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس کے دھیان میں یہ بات آئی ہے کہ کچھ ریاستیں اپنے صارفین کو بجلی کی فراہمی نہیں کر رہے ہیں اور بجلی کی تخفیف (لوڈ شیڈنگ) کر رہے ہیں۔ ساتھ ہی وہ بجلی ایکسچینج میں بھی اونچی قیمتوں پر بجلی فروخت کر رہے ہیں۔ غیر الاٹ بجلی پر تازہ کارروائی بجلی کے اس حصے کے غلط استعمال کو روکنے کے لیے ہے۔

مرکز کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اس لیے ریاستوں سے گزارش کی گئی ہے کہ وہ اپنے صارفین کو بجلی کی فراہمی کے لیے الاٹ نہیں کی گئی بجلی کا استعمال کریں۔ اضافی بجلی کے معاملے میں ریاستوں سے گزارش کی گئی ہے کہ وہ حکومت ہند کو مطلع کریں تاکہ اس بجلی کو دیگر ضرورت مند ریاستوں کو ایک بار پھر الاٹ کیا جا سکے۔ مرکز نے کہا ہے کہ اگر یہ پایا جاتا ہے کہ کوئی ریاست اپنے صارفین کی ضرورت کو پورا نہیں کر رہی ہے اور بجلی ایکسچینجوں میں زیادہ قیمت پر بجلی فروخت ہو رہی ہے تو ایسی ریاستوں کے صارفین کو الاٹ نہیں کی گئی بجلی واپس لے لی جائے گی اور دیگر ضرورت مند ریاستوں کو الاٹ کر دی جائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس نے پیگاسس کیس پرعدالت کے فیصلے کاخیرمقدم کیا

کانگریس نے بدھ کو سپریم کورٹ کے مبینہ پیگاسس جاسوسی کیس کی تحقیقات کے لیے تین رکنی کمیٹی قائم کرنے کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہاہے کہ’ستیہ میو جیتے۔‘‘پارٹی کے چیف ترجمان رندیپ سرجے والانے ٹویٹ کیاہے کہ بزدل فاشسٹوں کی آخری پناہ گاہ مبینہ قوم پرستی ہے۔

بی جے پی رکن اسمبلی کرشنا کلیانی بھی ترنمول کانگریس میں شامل

 بنگال بی جے پی کو دھکچے لگنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اب رائے گنج سے بی جے پی کے ممبر اسمبلی کرشنا کلیانی جنہوں نے یکم اکتوبر کو بی جے پی چھوڑ دی تھی نے قیاس آرائیوں کے مطابق آج پارٹی کے سکریٹری جنرل پارتھو چٹرجی کی موجودگی میں ترنمول کانگریس میں شامل ہوگئے۔

ہندوتوا وادی مظاہرین کے ہاتھوں تریپورہ کی 16 مساجد میں توڑ پھوڑ، 3 مساجد نذر آتش

شمال مشرقی ریاست تریپورہ میں حالات دن بدن شدت اختیار کرتے جا رہے ہیں۔ بنگلہ دیش میں ہندوؤں کے خلاف ہوئے تشدد کی مذمت میں کئی دنوں سے ریاست بھر میں مظاہرے اور ریلیاں جاری تھیں، لیکن یہ ریلیاں شدت اختیار کر گئیں اور ریاست کے مسلمانوں کے خلاف متشدد ہوگئیں۔

وزیراعلی ملازمتیں فراہم کریں یا مستعفی ہوجائیں: وائی ایس شرمیلا

 وائی ایس آر تلنگانہ پارٹی کی سربراہ وائی ایس شرمیلا نے کہا ہے کہ ہر گھر کو ایک ملازمت یا نہیں تو بے روزگاری کا الاونس فراہم کرنے ولے وزیراعلی کے چندرشیکھرراو کے وعدہ پر یقین کرتے ہوئے عوام نے ان کو اقتدار حوالے کیا، تاہم موجودہ صورتحال یہ ہوگئی ہے کہ ریاست میں بے روزگاری میں ...

پیگاسس معاملہ پر مرکز کو سپریم کورٹ سے جھٹکا! تفتیشی کمیٹی کا قیام

پیگاسس معاملہ میں سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت کو جھٹکا دیتے ہوئے کہا کہ پیگاسس معاملہ کی جانچ ہوگی، عدالت نے جانچ کے لئے ماہرین کی ایک کمیٹی بھی تشکیل دے دی ہے۔ عدالت عظمیٰ نے کہا کہ اس معاملہ میں مرکز کا رخ واضح نہیں اور رازداری کی خلاف ورزی کی تحقیقات ہونی چاہئے۔