مینگلور میں شہریت قانون کی مخالفت میں احتجاج؛ اسپتال کے باہربھی لاٹھی چارج، اسپتال کے اندر توڑپھوڑ کی وڈیو وائرل؛موبائل اور انٹرنیٹ سروس معطل

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 20th December 2019, 1:38 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ملکی خبریں | انٹریو |

مینگلور 19 ڈسمبر (ایس او نیوز)  شہریت قانون کی مخالفت میں جمعرات کو مینگلور میں منعقدہ احتجاج کے دوران پتھراو، لاٹھی چارج اور پولس فائرنگ کے بعد دو لوگوں کی موت واقع ہوگئی تھی جبکہ دو کی حالت پولس کی گولی لگنے سے نازک بتائی گئی تھی، بتایا جارہا تھا کہ واقعے کے بعد احتجاجیوں کا ایک بڑا ہجوم پولس پر حملہ آور ہوا تھا، مگر رات تک ملی اطلاع کے مطابق پولس نے حالات پر قابو پالیا ہے۔ انتظامیہ کی جانب سے پہلے پانچ پولس تھانہ حدود میں کرفیو نافذ کئے جانے کا اعلان کیا گیا تھا، مگر رات تک پورے شہر میں کرفیو نافذ کئے جانے کا اعلان کیا گیا ہے۔

خبر ملی ہے کہ پولس کی گولی لگنے سے پانچ لوگ شدید زخمی ہوگئے تھے، جن کو شہر کے ہائی لینڈ اسپتال لے جانے تک دو کی موت واقع ہوگئی، جبکہ دیگر دو کی حالت نازک بنی ہوئی ہے۔ دو لوگوں کی موت کی اطلاع پھیلتے ہی میت دیکھنے اور زخمیوں کی عیادت کرنے عوام کا ایک ہجوم ہائی لینڈ اسپتال جمع ہوگیا، مگر پولس نے یہاں پہنچ کر بھی ہجوم پر لاٹھیاں برسانی شروع کردی، اس تعلق سے ایک وڈیو کلپ بھی سوشیل میڈیا پر وائر ل ہوگئی ہے جس میں بتایا جارہا ہے کہ یہ کلپ ہائی لینڈ اسپتال کے اندر کی ہے، کلپ میں دیکھا جارہا ہے کہ پولس اسپتال کے اندر پہنچ کر دروازوں پربے رحمی کے ساتھ لات مارنے کے ساتھ ساتھ ڈنڈے برسا رہی ہے۔

اسپتال انتظامیہ کی جانب سے پولس پر الزام لگایا گیا ہے کہ جب شدید زخمی  لوگوں کو  ہائی لینڈ اسپتال لایا گیا تو پولس اسپتال کے اندر گھس گئی اور توڑپھوڑ شروع کردیا۔ اسپتال کے ڈاکٹر حسن مبارک نے بتایا کہ پولس نے اسپتال کے اندر پہنچ کر عوام پر لاٹھیاں برسانی شروع کردی۔ ڈاکٹر مبارک کے مطابق پولس کا ایک گروپ شام قریب 6:40  کو اسپتال کے اندر داخل ہوا اوراسپتال لانے والے مریضوں کے ساتھ آنے والوں کی پیٹائی شروع کردی۔ انہوں نے بتایا کہ اسپتال میں کافی توڑ پھوڑ مچائی گئی ہے جس کی پوری ریکارڈنگ سی سی ٹی وی کیمرے میں قید ہوچکی ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اس موقع پر آئی سی یو میں دیگر دوسرے مریض بھی ایڈمٹ تھے اور پولس کی توڑ پھوڑ سے مریضوں میں خوف وہراس پھیل گیا۔

پورے شہر میں کرفیو:  آج جمعرات دوپہر قریب ڈیڑھ بجے امتناعی احکامات 144 نافذ ہونے کے باوجود ہزاروں کی تعداد میں لوگ جب ڈی سی دفتر کے باہر جمع ہوکر شہریت قانون کی مخالفت میں احتجاج کررہے تھے اور اس قانون کو واپس لینے کا مطالبہ کررہے تھے تو اس دوران مبینہ طور پر  بتایا جارہا ہے کہ احتجاجیوں میں سے کسی نے پولس  پر پتھراو کیا، جس کے بعد پولس نے پُرہجوم احتجاجیوں پر لاٹھیاں برسانی شروع کردیں۔ اس موقع پر احتجاجی جب  پولس کے ڈنڈوں سے بچنے کی کوشش میں بھاگنے لگے تو افراتفری مچ گئی، اس دوران احتجاجی تشدد پر اُتر آئے اور انہوں نے پولس پر پتھراو شروع کردیا۔  بتایا جارہا ہے کہ پولس نے پتھراو کے جواب میں پہلے ہوا میں فائرنگ کرتے ہوئے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کی کوشش کی، مگر جب ہجوم پر کوئی اثر نہیں پڑا تو پولس نے ہجوم  پر فائرنگ شروع کردی۔ بتایا گیا ہے کہ پولس کی ایک گولی ایک احتجاجی کی انکھ میں جالگی، جبکہ دوسرے کے پیٹ پر گولی لگی، ان دونوں کو جب اسپتال لے جایا گیا تو دونوں نے سپتال میں دم توڑ دیا، بتایا گیا ہے کہ مزید تین لوگوں کو بھی گولیاں لگی ہیں جن میں دو کی حالت ہنوز نازک بنی ہوئی ہے ان میں دو کو ہائی لینڈ اسپتال میں داخل کیا گیا ہے جبکہ تیسرے شخص کے تعلق سے معلوم نہیں ہوسکا کہ وہ کس اسپتال میں ایڈمٹ ہے۔

مرنے والوں کی شناخت مینگلور کے کندک کے رہائشی عبدالجلیل (48) اور کُدرولی کے  رہائشی   نوشین (28) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔زخمیوں میں مینگلور کے سابق مئیر مسٹر کے اشرف بھی شامل ہیں جن کے سر  کو بھی  گولی لگنے کی خبر ہے۔ اسی طرح جلیل، نظام، آصف اور نذیر کو بھی مختلف اسپتالوں میں شدید زخمی حالت میں داخل کیا گیا ہے۔

احتجاجی پولس پر حملہ آور ہوئے تھے:  اخبارنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے  مینگلور سٹی پولس کمشنر ڈاکٹر پی ایس ہرشا نے جمعرات کی شام کو بتایا کہ احتجاجیوں نے پولس پر حملہ کردیا تھا جس کی وجہ سے پولس نے پہلے لاٹھی چارج  کی پھر بعد میں فائرنگ کی۔ انہوں نے بتایا کہ احتجاجیوں نے پولس اسٹیشن پر بھی حملہ کردیا تھا اور وہ پولس کو جان سے مارنے کے درپے تھے، احتجاجیوں کے تیور کو دیکھتے ہوئے ہمیں اُن کے خلاف فائرنگ کرنی  پڑی۔ ڈاکٹر پی ایس ہرشا نے بتایا کہ  احتجاجیوں کے حملے میں کئی پولس اہلکار زخمی ہوئے ہیں، جبکہ دو ڈی وائی ایس پی کو  شدید زخمی حالت میں آئی سی یو  میں داخل کیا گیا ہے۔  ڈاکٹر ہرشا نے عوام الناس سے اپیل کی کہ وہ پولس کے ساتھ تعاون کریں اور امن و امان بحال کرنے میں ہرممکن ساتھ دیں۔ ڈاکٹر ہرشا کے مطابق جملہ 15 پولس اہلکاروں کو چوٹیں آئی ہیں جس میں آٹھ کی حالت نازک ہے۔ڈاکٹر ہرشا نے بتایا  " جب احتجاج تشدد میں تبدیل ہوگیا تو ہمیں شہر میں لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال کو برقرار رکھنا تھا اور ہجوم کو منتشر کرنا تھا جس کے لئے ہمیں اپنی طاقت کا استعمال کرنا پڑا"

موبائل،انٹرنیٹ سروس سسپنڈ:  مینگلور میں احتجاج کے دوران ہوئی گڑبڑی اور پولس فائرنگ میں دو لوگوں کی موت ہونے کے بعد کرناٹکا ایڈیشنل چیف سکریٹری رجنیش گویل نے جمعرات شام کو انٹرنیٹ سمیت موبائل سروس اگلے 48 گھنٹوں کیلئے سسپنڈ کردیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ڈائرکٹر جنرل اینڈ انسپکٹر جنرل آف پولس کی درخواست پر  مینگلور کے ساتھ ساتھ پورے ضلع جنوبی کینرا میں موبائل اور انٹرنیٹ سروس معطل کردی گئی ہے۔

مینگلور میں 22 ڈسمبر تک کرفیو:  مینگلور میں حالات کی نزاکت کو دیکھتے ہوئے  پورے شہر میں  22 ڈسمبر رات بارہ بجے تک کرفیو نافذ کئے جانے کا اعلان کیا گیا ہے۔ اس سے پہلے صرف پانچ پولس تھانہ حدود میں کرفیو نافذ کئے جانے کا اعلان کیا گیا تھا، مگررات کا اندھیرا پھیلنے تک  پورے شہر میں کرفیو نافذ کرنے کا اعلان کیا گیا۔ کرفیو کے اعلان کے ساتھ ہی کل جمعہ کو  جمعہ کی نماز کو لے کر مسلمان فکرمند ہوگئے ہیں۔

مینگلور میں حالات پر مکمل طور پر قابو پالیا گیا ہے مگر حالات  نہایت کشیدہ بنے ہوئے ہیں،  حالات پر گہری نظر رکھنے  پولس کے اعلیٰ حکام شہر پہنچ چکے ہیں  اور پولس کی زائد فورس پورے  شہر میں تعینات کی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:کووِڈ سے ہلاک ہونے والے شخص کی آخری رسومات میں رکاوٹ۔ 70لوگوں پرہو اکیس درج

یہاں کے کووِڈ اسپتال میں سرسی کے کورونا مریض کی موت واقع ہونے پرسرودیا نگر میں اس شخص کی آخری رسومات ادا کرنے میں جو رکاوٹ پیدا کی گئی تھی اس ضمن میں کاروارتحصیلدار آر وی کٹّی کی شکایت پر ٹاؤن پولیس نے 70لوگوں پرسرکاری افسر کو اپنے فرئض انجام دینے سے روکنے کاکیس درج کیاہے۔

 استعمال شدہ موٹر گاڑیوں کی فروخت کے نام پرفوجیوں کے روپ میں جعلساز گروہ ہوا ہے سرگرم۔ عوام محتاط رہیں!

جعلسازوں کا ایک گروہ فوجیوں کے نام سے استعمال شدہ گاڑیوں کی فروخت کرنے والا ایک جعلساز گروہ سوشیل میڈیا پرسرگرم ہوگیا ہے، جس کے پھندے سے عوام کو محتاط رہنے کی تنبیہ کی گئی ہے۔

’ہنگایو‘ آئسکریم کے منیجنگ ڈائرکٹر بھٹکل کے پردیپ پائی کوملی ’ویژن گروپ‘ کی رکنیت 

بھٹکل کے مشہور و معروف تاجر او ر ’ہنگایو‘ آئسکریم پرائیویٹ لمیٹیڈکے منیجنگ ڈائریکٹر پردیپ پائی کو دھارواڑ ڈسٹرکٹ میں فاسٹ موئنگ کنزیومر گُڈس (ایف ایم سی جی)مینوفیکچرنگ کلسٹر قائم کرنے کے لئے کرناٹکا ’ویژن گروپ‘کا رکن منتخب کیا گیا ہے جبکہ منگلورو کے رہنے والے اور جیوتی ...

دبئی سے 178 مسافر صحیح سلامت پہنچے بھٹکل؛ ہوٹل اور اسکول میں کیا گیا کورنٹائن

کورونا لاک ڈاون میں پھنسے دبئی کے 178 لوگ آج بدھ صبح صحیح سلامت بھٹکل پہنچ گئے جن میں 103 مرد حضرات کو  جامعہ آباد روڈ پر واقع علی پبلک اسکول میں کورنٹائن کیا گیا ہے تو وہیں 75 لوگوں کو جن میں زیادہ تر فیملیس اور بچے ہیں، پرائیویٹ ہوٹل میں کورنٹائن کیا گیا ہے۔

اُترکنڑا میں آج پھر کورونا کے 20 کیسس؛ بھٹکل کے ایک شخص کی مینگلور میں موت سمیت 13 پوزیٹیو

اُترکنڑا میں کورونا کے معاملات رُکنے کا نام نہیں لے رہے ہیں اور ہرروز  کورونا سے متاثرہ لوگ یہاں سامنے آرہے ہیں، حیرت کی بات یہ ہے کہ ضلع کے بھٹکل میں بھی کورونا پوزیٹیو معاملات  تھمنے کا نام نہیں لے رہے ہیں، ایک طرف ضلع میں 20 کورونا پوزیٹیو کے معاملات سامنے آئے ہیں تو اس میں ...

اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر سے ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ

جنوبی کینرا بنٹوال تعلقہ کے سجی پانڈو دیہات میں ہر سال بارش کے موسم میں گزشتہ 30 برسوں سے لوگوں کو ہمیشہ  پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ یہ علاقہ اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر کے حلقہ میں آتا ہے اور یہاں مسلمانوں کی کثیر آباد ی ہے۔

کرناٹک میں عالمی وباء سے ایک ہی دن 54 ؍افراد لقمہ اجل، 24 گھنٹوں کے دوران بنگلورو میں 1148 سمیت ریاست بھر میں 2062 پوزیٹیو کیس

عالمی وباء کو رونا وائرس کا قہر ہنوز جاری ہے ریاست میں ایک ہی دن کورونا وائرس کے 2062 کیس درج ہوئے ہیں۔ اب تک کی یہ ریکارڈ تعداد ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کووڈ۔19 کی زد میں آکر بنگلورو میں 13 سمیت ریاست بھر 54 ؍افراد لقمہ اجل بن گئے ہیں۔

اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر سے ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ

جنوبی کینرا بنٹوال تعلقہ کے سجی پانڈو دیہات میں ہر سال بارش کے موسم میں گزشتہ 30 برسوں سے لوگوں کو ہمیشہ  پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ یہ علاقہ اُلال کے رکن اسمبلی یوٹی قادر کے حلقہ میں آتا ہے اور یہاں مسلمانوں کی کثیر آباد ی ہے۔

منگلورو۔کاسرگوڈ سرحد پر مسافروں کیلئے پریشانی

ریاست میں گزشتہ ماہ اپریل سے ہی کورونا وائرس پھیلنے کے نتیجہ میں کیرالہ ۔ کرناٹک کی سرحد پر واقع کاسرگوڈ اور منگلورو کے درمیان روازنہ ملازمت اور تعلیم کے سلسلہ میں آنے جانے والے لوگوں کیلئے ہر دن نت نئی پریشانیوں کا سامنا کرناپڑرہا ہے۔

کرناٹک میں کووڈ۔19 کمیونٹی پھیلاؤ کا کوئی امکان نہیں، مرکزی ٹیم کا چیف منسٹر و عہدیداروں کے ساتھ تبادلہ خیال؛ سری راملو کی پریس کانفرنس

کرناٹک نے منگل کے روز مرکز ی ٹیم کو بتایا کہ ریاست میں کووڈ۔19 کے کمیونٹی پھیلاؤ کا کوئی امکان نہیں ہے۔ریاستی وزیر صحت و خاندانی بہبود بی سری راملو نے میڈیا سے کہا ’’ ہم نے یہ واضح کردیا ہے کہ یہاں کمیونٹی پھیلاؤ کا امکان نہیں ہے۔ ہم ، دوسرے اور تیسرے مرحلہ کے درمیان ہیں‘‘۔

کرناٹک میں کورونا کا قہر جاری؛ پھر 1498 نئے معاملات، صرف بنگلور سے ہی سامنے آئے 800 پوزیٹیو

کرناٹک میں کورونا کا قہر جاری ہے اور ریاست  میں روز بروز کورونا کے معاملات میں اضافہ دیکھا جارہا ہے، ریاست کی راجدھانی اس وقت  کورونا کا ہاٹ اسپاٹ بنا ہوا ہے جہاں ہر روز  سب سے زیادہ معاملات درج کئے جارہے ہیں۔ آج منگل کو پھر ایک بار کورونا کے سب سے زیادہ معاملات بنگلور سے ہی ...

کورونا: ہندوستان میں ’کمیونٹی اسپریڈ‘ کا خطرہ، اموات کی تعداد 20 ہزار سے زائد

  ہندوستان میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے معاملوں کے درمیان کمیونٹی اسپریڈ یعنی طبقاتی پھیلاؤ کا  اندیشہ بڑھتا نظر آرہا ہے۔ بالخصوص کرناٹک  میں کورونا انفیکشن کے کمیونٹی اسپریڈ کا اندیشہ ظاہر کیا جارہا ہے ۔ کرناٹک کے علاوہ گوا، پنجاب و مغربی بنگال کے نئے ہاٹ اسپاٹ بننے کے ...

جموں:سرکاری بنگلوں میں وزراء اور افسران کے غیرقانونی قبضے پرہائی کورٹ نے رپورٹ طلب کی 

ریاست کے سرکاری بنگلوں میں غیر قانونی طور پر مقیم سابق وزراء اور افسرشاہوں سے یہ بنگلہ خالی کروانے کو لے کر جموں کشمیر ہائی کورٹ نے سرکار سے پوچھا ہے کہ ایسے کتنے بنگلوں پر یہ وزراء اور افسرشاہ قابض ہیں۔

سی بی ایس ای کے نصاب میں کمی کے تنازعہ پر ایچ آر ڈی کے وزیر نے کہا: سیاست کو تعلیم سے دور رکھیں، غلط فہمی نہ پھیلائیں 

سنٹرل بورڈ آف سیکنڈری ایجوکیشن نے کورونا وائرس کی وجہ سے سال 2020-21 کے لئے کلاس نویں سے لے کر12ویں تک کے نصاب سے جمہوری حقوق، وفاقیت اور سیکولرازم جیسے اہم چیپٹرہٹا دیئے گئے ہیں۔

مرکزی وزیر اننت کمار ہیگڈے نے دیاجنتادل اورکانگریس کے مشترکہ امیدوار اسنوٹیکر کے الزامات کا جواب (کنڑاروزنامہ کراولی منجاؤمیں شائع شدہ انٹرویو کا ترجمہ )

ضلع شمالی کینرا کی پارلیمانی سیٹ پر موجودہ رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے کا مقابلہ براہ راست جنتادل ایس اور کانگریس کے مشترکہ امیدوار آنند اسنوٹیکر کے ساتھ ہے۔

دبئی کے معروف ڈاکٹر اسماعیل قاضیا سے ایک ملاقات جن کے تینوں بیٹے بھی ڈاکٹر ہیں

طبی میدان یعنی میڈیکل سے وابستگی کو بہت ہی معتبر اور مقدس سمجھا جاتاہے ، گرچہ جدید دورمیں مادیت کی وجہ سے اس میں کچھ کمی ضرور آئی ہے مگر آج بھی ایسے بے شمار طبیب ہیں جو عوام کی بھلائی کی خاطر ڈاکٹری پیشہ سے وابستہ رہتے ہوئے مخلصانہ خدمات انجام دے رہےہیں۔ مسلمانوں نے طب کے میدان ...

غلط فہمیوں کے ازالہ کے ذریعہ ہم آہنگی کا قیام ممکن: کامن سیول کوڈ کی تجویز مسلمانوں کے ساتھ ناانصافی اور ظلم ؛ جسٹس سچر کا انٹرویو

دس سال قبل ملک میں مسلمانوں کی تعلیمی، سماجی، معاشی اور سیاسی صورتحال سے متعلق حقائق کو منظر عام پر لاتے ہوئے مسلمانوں کی صورتحال کو دلت اور پسماندہ طبقات سے بدتر قرار دیتے ہوئے مسلمانوں کی فلاح وبہبود کیلئے مفید مشورے پیش کرنے والے 92سالہ جسٹس راجیندرا سچرنے ڈنکے کی چوٹ پر ...