مودی کی قیادت میں ملک کاتمام نظام مفلوج عظیم اتحاد کی انتخابی مہم میں چندرا بابوکادعویٰ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 15th April 2019, 11:09 AM | ملکی خبریں |

حیدرآباد، 15؍اپریل (ایس او نیوز؍یواین آئی )پہلے مرحلہ میں آندھراپردیش میں انتخابات کے اختتام کے بعد وزیراعلی و تلگودیشم کے قومی صدر این چندرابابونائیڈو ملک میں عظیم اتحاد میں شامل جماعتوں کی حمایت میں مہم چلانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔سابق وزیراعظم دیوے گوڑا نے نائیڈو سے خواہش کی تھی کہ وہ کرناٹک میں عام انتخابات کے موقع پر جنتا دل ایس کی حمایت میں مہم چلائیں ۔اے پی میں تلگودیشم کی حمایت میں قومی لیڈران فاروق عبداللہ،ممتابنرجی، اروند کیجروال ،دیوے گوڑا نے حصہ لیاتھا۔اگرچہ کہ کئی دیگر لیڈر نے اے پی میں تلگودیشم کی حمایت میں انتخابی مہم چلانے کا ارادہ ظاہر کیاتھا تاہم وہ اپنی اپنی ریاستوں میں مہم کے سبب مصروف ہوگئے تھے جس کی وجہ سے وہ اے پی نہیں آسکے ۔ چندرا بابو نائیڈو،جمہوریت بچاؤ ، ملک بچاؤکے نعرے کے ساتھ بی جے پی کے خلاف مہم چلارہے ہیں ۔وہ دعوی کر رہے ہیں کہ مودی کی قیادت میں ملک کا تمام نظام مفلوج ہوگیا اور یہ نظام صرف بی جے پی کے لئے ہی کام کر رہا ہے ۔ چندرابابونائیڈو نے یہ واضح کیا ہے کہ وہ ملک بھر میں بی جے پی کے خلاف چھ مرحلوں میں ہونے والے انتخابات کے سلسلہ میں مہم چلائیں گے اور ملک کو یہ بتائیں گے کہ کس طرح مرکز نے الیکشن کمیشن کے دفتر کا غلط استعمال کیا ہے ۔اس سے ملک کی دیگر سیاسی جماعتوں کو بی جے پی کے انتخابی حربوں کو سمجھنے میں مدد ملے گی۔دوسری طرف چندرابابو اس با ت کے لئے پُرعزم ہیں کہ وہ مودی کو بے نقاب کریں گے کیونکہ مرکز نے انتخابات کے دوران اے پی میں تلگودیشم کے لیڈروں کو خوفزدہ کرنے کے لئے انکم ٹیکس،ای ڈی ،انٹلی جنس بیورواوردیگر مرکزی ایجنسیوں کا استعمال کیا ہے ۔بتایاجاتا ہے کہ جلد ہی چندرابابو نائیڈو دیگر ریاستوں میں انتخابی مہم کے سلسلہ میں شیڈول جاری کریں گے ۔

ایک نظر اس پر بھی

الیکشن کمیشن کا حلف نامہ - گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات قانون کے مطابق، کمزور پڑ رہی کانگریس 

گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کو لے کر کانگریس کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے حلف نامہ داخل کیا ہے الیکشن کمیشن نے دو سیٹوں پر الگ الگ انتخابات کرانے کے اپنے فیصلے کو برقرار رکھا۔

بی ایس این ایل کی حالت خراب؛ ملازمین کو جون کی تنخواہ دینے کے لیے نہیں ہیں رقم

رکاری ٹیلی کام کمپنی بی ایس این ایل نے حکومت کو ایک خط  بھیجا ہے، جس میں کمپنی نے آپریشنز جاری رکھنے میں تقریبا نااہلی ظاہر کی ہے۔کمپنی نے کہا ہے کہ رقم میں  کمی کے سبب کمپنی کے ملازمین کو  جون ماہ کی تنخواہ  تقریبا 850 کروڑ روپے  دے پانا مشکل ہے۔کمپنی پر ابھی قریب 13 ہزار کروڑ ...