کورونا انفیکشن: برازیل میں حالات تشویشناک، 77 ہزار سے زائد ہلاکتیں

Source: S.O. News Service | Published on 18th July 2020, 5:20 PM | عالمی خبریں |

ریو ڈی جنیرو،18؍جولائی(ایس او نیوز؍ایجنسی) عالمی وبا کوروناوائرس سے سنگین طور سے متاثر برازیل میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کووڈ-19 کے 34،177 نئے کیسز سامنے آئے ہیں ، اور اس کی تعداد 20،46،328 کو عبور کر چکی ہے۔ برازیل کی وزارت صحت کی طرف سے ہفتے کے روز جاری اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں اس وبا کی وجہ سے 1163 افراد کی ہلاکت سے مرنے والوں کی تعداد 77،000 سے تجاوز کر کے 77،851 ہوگئی ہے۔

برازیل میں 13،97،000 سے زیادہ افراد کورونا وائرس سے پوری طرح صحت یاب ہوچکے ہیں۔ ایک روز قبل برازیل میں کورونا وائرس کے 45،403 نئے کیسز رپورٹ ہوئے تھے اور کووڈ 19 کی وجہ سے 1322 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ اس سے پہلے کے مقابلے میں برازیل میں کورونا کے نئے کیسز میں کمی واقع ہوئی ہے۔

امریکہ کی جان ہاپکنز یونیورسٹی کے سائنس اور انجینئرنگ (سی ایس ایس ای) کے جاری کردہ تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق برازیل (20.46 لاکھ) پہلے ہی کورونا متاثرین کی تعداد کے لحاظ سے امریکہ (36.38 لاکھ) سے پیچھے ہے۔ کورونا کی وجہ سے ہونے والی اموات کی فہرست میں برازیل ہی امریکہ کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔

برازیل کے صدر جیئر بولسنارو نے کورونا وائرس کو مستقل طور پر ایک عام فلو قرار دیا تھا جس کی وجہ سے وہ شدید تنقید کا نشانہ بنے تھے۔ مسٹر بولسنارو خود بھی کورونا سے متاثر ہوئے ہیں۔ وہ مارچ میں اپنے وفد کے ہمراہ امریکہ گئے تھے جس کے بعد ان کے وفد کے 20 ممبران کو کورونا سے متاثر پایا گیا تھا۔ اہم بات یہ ہے کہ برازیل میں کوروناوائرس کا پہلا کیس 26 فروری کو ملا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

بحرین کی اسرائیل سے ڈیل،علاقائی سلامتی کو تقویت ملے گی: شیخ سلمان کی نیتن یاہو سے گفتگو

بحرین کے ولی عہد شیخ سلمان بن حمد آل خلیفہ نے اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو سے ٹیلی فون پر بات چیت کی ہے۔انھوں نے عالمی سلامتی اور امن کو مضبوط بنانے اور امن ، استحکام اور خوش حالی کے فروغ کے لیے مسلسل کوششیں جاری رکھنے کی ضرورت پر زوردیا ہے۔

ایردوآن نے یو این میں اٹھایا مسئلہ کشمیر، ’اندرونی معاملات میں دخل نہ دے ترکی‘ انڈیا کی تاکید

 جموں و کشمیر کے حوالہ سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ترکی کے صدر رجب طیب اردوآن کے بیان پر اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندہ ٹی ایس ترومورتی نے سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترکی کو دوسرے ممالک کی خودمختاری کا احترام کرنا سیکھنا چاہئے۔