کولکتہ میں 14 نوزائیدہ بچوں کی سڑی گلی لاشیں برآمد

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd September 2018, 11:38 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کولکتہ3؍ستمبر(ایس و نیوز؍ایجنسی)جنوبی کولکتہ کے ہری دیو پور میں ایک خالی پلاٹ سے14 نوزائیدہ بچوں کی سڑی گلی لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔ یہ لاشیں ایک پلاسٹک کے تھیلے میں بند ملیں۔ پولیس کے مطابق لاشیں کافی حد تک ڈھانچہ میں تبدیل ہوچکی ہیں۔ اس واقعہ سے پورے علاقہ میں افرا تفری مچ گئی ہے۔ فی الحال پولیس نے اس معاملہ کی جانچ شروع کردی ہے۔

نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق بتایا جارہا ہے کہ زمین کی کھدائی کے دوران14بچوں کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں۔ حالانکہ ان 14لاشوں میں سے کتنے لڑکیوں کی ہیں اور کتنے لڑکوں کی ، اس سلسلہ میں ابھی تک کوئی جانکاری موصول نہیں ہوئی ہے۔ لیکن معاملہ کے انکشاف کے بعد کولکتہ پولیس فوری طور پر حرکت میں آگئی ہے۔

ایک پولیس اہلکار نے بتایا کہ اتوار کی شام کچھ مزدور اس خالی پلاٹ میں ایک جگہ کھدائی کررہے تھے۔ کھدائی کے دوران پلاسٹک کی تھیلی ملی ، جس کے اندر نوازائیدہ بچوں کی لاشیں تھیں۔ یہ لاشیں کافی پرانی ہوچکی تھیں اور اس سے بدبو آرہی تھی۔ کچھ لاشیں تو ڈھانچہ میں بھی تبدیل ہوچکی ہیں۔کولکتہ پولیس کمشنر راجیو کمار کا کہنا ہے کہ ابتدائی جانچ میں ایسا لگ رہا ہے کہ ان بچوں کو کہیں اور مارا گیا ہوگا اور بعد میں ان کی لاشوں کو یہاں چھپا دیا گیا ہوگا کیونکہ یہ پلاٹ کئی مہینوں سے خالی پڑا ہوا تھا۔ پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ پہلی نظر میں یہ معاملہ اسقاط حمل کا لگ رہا ہے۔ فی الحال واقعہ کی جانچ کی جارہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ریزرویشن سے متعلق آر ایس ایس اور بی جے پی کے ارادے ٹھیک نہیں: تیجسوی یادو

  بہار اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر تیجسوی پرساد یادو نے ریزرویشن کے معاملے پر راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ ( آر ایس ایس ) کے چیف موہن بھاگوت کے حالیہ بیان پر پلٹ وار کرتے ہوئے کہا کہ ریزرویشن کو لے کر آر ایس ایس اور بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) کے ارادے ٹھیک نہیں ہیں۔

کاروارمیں ریڈ الرٹ کے باوجود کوسٹل سیکیوریٹی پولیس کی انٹر سیپٹر کشتیاں نہیں اتریں سمندر میں!

ابھی دو دن پہلے ملک کی خفیہ ایجنسی نے سمندری راستے سے دہشت گردانہ حملہ ہونے کا خدشہ ظاہر کیا تھا جس کے بعد پوری ریاست کرناٹکا میں اور بالخصوص ساحلی کرناٹکا میں ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے۔

منگلورو:ڈاکٹرمریم انجم بن گئیں خواتین سے متعلقہ کینسرکے علاج میں ایم سی ایچ ڈگری پانے والی جنوبی کینرا کی پہلی ماہر ڈاکٹر 

ڈاکٹر مریم انجم نے خواتین سے متعلقہ کینسر کے شعبے میں خصوصی مہارت والی ایم سی ایچ کی ڈگری حاصل کی ہے۔ جس کے ساتھ انہیں جنوبی کینرا میں اس طرح کی مہارت پانے والی پہلی ڈاکٹر ہونے کا اعزاز ملا ہے۔