بھٹکل کے قریب منکی سمندر سے نامعلوم خاتون اور اس کی دو لڑکیوں کی نعشیں برآمد؛ خودکشی کا شبہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 13th May 2019, 1:04 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل 13/مئی (ایس او نیوز) بھٹکل سے قریب 25 کلو میٹر دور منکی  سمندر کنارے  ایک نامعلوم جوان خاتون اور  دو لڑکیوں کی نعشیں برآمد ہوئی  ہیں جن کے تعلق سے سمجھا جارہا ہے کہ یہ تینوں ماں اور بیٹیاں ہیں۔ شبہ ہے کہ   ماں نے اپنی دو بیٹیوں کو پہلے  رسی سے باندھ کر سمندر میں پھینکا ہوگا، پھرخود سمندر میں چھلانگ لگاتے ہوئے خودکشی کی ہوگی۔

منکی کے سماجی کارکن اور ساحل آن لائن  کے نامہ نگار  ذاکر کٹنگری نے بتایا کہ نعشوں کا معائنہ کرنے اور  حالت دیکھنے سے اندازہ ہوتا ہے کہ  ان تینوں نے غالباً کل اتوار شام کو سمندر میں چھلانگ لگاکر خودکشی کی ہوگی، دونوں لڑکیاں اور خاتون ایک دوسرے سے بندھی ہوئی حالت میں تھے ، خاتون  اور ایک بچی کے  بدن کے اوپری حصے کے کپڑے   اُتر گئے تھے ، مگر ان کے جسم سے ہی  لگے ہوئے تھے، سمجھا جارہا ہے کہ سمندری موجوں سے کپڑے اُتر گئے ہوں گے۔ اندازہ ہے کہ کسی بڑے پتھر پر سے ان لوگوں نے سمندر میں چھلانگ لگائی ہے، سمندر کنارے میں ہی چھلانگ لگانے کی وجہ  سے سمندری موجوں نے تینوں کو سمندر کنارے لاکر ڈال دیا تھا۔

آج پیر صبح  سمندر کنارے سے گذرنے والوں نے   منکی پولس کو واقعے کی جانکاری دی اور اطلاع ملتے ہی پولس ٹیم جائے وقوع پر پہنچ گئی۔ خبر ملتے ہی بھٹکل ڈی وائی ایس پی ویلنٹائن ڈیسوزا سمیت ہوناور سرکل پولس انسپکٹر اور دیگر آفسران بھی جائے وقوع پر پہنچ کر جائزہ لیا بعد میں نعشوں کو  منکی سرکاری اسپتال منتقل کیا گیا ۔

خاتون کی عمر لگ بھگ 30 سال اور لڑکیوں کی عمر  آٹھ اور دس سال  ہونے کا اندازہ لگایا گیا ہے۔ 

اس رپورٹ کے ساتھ فوٹوز شائع کئے جارہے ہیں، منکی پولس نے درخواست کی ہے کہ اگر کسی کو ان کے تعلق سے کوئی جانکاری ہوتو  منکی پولس سے رابطہ کریں۔شناخت کے لئے منکی اسپتال پہنچ کر نعشوں کا معائنہ بھی کیا جاسکتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ساگر مالا منصوبہ: انکولہ سے بیلے کیری تک ریلوے لائن بچھانے کے لئے خاموشی کے ساتھ کیاجارہا ہے سروے۔ سیکڑوں لوگوں کی زمینیں منصوبے کی زد میں آنے کا خدشہ 

انکولہ کونکن ریلوے اسٹیشن سے بیلے کیری بندرگاہ تک ’ساگر مالا‘ منصوبے کے تحت ریلوے رابطے کے لئے لائن بچھانے کا پلان بنایا گیا اور خاموشی کے ساتھ اس علاقے کا سروے کیا جارہا ہے۔

ماڈرن زندگی کا المیہ: انسانوں میں خودکشی کا بڑھتا ہوا رجحان۔ ضلع شمالی کینرا میں درج ہوئے ڈھائی سال میں 641معاملات!

جدید تہذیب اور مادی ترقی نے جہاں انسانوں کو بہت ساری سہولتیں اور آسانیاں فراہم کی ہیں، وہیں پر زندگی جینا بھی اتنا ہی مشکل کردیا ہے۔ جس کے نتیجے میں عام لوگوں اور خاص کرکے نوجوانوں میں خودکشی کا رجحان بڑھتا جارہا ہے۔

منگلورو پولیس نے ایک اور مشکوک کار کو پکڑا؛ پنجاب نمبر پلیٹ والی کار کے تعلق سے پولس کو شکوک و شبہات

دو دن دن پہلے لٹیروں اور جعلسازوں کی ایک ٹولی کے قبضے سے منگلورو پولیس نے ایسی کار ضبط کی تھی جس پر نیشنل کرائم انویسٹی گیشن بیوریو، گورنمنٹ آف انڈیا لکھا ہوا تھا۔اب مزید ایک مشکوک کار کو پولیس نے اپنے قبضے میں لیا ہے۔ جس پر بھی گورنمینٹ آف انڈیا لکھا ہوا ہے۔

شیوپرکاش دیوراج بنے ضلع شمالی کینرا کے نئے ایس پی۔ ونائیک پاٹل کا کلبرگی تبادلہ۔ بھٹکل سب انسپکٹر کا بھی تبادلہ

ضلع شمالی کینرا کے نئے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس کے طور پر شیوپرکاش دیوراج کو تعینات کیا گیا ہے، جبکہ موجودہ ایس پی ونائیک پاٹل کا تبادلہ کلبرگی کے لئے کردیاگیا ہے۔

مرڈیشور ساحل پر ماہی گیروں اور انتظامیہ افسران کے درمیان پارکنگ جگہ کو لےکر تنازعہ: ماہی گیروں کا احتجاج  

مرڈیشور میں مچھلی شکار پیشہ کے لئے جگہ مختص کرنے اور ماہی گیر کشتیوں کو  محفوظ رکھنے کےلئے جگہ متعین کرنے کے متعلق   ماہی گیروں اور مقامی انتظامیہ کے درمیان پھر ایک بار تنازعہ پیدا ہوگیا ہے۔

بھٹکل محکمہ تحصیل کے عملے  نے   سیاہ پٹی باندھ کرانجام دیں خدمات : ’ بنگلورو چلو ‘احتجاج کی حمایت

کرناٹکا سروئیر،رونیو مینجمنٹ اور رجسٹرار ملازمین سنگھ (کرناٹکا راجیا بھوماپنا ، کندایا ووستھے متو بھو داخلیگل کاریانرواہک نوکررسنگھ  ) کی جانب سے مختلف مطالبات کو حل کرنےکی مانگ لے کر 4ستمبر کو منائی جارہی ’ بنگلورو چلو ‘ احتجاج کی حمایت میں بھٹکل کے مختلف محکمہ جات کے عملے ...

کاروارمیں ریڈ الرٹ کے باوجود کوسٹل سیکیوریٹی پولیس کی انٹر سیپٹر کشتیاں نہیں اتریں سمندر میں!

ابھی دو دن پہلے ملک کی خفیہ ایجنسی نے سمندری راستے سے دہشت گردانہ حملہ ہونے کا خدشہ ظاہر کیا تھا جس کے بعد پوری ریاست کرناٹکا میں اور بالخصوص ساحلی کرناٹکا میں ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے۔

منگلورو:ڈاکٹرمریم انجم بن گئیں خواتین سے متعلقہ کینسرکے علاج میں ایم سی ایچ ڈگری پانے والی جنوبی کینرا کی پہلی ماہر ڈاکٹر 

ڈاکٹر مریم انجم نے خواتین سے متعلقہ کینسر کے شعبے میں خصوصی مہارت والی ایم سی ایچ کی ڈگری حاصل کی ہے۔ جس کے ساتھ انہیں جنوبی کینرا میں اس طرح کی مہارت پانے والی پہلی ڈاکٹر ہونے کا اعزاز ملا ہے۔