لہولہان کپڑے اور باپ اور بیٹے کے ساتھ جنسی بدسلو کی تامل ناڈو میں احتجاج کا سبب بنی

Source: S.O. News Service | Published on 29th June 2020, 10:10 AM | ملکی خبریں |

تھوتھوکوڈی،29؍جون (ایس او نیوز؍ایجنسی) مقررہ لاک ڈاؤن کے وقت سے کچھ منٹ زیادہ تک 19؍ جون کے روز دوکان کھولی رکھنے کی وجہ سے 31 سالہ بینکس کو ان کے 59 سالہ والد جئے راج کے ساتھ گرفتار کر لیا گیا تھا۔

مذکورہ دونوں پر آئی پی سی کی دفعہ 188 (سرکاری ملازمین کی جانب سے نافذ کردہ قانون کی خلاف ورزی)، 353(سرکاری ملازم کو اس کی ڈیوٹی ادا کرنے سے روکنے کے لئے طاقت کا استعمال )، 269 (بیماری کی وباء کو پھیلنے خطرہ سے غفلت برتنا) اور 506(2) (مجرمانہ دھمکی دینے پر سزا کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ دونوں کو کویل پٹی سب جیل منتقل کردیا گیا تھا۔ اسی رات بینکس نے مبینہ طور پر سینے میں درد کی اور جئے راج نے بخار کی شکایت کی تھی۔ دونوں کو کویل پٹی اپستال لے جایا گیا، جہاں پر پیر کی شام کو بینکس اور منگل کی صبح جئے راج کو مردہ قرار دیا گیا۔

قبل ازیں سینے میں درد اور بخار کو دونوں کی موت کی وجہ بتایا گیا تھا۔ تاہم مذکورہ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بینکس اور جئے راج کے ساتھ پولیس تحویل میں بربریت کا انشکاف ہوا ہے۔

جئے راج کی بیٹی پیرسی نے میڈیا کو 24؍جون کے روز بتایا کہ مذکورہ پولیس جوان کے ان کے والد کو گردن سے پکڑ کر زمین پر گرایا اور ان کی پیٹائی کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ ‘‘جب میرے بھائی نے پولیس سے مارپیٹ کی وجہ پوچھی تو مذکورہ پولیس نے اس کو بھی مارا۔ یہ سب دیکھ کر میرے والد تناؤ میں آگئے۔ اس کے بعد تقریباً دو گھنٹوں تک کمرہ بند کر کے پولیس نے دونوں کی پیٹائی کی تھی۔ میرے بھائی کا دوست جو ایک وکیل بھی ہے پولیس اسٹیشن گئے مگر انہیں بھی ملاقات کا موقع نہیں دیا گیا تھا۔ میرے والد اور بھائی دونوں کو انہوں نے بہت پیٹا تھا’’۔ دونوں کے رشتہ داروں نے کہا کہ ‘‘جئے راج اور بینکس دونوں کو پولیس اسٹیشن لے جانے کے بعد بھی بے رحمی کے ساتھ پیٹا گیا ہے، یہاں تک پولیس اسٹیشن کے داخلہ پر ہم میں سے کچھ نے اس کا مشاہدہ کیا ہے’’۔

چینائی نزاں ایک نیوز سائیڈ جس کو دی فیڈرل کہا جاتا ہے کہ مطابق عینی شاہدین کا دعویٰ ہے کہ پولیس تحویل میں دونوں کی بے رحمی کے ساتھ پیٹائی کی گئی ہے۔ جئے راج جو پہلےسے ہی ایک ہارٹ کا مریض ہے اور پولیس بار بار اس کے سینے پر لات ماررہی تھی۔ بڑی آنت میں میبنہ طور پر لوہے کے سلاخ بھی ڈالی گئی ہے۔ جب جیل سے انہیں رہا کیا گیا تو دونوں کی بڑی آنت میں سے مبینہ طور پر خون بہت رہا تھا۔ بعد ازاں داخلی چوٹوں کی وجہ سے وہ اسپتال کے راستے 22؍ جون کے روز جانبر نہ ہوسکے۔

دی فیڈرل نے بینکس کے دوست کے حوالے سے کہا ہے کہ’’20 ؍ جون کے روز7 سے 12 بجے کے درمیان مذکورہ والد اور بیٹی کی کم سے کم ساتھ لونگیاں تبدیل کی گئی ہیں، کیونکہ خون بہنے کی وجہ سے وہ گیلی ہوگئی تھی۔’’ انہیں اسپتال لے جایا گیا تھا جہاں ڈاکٹر نے مقامی انسپکٹر کے اصرار پر صحت مند قرار دیا تھا۔ حالانکہ والد بیٹے دونوں کو جوڈیشل مجسٹریٹ کے پاس لے جایا گیا تھا، جہاں پولیس کی دھمکیوں کی وجہ سے انہوں نے مبینہ طور پرسچ بولنے سے گریز کیا‘‘۔

ایک نظر اس پر بھی

غیر ملکی تبلیغی جماعتیوں کی عرضی پر سماعت 10 جولائی تک ملتوی

سپریم کورٹ نے تبلیغی جماعت کے پروگرام میں حصہ لینے والے 34غیر ملکی جماعتیوں کی عرضیوں پر سماعت 10 جولائی تک کے لئے ملتوی کردی اور کہا کہ انہیں اپنے ملک بھیجنے کے معاملے میں وہ مداخلت نہیں کرے گا، بلکہ بلیک لسٹ میں ڈالے جانے کے معاملے پر سماعت کرے گا۔

شیوراج کابینہ میں توسیع، 28 وزیروں کی حلف برداری

 بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جےپی) کی نائب صدر اور سابق مرکزی وزیر اوما بھارتی نے مدھیہ پردیش میں شیوراج سنگھ چوہان کی کابینہ توسیع کے بالکل پہلے ذات بات تال میل کے سلسلے میں پارٹی قیادت کے سامنے ’اصولی عدم اتفاق‘کا اظہار کیا ہے