کورونا اورمنشیات پر قابو پانے میں ناکام، بی جے پی حکومت برائے نام، یڈی یورپا ریاست کے نہیں شیموگہ کے وزیراعلیٰ بن بیٹھے ہیں: سینئر بی جے پی لیڈرامیش کتی

Source: S.O. News Service | Published on 18th September 2020, 11:00 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،18؍ستمبر(ایس او نیوز) ریاست میں صرف برائے نام حکومت ہے۔اس کی وجہ سے ریاست میں سارے ترقیاتی کام ٹھپ ہوچکے ہیں۔کورونا وائرس کے حالات اور منشیات کے کاروبار پر روک لگانے میں ریاستی حکومت بری طرح ناکام ہوچکی ہے۔یہ تاثرات اپوزیشن کے کسی لیڈر نے نہیں بلکہ ریاست میں برسراقتدار بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سینئر لیڈر رکن اسمبلی امیش کتی کے ہیں۔انہوں نے شہر کے ایک مشہور اخبار کو دئے گئے انٹرویو کے دوران ان خیالات کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ چند مہینوں سے ریاست میں انتظامیہ پوری طرح ٹھپ ہوچکا ہے۔ ریاستی حکومت شمالی کرناٹک کے اضلاع کی ترقی کی طرف کوئی دھیان ہی نہیں دے رہی ہے۔وزیراعلیٰ ایڈی یورپا صرف اپنے اسمبلی حلقے شیموگہ کی طرف ساری توجہ مرکوز کئے ہوئے ہیں۔ایسا لگتا ہے کہ ایڈی یورپا کرناٹک کے نہیں بلکہ شیموگہ کے وزیراعلیٰ ہیں۔

امیش کتی نے کہا کہ ریاستی حکومت کے اعداد وشمار اس بات کا ثبوت ہیں کہ گزشتہ ایک سال کے دوران شیموگہ ضلع کے لئے جتنا سرکاری فنڈ جاری کیا گیا ہے، اس کے نصف برابرفنڈ بھی دیگر اضلاع کے لئے جاری نہیں کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت ریاست کے آبی وسائل کے تحفظ میں بھی ناکام ہوچکی ہے۔ عدالتوں سے ریاست کے حق میں فیصلہ آنے کے بعد بھی حکومت پانی کے تحفظ کے لئے اقدامات نہیں کررہی ہے۔عدالت نے ایک سال قبل آلمٹی ڈیم کی اونچائی میں اضافہ کرنے کی اجازت دی۔حکومت کی طرف سے اب تک کوئی اقدام نہیں کیا گیا۔کرشنا ندی کا ہزاروں کیوسکس میٹر پانی ضائع ہورہا ہے۔ اگر اس پانی کا بہتر استعمال کیا گیا تو ریاست کے سوکھے اضلاع میں پانی کی قلت کو دور کیا جاسکتا ہے۔حکومت اس مسئلہ کی طرف کوئی دھیان ہی نہیں دے رہی ہے۔

امیش کتی نے کہا کہ انہیں وزیر بننے کی کوئی خواہش نہیں ہے بلکہ وہ آئندہ اسمبلی انتخابات میں حصہ نہ لینے پر غور کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ ایک سال کے دوران ریاست میں بی جے پی حکومت کی کارکردگی کی وجہ سے انہیں امید نہیں ہے کہ آئندہ اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کے زیادہ امیدوار کامیاب ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کے بیشتر بی جے پی اراکین اسمبلی بھی ریاستی حکومت کی کارکردگی سے خوش نہیں ہیں۔ وہ صرف اس لئے خاموش ہیں کہ اگر انہوں نے آواز بلند کی تو پارٹی ان کے خلاف کارروائی کرے گی۔امیش کتی نے کہا کہ وہ خاموش نہیں رہیں گے۔ شمالی کرناٹک علاقے کی ترقی کے لئے اپنی آواز بلند کریں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

مرسی مشن کی کورونا متاثرین کیلئے خدمات کے 6 ماہ مکمل، ضرورت مندوں کی مدد کے لئے جوش کے ساتھ سلیقہ مندی کے امتزاج کی انوکھی مثال

شہر بنگلورو میں جب سے کورونا وائرس کے واقعات نے سر اٹھانا شروع کیا، اس وقت سے ہی شہر کے نوجوانوں کی ٹیم ضرورت مندوں کی مختلف زاویوں سے ہر ممکن مدد کرنے کے لئے متحرک رہی ہے