بی جے پی اور کانگریس ریاست کے عوام کو گمراہ کرکے اقتدار حاصل کرناچاہتی ہیں:کمارسوامی

Source: S.O. News Service | Published on 23rd November 2022, 12:18 PM | ریاستی خبریں |

کولار، 23؍نومبر(ایس او نیوز)ریاست کرناٹک  میں بی جے پی اور کانگریس دونوں پارٹیاں عوام کو گمراہ کرکے اقتدار حاصل کرناچاہتی ہیں۔یہ بات سابق وزیراعلیٰ ایچ ڈی کما ر سوامی نے کہی۔

انہوں نے یہاں ریاستی جے ڈی ایس کی طرف سے 2023کے اسمبلی انتخابات کی تیاریوں کے سلسلے میں نکالی گئی پنچ رتنایاترا کے رتھ کی کولار آمد کے دوران شہر میں منعقدہ عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کانگریس پچھلے اسمبلی انتخابات کے وقت جنتا دل کو بی جے پی کی بی ٹیم قرا ر دے کر عوام کو گمراہ کیاتھا،جس کے سبب جے ڈی ایس کئی حلقوں میں کم ووٹوں کے فرق سے شکست کا منہ دیکھناپڑاتھا۔مگر بھگوان کی کرپا سے اسی کانگریس کو انتخابی نتائچ کے بعد ہمارے دروازے پرآناپڑا اور حکومت قائم کرنے کیلئے حمایت کی گزارش کرنی پڑی اور مجھے ہی وزیر اعلیٰ بنائے جانے کا آفر دیناپڑاتھا۔

انہوں نے کہاکہ ریاست کی اس وقت کی جے ڈی ایس کانگریس مخلوط حکومت کو گرانے میں یہی کانگریس لیڈر سدارامیا اور رمیش کمار کا ہاتھ رہااور بی جے پی کو ریاست میں حکومت بنانے کا موقع دیاگیا۔اب عوام کو معلوم ہوچکاہے کہ بی جے پی کی بی ٹیم کون ہیں۔ کمار سوامی نے کہاکہ سدارامیا کے دور میں کولار ضلع کی کوئی ترقی ممکن نہیں ہوسکی اور انہوں نے کولار ضلع کے عوام کیلئے کچھ نہیں کیا،مگرافسوس کہ اب یہاں سے انتخاب لڑنے کی سوچ رہے ہیں۔رمیش کمار ہمیشہ یہ کہتے آرہے ہیں کہ سدارامیا نے کولار ضلع کے عوام کیلئے پانی فراہم کیاہے،مگرسدارامیا نے جو پانی فراہم کیاہے وہ بنگلور شہر کا آلودہ،یوجی ڈی کا پانی ہے،جس سے کئی بیماریاں پھیل رہی ہیں اور تالابوں کی سیرابی کی وجہ سے زیرزمین پانی کی سطح میں ضرور اضافہ ہواہے،مگر یہ پانی زہر آلود ہے،اس کے استعمال سے انسانوں،مویشیوں اور فصلوں کو بھی نقصان پہنچ رہاہے۔یہی سدارامیا کا سب سے بڑا کارنامہ ہے ۔

کمار سوامی نے مزید کہا کہ ہر وقت فرقہ وارانہ فساد بھڑکا کر اقتدار حاصل کرنے والی بی جے پی اب حلا ل کٹ،اذان،حجاب اور دیگر معاملوں کو لے کر ہندتوا کے نام پر ووٹ حاصل کرناچاہتی ہے اور ایسے حساس معاملوں میں کوئی بھی کانگریس لیڈر نے تاحال بی جے پی کے خلاف کوئی آواز نہیں اٹھائی ہے۔ان معاملات پر مسلسل آواز اٹھاتے آرہے ہیں اور آئندہ بھی فرقہ پرستوں کے خلاف لڑتے رہیں گے۔ 2023 کے انتخابات کی تیاریاں شروع ہوچکی ہیں اور کولار کیلئے امیدوار کااعلا ن بھی ہوچکاہے،اور جے ڈی ایس امیدوار حلقے میں مقبول بھی ہوتاجارہاہے۔اس موقع پر رکن کونسل گووند راجو،کولار اسمبلی حلقے کے جے ڈی ایس امیدوارسی ایم آر سری ناتھ،ریاستی نائب صدر ضمیر احمد،سکریٹری ڈاکٹر محمد مصطفی،تعلقہ صدر راجیشوری،وکلیری رامواور دیگر موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

گرام پنچایتوں کیلئے آئین کی نقل تقسیم: وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی

وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے کہا کہ ریاست کے تمام گرام پنچایتوں کی لائبریریوں میں آئین کی نقل کے ساتھ گرام پنچایت 73اور 74ویں ترمیم، پنچایت راج قوانین کی نقول بھی روانہ کرکے وہاں بھی آئین پر مبنی انتظامیہ فراہم کرنا حکومت کا مقصد ہے۔

ووٹر ڈاٹا چوری معاملہ: 4 بی بی ایم پی افسروں سمیت اب تک11افراد گرفتار

ووٹرلسٹوں میں مبینہ ہیراپھیری،چھیڑ چھاڑ اور چیلومے نامی ادارے کے کارکنوں کو سرکاری عہدیداروں کا فرضی شناختی کارڈ دینے کے معاملے کی سختی سے جانچ کرتے ہوئے شہر کی پولیس نے اب تک اس کیس میں 11 افراد کو گرفتار کیا ہے -

بنگلورو: بی بی ایم پی بجٹ میں عوام کو شامل کرنے”مائی سٹی۔مائی بجٹ“ مہم

بروہت بنگلور مہا نگر پالیکے(بی بی ایم پی) بجٹ میں عوامی مشوروں کو شامل کرنے کے مقصد سے جنا گراہا نامی رضاکارانہ ادارے کی جانب سے ہر سال ”مائی سٹی۔مائی بجٹ“(اپنا شہر۔اپنا بجٹ) مہم چلائی جاتی ہے جس کے تحت بی بی ایم پی کے تمام وارڈز میں مہم کے دوران مقامی افراد سے مشورے حاصل کر کے ...

بیلگاوی کرناٹک میں رہے یامہاراشٹر میں کیافرق پڑنے والاہے: کمارسوامی

سابق وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی نے بی جے پی کوشدیدتنقیدکانشانہ بناتے ہوئے کہاکہ یکساں سیول کوڈ نافذ کرنے جا رہے بی جے پی والو، کیا آپ یہ نہیں کہہ رہے کہ ہم سب ہندوستانی ہیں؟ اگر ایسا ہے تو بیلگام یہاں کرناٹک میں رہے یامہاراشٹر میں کیافرق پڑنے والاہے،ہم سب ہندوستانی ہیں؟

بیلگام: مدرسہ کی 4طالبات سیلفی لینےکے دوران ندی میں غرق؛ ایک کو بچالیا گیا

بیلگام سرحد سے متصل ، مہاراشٹرا کے کتواڑ فالس میں سیلفی لینے کے دوران مدرسہ میں زیر تعلیم  4طالبات توازن کھو کر غرق ہوگئیں  اور اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھیں۔ واقعہ سنیچر کو پیش آیا۔ حادثے میں ایک طالبہ کو بچالیا گیا ہے، مگر اس کی حالت نازک بتائی گئی ہے۔

پونے : پھر گرم ہوا کرناٹکا - مہاراشٹرا سرحدی تنازعہ - کرناٹکا کی بسوں پر پوتا گیا کالا رنگ - مہاراشٹرا کی حمایت میں لکھے گئے نعرے

کرناٹکا اور مہاراشٹرا کے بیچ جو سرحدی تنازعہ ہے اس پر کرناٹکا کے وزیر اعلیٰ بسوا راج بومئی نے جو بیان دیا تھا اس کے خلاف مہاراشٹرا کے کئی علاقوں میں مراٹھا تنظیموں نے احتجاجی مظاہرے کیے ۔ اسی کے ساتھ  کے ایس آر ٹی سی  کی بین الریاستی بسوں پر بعض جگہ کالا رنگ پوتا گیا اور اس پر ...