بھوپیندر پٹیل نے گجرات کے وزیر اعلیٰ کا لیا حلف

Source: S.O. News Service | Published on 13th September 2021, 11:37 PM | ملکی خبریں |

گاندھی نگر،13؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) زبردست سیاسی ہلچل کے درمیان بی جے پی رکن اسمبلی بھوپیندر پٹیل نے آج راج بھون میں گجرات کے نئے وزیر اعلیٰ کی شکل میں حلف لے لیا۔ بی جے پی اسمبلی الیکشن سے تقریباً 15 مہینے قبل وجے روپانی کو ہٹا کر بھوپیندر پٹیل کو وزیر اعلیٰ بنایا گیا ہے، اور دیکھنے والی بات یہ ہوگی کہ وہ ان پندرہ مہینوں میں کس طرح کام کرتے ہیں۔ 59 سال کے بھوپیندر پٹیل کو 12 ستمبر کو اتفاق رائے سے بی جے پی قانون ساز پارٹی کا لیڈر منتخب کیا گیا تھا۔ بھوپیندر پٹیل اب گجرات کے 17ویں وزیر اعلیٰ ہیں۔ گجرات کی 182 رکنی اسمبلی کے لیے انتخابات آئندہ سال دسمبر میں ہونے ہیں۔

گجرات کے گورنر آچاریہ دیو ورَت نے بھوپیندر پٹیل کو عہدہ اور رازداری کا حلف دلایا۔ تقریب میں مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ، گجرات کے سابق وزیر اعلیٰ وجے روپانی، نائب وزیر اعلیٰ نتن پٹیل سمیت بی جے پی کے تمام لیڈر شامل ہوئے۔ مدھیہ پردیش، گوا، ہریانہ کے وزیر اعلیٰ نے بھی اس حلف برداری تقریب میں شرکت کی۔

یہاں قابل ذکر ہے کہ بھوپیندر پٹیل اس سے قبل ریاستی حکومت میں بھی وزیر نہیں رہے، یہی وجہ ہے کہ وزیر اعلیٰ کے طور پر ان کا نام سامنے آنے کے بعد سبھی حیران رہ گئے۔ دلچسپ بات یہ بھی ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی بھی جب 20 سال پہلے گجرات کے وزیر اعلیٰ بنے تھے، اس سے قبل وہ کبھی وزیر نہیں رہے تھے۔ نریندر مودی کو 7 اکتوبر 2001 کو وزیر اعلیٰ کی شکل میں حلف دلایا گیا تھا اور وہ راج کوٹ اسمبلی سیٹ پر ہوئے ضمنی انتخاب میں جیت حاصل کر 24 فروری 2002 کو رکن اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔

بہر حال، بھوپیندر پٹیل 2017 کے اسمبلی انتخاب میں ریاست کی گھاٹ لوڈیا سیٹ سے پہلی بار انتخاب لڑے تھے اور جیتے تھے۔ انھوں نے کانگریس کے ششی کانت پٹیل کو ایک لاکھ سے زیادہ ووٹوں سے ہرایا تھا، جو اس انتخاب میں جیت کا سب سے بڑا فرق تھا۔ سول انجینئرنگ میں ڈپلومہ کرنے والے پٹیل سابق وزیر اعلیٰ اور اب اتر پردیش کی گورنر آنندی بین پٹیل کے قریبی مانے جاتے ہیں۔ آنندی بین 2012 میں اسی سیٹ سے الیکشن جیتی تھیں۔

ایک نظر اس پر بھی

سول سروسز امتحان میں 27 مسلم امیدوار کامیاب، صدف چودھری کو ملک بھر میں 23 واں مقام حاصل

  ملک کے سب سے اہم قرار دیئے جانے والے یو پی ایس سی کے سول سروسز امتحان کے نتائج جاری کر دیئے گئے ہیں۔ اس مرتبہ مسلم طبقہ سے تعلق رکھنے والے کل 27 امیدواروں نے کامیابی حاصل کی ہے، جن میں سے 7 خواتین شامل ہیں۔

سول سروسز امتحان 2020 کے حتمی نتائج کا اعلان، بہار کے شبھم کمار کو اول مقام حاصل

  یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی) کی جانب سے جنوری 2021 میں منعقدہ سول سروسز امتحان 2020 کے تحریری حصے اور اگست-ستمبر 2021 میں منعقد پرسنالٹی ٹیسٹ (شخصیت) کے لیے انٹرویو کے نتائج کی بنیاد پر انڈین سول سروسز، انڈین فارن سروسز، انڈین پولیس سروسز اور سینٹرل سروسز میں تقرری کے لیے ...

راکیش ٹکیت کاامریکی صدرجوبائیڈن کو ٹیوٹ 11مہینے میں 700کسانوں کی موت، مانگی مدد

وزیر اعظم نریندر مودی اپنے امریکی دورے پر ہیں، جہاں انہوں نے امریکی نائب صدر کملا ہیرس سے ملاقات کی- اب پی ایم مودی صدر جو بائیڈن کے ساتھ اپنی پہلی ملاقات کرنے والے ہیں، جس میں کئی امور پر بات چیت ہونی ہے- لیکن اس دوران کسان رہنما اور بی کے یو کے ترجمان راکیش ٹکیت نے امریکی صدر جو ...

پسماند ہ طبقہ سے اتنی نفرت کیوں؟ ذات پرمبنی مردم شماری سے مرکزکے انکارپرلالویادوکاحملہ

بہارمیں ذات کی مردم شماری کے معاملے پر سیاست جاری ہے۔ آر جے ڈی کے سربراہ لالو پرساد یادو نے مرکزی حکومت کو نشانہ بنایا ہے کہ اس نے سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کر کے 2021 میں ذات پرمبنی مردم شماری سے انکار کیا۔