بھٹکل میں الیکٹری سٹی بار بار فیل ہونے کے مسئلہ کا حل کیا ہے ؟ بھٹکل ہیسکام نے منعقد کیا معلوماتی پروگرام

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 13th February 2020, 6:50 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 13/فروری (ایس او نیوز) الیکٹری سٹی، کرنٹ یا بجلی کسے کہتے ہیں، یہ کہاں اور کیسے پیدا ہوتی ہے، گھروں تک پہنچنے کے لئے کن کن مراحل سے گذرتی ہے، الیکٹری سٹی سپلائی کرنے کے لئے کون کونسے شعبہ جات ہیں، اُن کے کیا کام ہیں،  الیکٹری سٹی کا استعمال کیسے کیا جانا چاہئے، کس طرح کے حفاظتی اقدامات  ضروری ہے اور الیکٹری سٹی کی بچت کیسے کرنی ہے، اس جیسے تمام معلومات کی آگاہی کے ساتھ آج جمعرات کو بھٹکل ہیسکام دفتر میں  بھٹکل کے ذمہ داران کے ساتھ ایک نشست منعقد کی گئی اور مکمل جانکاری فراہم کی گئی۔

معلومات فراہم کرتے ہوئے ہیسکام انجینرس سے بتایا کہ بجلی جب فیل ہوتی ہے تو کیوں ہوتی ہے،  کیسے اسے درست کیا جاتا ہے، بجلی نکلنے کی صورت میں عوام کو کیا کرنا چاہئے،  بجلی کا کیبل کہیں گرا ہوا نظر آئے تو کیا کرنا ہے، کس طرح کے حفاظتی پہلووں کو  دیکھنا ہے، تمام طرح کی آگاہی فراہم کی گئی۔

محکمہ ہیسکام کی طرف سے اسسٹنٹ انجینر منجوناتھ نائک نے  کئی طرح کی معلومات فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ بجلی سپلائی کرنے کے دوران پیش آنے والی دشواریوں کا بھی  تذکرہ کیا اور عوام سے تعاون کی اپیل کی، بھٹکل میں بار بار بجلی فیل ہونے کے تعلق سے انہوں نے بتایا کہ یہاں 110KV لائن بے حد ضروری ہے، جس کے لئے سرکار کو تجویز کب کی روانہ کی جاچکی ہے، مگر اب  عوام اور عوامی نمائندوں کی  ذمہ داری ہے کہ وہ   سرکار پر دباو بنائے۔انہوں نے کہا کہ یہ کام  2010 سے ہی  التوا میں پڑا ہوا ہے  ، اگر حکومت کی طرف سے اس کی منظوری ملتی ہے تو  پھر کدرا لائن  سے بجلی فیل ہونے کی صورت میں ناوندہ سے  متبادل لائن  بھٹکل کے لئے لائی جاسکتی ہے۔

مرڈیشور ہیسکام آفسر شیوانندنائک، شہری شعبہ کے آفسر شری کانت نائک اور رمیش میستا نے بھی  پروگرام میں خطاب کرتے ہوئے معلومات فراہم کی۔ قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم کے صدر جناب ایس ایم پرویز سمیت کافی دیگر ذمہ داران موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار اسپتال سے 12 مزید لوگ ڈسچارج

بھلے ہی  ضلع اُترکنڑا میں کورونا پوزیٹیو کے معاملے ہر روز سامنے آرہے ہوں، لیکن کاروار اسپتال میں ایڈمٹ کورونا کے متاثرین  روبہ صحت ہوکر ڈسچارج ہونے کا سلسلہ بھی برابر جاری ہے۔

اُترکنڑا میں پھر 36 کورونا پوزیٹیو؛ بھٹکل میں بھی کورونا کے بڑھنے کا سلسلہ جاری؛ آج ایک ہی دن 19 معاملات

اُترکنڑا میں کورونا کے معاملات میں روز بروز اضافہ کا سلسلہ جاری ہے اور آج منگل کو بھی ضلع کے مختلف تعلقہ جات سے 36 کورونا کے معاملات سامنے آئے ہیں جس میں صرف بھٹکل سے پھر ایک بار سب سے زیادہ  یعنی 19 معاملات سامنے آئے ہیں۔ کاروار میں 6،  ہلیال میں 3،  کمٹہ، ہوناور ...

دبئی سے بھٹکل و اطراف کے 181 لوگوں کو لے کر آج آرہی ہے دوسری چارٹرڈ فلائٹ؛ رات کو مینگلور ائرپورٹ میں ہوگی لینڈنگ

کورونا وباء اور اس کے بعد ہوئے لاک ڈاون سے  دبئی اور امارات میں پھنسے ہوئے 181 لوگوں کو لے کر آج دبئی سے دوسری چارٹرڈ فلائٹ مینگلور پہنچ رہی ہے۔ اس بات کا اطلاع بھٹکل کے معروف اورقومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم کے نائب صدر  جناب عتیق الرحمن مُنیری نے دی۔

منگلورو:گروپور میں منڈلارہا ہے مزید پہاڑی کھسکنے کا خطرہ۔ قریبی گھروں کو کروایا گیاخالی۔ مکینوں میں مایوسی اور دہشت کا عالم

گروپور میں اتوار کے دن بنگلے گُڈے میں پہاڑی کھسکنے سے جہاں  تین  مکان زمین بوس اور دو بچے، صفوان (16سال) اور سہلہ (10سال) جاں بحق ہوگئے تھے وہاں پر مزید پہاڑی کھسکنے کا خطرہ لوگوں کے سر پر منڈلا رہا ہے۔

بھٹکل میں اب کورونا کا قہر؛ 45 معاملات سامنے آنے کے بعدحکام کی اُڑ گئی نیند؛ انتظامیہ نےکیا دوپہر دوبجے سے ہی لاک ڈاون کا اعلان

بھٹکل میں کورونا کو لے کر گذشتہ چار پانچ دنوں سے جس طرح کے خدشات ظاہر کئے جارہے تھے، بالکل وہی ہوا، آج ایک ہی دن 45 کورونا کے معاملات سامنے آنے سے نہ صرف حکام  کی نیندیں اُڑ گئیں بلکہ عوام میں بھی خوف وہراس کی لہر دوڑ گئی۔  حیرت کی بات یہ رہی کہ آج جن لوگوں کے رپورٹس پوزیٹیو ...