بھٹکل میں الیکٹری سٹی بار بار فیل ہونے کے مسئلہ کا حل کیا ہے ؟ بھٹکل ہیسکام نے منعقد کیا معلوماتی پروگرام

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 13th February 2020, 6:50 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 13/فروری (ایس او نیوز) الیکٹری سٹی، کرنٹ یا بجلی کسے کہتے ہیں، یہ کہاں اور کیسے پیدا ہوتی ہے، گھروں تک پہنچنے کے لئے کن کن مراحل سے گذرتی ہے، الیکٹری سٹی سپلائی کرنے کے لئے کون کونسے شعبہ جات ہیں، اُن کے کیا کام ہیں،  الیکٹری سٹی کا استعمال کیسے کیا جانا چاہئے، کس طرح کے حفاظتی اقدامات  ضروری ہے اور الیکٹری سٹی کی بچت کیسے کرنی ہے، اس جیسے تمام معلومات کی آگاہی کے ساتھ آج جمعرات کو بھٹکل ہیسکام دفتر میں  بھٹکل کے ذمہ داران کے ساتھ ایک نشست منعقد کی گئی اور مکمل جانکاری فراہم کی گئی۔

معلومات فراہم کرتے ہوئے ہیسکام انجینرس سے بتایا کہ بجلی جب فیل ہوتی ہے تو کیوں ہوتی ہے،  کیسے اسے درست کیا جاتا ہے، بجلی نکلنے کی صورت میں عوام کو کیا کرنا چاہئے،  بجلی کا کیبل کہیں گرا ہوا نظر آئے تو کیا کرنا ہے، کس طرح کے حفاظتی پہلووں کو  دیکھنا ہے، تمام طرح کی آگاہی فراہم کی گئی۔

محکمہ ہیسکام کی طرف سے اسسٹنٹ انجینر منجوناتھ نائک نے  کئی طرح کی معلومات فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ بجلی سپلائی کرنے کے دوران پیش آنے والی دشواریوں کا بھی  تذکرہ کیا اور عوام سے تعاون کی اپیل کی، بھٹکل میں بار بار بجلی فیل ہونے کے تعلق سے انہوں نے بتایا کہ یہاں 110KV لائن بے حد ضروری ہے، جس کے لئے سرکار کو تجویز کب کی روانہ کی جاچکی ہے، مگر اب  عوام اور عوامی نمائندوں کی  ذمہ داری ہے کہ وہ   سرکار پر دباو بنائے۔انہوں نے کہا کہ یہ کام  2010 سے ہی  التوا میں پڑا ہوا ہے  ، اگر حکومت کی طرف سے اس کی منظوری ملتی ہے تو  پھر کدرا لائن  سے بجلی فیل ہونے کی صورت میں ناوندہ سے  متبادل لائن  بھٹکل کے لئے لائی جاسکتی ہے۔

مرڈیشور ہیسکام آفسر شیوانندنائک، شہری شعبہ کے آفسر شری کانت نائک اور رمیش میستا نے بھی  پروگرام میں خطاب کرتے ہوئے معلومات فراہم کی۔ قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم کے صدر جناب ایس ایم پرویز سمیت کافی دیگر ذمہ داران موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروارمیں کار پلٹ گئی، 5 زخمی

کاروار تعلقہ کے سدا شیوگڑھ میں نیشنل ہائی وے66 پر جانوروں کے درمیان آ جانے سے ایک کار بے قابو ہو کر الٹ گئی، جس کے نتیجے میں 5 افراد زخمی ہوگئے۔

ہیبار کے ہاتھ سے شکر پھسل گئی :کام نکلنے کے بعد کیا اب بی جےپی شیورام ہیبار کونظر انداز کرے گی ؟

ریاست کی کابینہ  وزراء میں اترکنڑا ضلع سے صرف ایک ہی وزیر شیورام ہیبار مزدوروں کاقلم دان رکھتے ہیں ان کے پاس موجود شکر کا قلم دان واپس لے لیاگیا ہے۔ ریاست کے وزیر اعلیٰ یڈیورپا کی قیادت والی حکومت میں حال ہی میں توسیع کرتےہوئے کئی نئے وزراء کو شامل کیاگیا تو چند وزراء کے قلم ...

بھٹکل بس اسٹانئڈ کے سامنے پرائیویٹ بس والوں کا کاروبار۔ تعلقہ پنچایت میٹنگ میں گرما گرم بحث

بھٹکل تعلقہ پنچایت کی ماہانہ میٹنگ کے دوران سرکاری بس اسٹائنڈ کے سامنے ہی چلائے جارہے پرائیویٹ بسوں کے کاروبار کا مسئلہ زیر بحث آیا۔  تعلقہ پنچایت صدر ایشور نائک کی صدارت میں چل رہی میٹنگ میں رکن ہنومنت نائک نے یہ مسئلہ اٹھاتے ہوئے کہاکہ شہر میں پرائیویٹ بسوں کا کاروبار بغیر ...

ڈانڈیلی کی کالی ندی کا پانی دیگر اضلاع کو سپلائی کرنےکی مخالفت میں شہریوں کا احتجاج

ڈانڈیلی کی مشہور کالی ندی کا پانی دیگر اضلاع کو سپلائی کرنےکے لئےجاری تعمیراتی کام تیز رفتار ی سے ہو رہاہے۔ لیکن شہر کے عوام اس بات کو لے کر کافی پیچیدگی کا شکار ہیں۔ کالی ندی کی حفاظت کو لےکر کالی ندی پانی کے سلسلےمیں اگلے ایک ہفتہ میں عوامی میٹنگ طلب کرنے کا مطالبہ لےکر ...

فورلین شاہراہ پر جانوروں کی موجودگی سے حادثات میں اضافہ : کیا مویشی پالن وزیر کی تجویز کارگر ہوگی ؟

ساحلی پٹی پر قومی شاہراہ کو منتقل کرتےہوئےفورلین کی تعمیر ہورہی ہےتقریباً کام مکمل بھی ہوچکاہے، اس کے باوجود  فورلین شاہراہ سواریوں اور مسافروں کی مشکلات میں کوئی کمی نظر نہیں آرہی ہے۔ شاہراہ پر جہاں تہاں کھڑے جانوروں سے بار بار حادثات ہورہےہیں انسانی جانیں تلف ہورہی ہیں ...