بھٹکل کورونا وائرس معاملہ؛ ہدایات پر عمل نہ کرنے والوں کے خلاف کل سے کی جائے گی سخت ترین کارروائی۔ ڈپٹی کمشنر کی وارننگ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 26th March 2020, 6:55 PM | ساحلی خبریں |

کاروار 26/ مارچ (ایس ا و نیوز) ضلع شمالی کینرا میں کوروناوائرس کی وباء اور اس پر قابو پانے کے لئے ضلع انتظامیہ کی طرف سے جو پابندیاں عائد کی گئی ہیں، اس کی خلاف ورزی کرنے والوں پر سخت ترین قانونی اقدامات کرنے کی وارننگ ضلع ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر ہریش کمار نے دی ہے۔

 آج جاری کیے گئے بیان میں ڈی سی نے کہا ہے کہ:”ہم شہریوں کو ان کے گھروں کے دروازے تک روزانہ کی اشیائے ضروریہ پہنچانے کا انتظام کرنے اور اٰسے بحسن وخوبی انجام دینے کے لئے پوری سرگرمی سے منصوبہ بندی کررہے ہیں۔ ایک دن کے اندر تقریباً تمام مسائل کو حل کرلیا جائے گا۔“

انہوں نے کہا:”اس دوران ہم یہ  دیکھ رہے ہیں کہ شہریوں کے بعض طبقات حالات کی سنگینی کو سمجھ نہیں پارہے ہیں اورضلع انتظامیہ کی طرف سے عائد پابندیوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بلاوجہ پریشانیاں اور مسائل کھڑے کررہے ہیں۔“

 ڈپٹی کمشنر کا کہنا ہے:”میں اس بات پر پوری طرح مطمئن ہوں کہ ایسے لوگوں کے خلاف سخت قانونی کارروائیاں کرتے ہوئے ان سے نپٹنے کا یہی بالکل صحیح وقت ہے۔ مگر اُس سے قبل صحت عامہ کے مفاد کے پیش نظریہی زیادہ بہتر اور مؤثر ہوگا کہ ایسی خلاف ورزیاں کرنے والوں پر سماجی دباؤ بنانے کے لئے ان کی شناخت عوام کے سامنے ظاہر کی جائے۔“    

 بیان کے مطابق کل سے ضلع انتظامیہ کی طرف سے لاگو کی گئی پابندیوں کی خلاف ورزی کرنے والوں پر مندرجہ ذیل کارروائی کی جائے گی۔

۱۔    پہلی مرتبہ خلاف ورزی کرنے والے کی کلائی پر نہ مٹنے والی سیاہی سے نشان لگائے جائیں گے۔
۲۔    دوسری مرتبہ قانون کی خلاف ورزی کرنے کی صورت میں اس مرد /خاتون کے نام کا اعلان ان کی رہائش والے علاقے میں پبلک   اناؤنسمنٹ سسٹم (مائک) سے کیا جائے گا۔ 
۳،    تیسری مرتبہ خلاف وزری کرنے والوں کی تصاویر ضلع انتظامیہ کے ویب سائٹ پر شائع کرنے کے علاوہ عوامی مقامات پر چسپاں کی جائیں گی۔

ڈپٹی کمشنر نے اپنے اس بیان میں امید ظاہر کی ہے کہ ضلع شمالی کینرا کے ذمہ دار شہری ہونے کا ثبوت دیتے ہوئے عوام اس وقت لاگو کیے گئے قوانین کی پوری طرح پابندی کریں گے اور ضلع انتظامیہ کو اس طرح کے انتہائی سخت اقدامات کرنے کا کوئی موقع نہیں دیں گے۔

واضح رہے  کہ ضلع اُترکنڑا کے کئی علاقوں میں لاک ڈاون کے باوجود عوام غیرذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے راستوں پر  آوارہ گردی کرنے کی اطلاعات ملی ہیں،گھروں سے باہر نہ نکلنے کی بار بار تاکید کے باوجود  کئی علاقوں  کی گلیوں میں بھی نوجوانوں کو   آوارہ گردی کرتے ہوئے  دیکھا  گیا ہے ۔ اس کے علاوہ بھٹکل میں دبئی سے لوٹنے والے   دو لوگوں کی  رپورٹ کورونا پوزیٹیو آنے کے بعد میڈیکل ٹیموں کو گھر گھر روانہ کرکے جانکاری حاصل کرنے کا کام بھی شروع کیا گیا  ہے،تاکہ بھٹکل سے کورونا کا صفایہ کیا جاسکے،   مگر اطلاع ملی ہے کہ کئی علاقوں میں  میڈیکل ٹیموں کو معلومات نہیں دی گئی  ہے اور اُنہیں واپس بھیجا گیا  ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں ایک کار اورایک بائک کو ضبط کیا گیا؛ کورونا لاک ڈاؤن کی خلا ف ورزی کرنے پر ضلع میں دس معاملات درج؛ایس پی کا بیان

کوروناوائرس کی وبا ء کے پس منظر میں ضلع شمالی کینرا میں جو لاک ڈاؤن کیا گیا ہے اس کی خلاف ورزی کرنے والوں پر قانونی کارروائی کے لئے معاملات درج کیے گئے ہیں۔ جس کے تحت بھٹکل میں ایک کار اور ایک بائک کو ضبط کیا گیا ہے۔ ضلع ایس پی شیوپرکاش دیوراج نے کاروار اپنے دفتر میں منعقدہ  پریس ...

بھٹکل میں دوہزار سے زائد لوگوں کا کیا گیا طبی معائنہ؛ ضلع بھر کے طبی سروےکے بعد ڈپٹی کمشنرنے جاری کیا بیان

ملک بھر میں کورونا وائرس کی وباء عام ہونے کے بعد ضلع شمالی کینرا میں گھر گھر پہنچ کر  2,25,152افراد کا طبی سروے کیا گیا۔ ضلع انتظامیہ کی جانب سے جاری کیے گئے اعداد وشمار کے مطابق  418افراد میں بخار دیکھنے کو ملا، لیکن و ہ ایک عام بخار تھا۔

کورونا وائرس وباء:اڈپی ضلع میں 13مریضوں کو آئسولیشن وارڈ میں داخل کیا گیا۔ پوزیٹیو معاملات کے لئے مختص کیا گیا اسپتال

اڈپی ضلع ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر سوڈ نے بتایا ہے کہ کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے شبہ میں یکم اپریل کے دن 13 مریضوں کو  ضلع کے مختلف اسپتالو ں میں داخل کیا گیا ہے۔

بھٹکل لاک ڈاون: مرڈیشور سینٹر میں کورنٹائن لوگوں کو مل گئی چھٹی، بنگلوراور میسورکے بعد ضلع اُترکنڑا بھی ریڈ زون میں شامل؛ سخت نگرانی رکھے جانے کےاحکامات

بھٹکل میں  ایک طرف مکمل لاک ڈاون چل رہا ہے،  لوگوں اور سواریوں کی چہل پہل مکمل طور پر بند ہے، ہر طرف سناٹا اور خاموشی چھائی ہوئی ہے.مگر کل منگل کو مزید ایک نوجوان کی رپورٹ کورونا پوزیٹیو موصول ہونے اور ضلع اُترکنڑا میں کورونا   متاثرین کی  تعداد بڑھ کر آٹھ ہونے کے بعد  اب ضلع ...