بلقیس بانو کی عصمت دری کے مجرموں کی رہائی کے خلاف بنگلورو میں شدید احتجاج

Source: S.O. News Service | Published on 28th August 2022, 8:40 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،28؍اگست (ایس او نیوز؍یو این آئی) کرناٹک کی راجدھانی بنگلورو میں طلباء اور انسانی حقوق کے کارکنوں نے ہفتہ کو یہاں فریڈم پارک میں بلقیس بانو اجتماعی عصمت دری کیس کے 11 قصورواروں کو رہا کرنے کے گجرات حکومت کے فیصلے کے خلاف احتجاج کیا۔

مجرموں کی رہائی کی مذمت کرتے ہوئے پلے کارڈز لہرا رہے مظاہرین نے الزام لگایا کہ گجرات حکومت ملک میں اقلیتوں کو نشانہ بنا رہی ہے۔ واضح رہے کہ گجرات حکومت نے 15 اگست کو سپریم کورٹ کی ہدایت کے بعد ہی تمام 11 قصورواروں کی رہائی کو منظوری دی تھی۔

21 جنوری 2008 کو ممبئی میں مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کی عدالت نے قتل اور اجتماعی عصمت دری کیس میں 11 ملزمان کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔ اس پر 2002 میں بلقیس بانو کے ساتھ اجتماعی زیادتی کا الزام تھا۔ مجرموں نے پندرہ سال سے زیادہ جیل میں گزارے۔ ان پر بلقیس بانو کی ماں اور تین دیگر خواتین کے ساتھ اجتماعی عصمت دری کا بھی الزام تھا۔

سینئر ایڈوکیٹ بی ٹی وینکٹیش نے فریڈم پارک میں نامہ نگاروں کو بتایا کہ مجرموں کی رہائی غیر آئینی ہے اور وہ اس گھناؤنے جرم کے لیے چھوٹ کے مستحق نہیں ہیں۔ انہوں نے سیاسی جماعتوں بشمول بی جے پی پر زور دیا کہ وہ گجرات حکومت کے فیصلے کے خلاف آواز بلند کریں۔

ایک نظر اس پر بھی

بجٹ 2023: ’کوئی امید نہیں، بجٹ ایک بار پھر ادھورے وعدوں سے بھرا ہوگا‘، سدارمیا کا اظہارِ خیال

یکم فروری کو مرکز کی مودی حکومت رواں مدت کار کا آخری مکمل بجٹ پیش کرنے والی ہے۔ مرکزی وزیر مالیات نرملا سیتارمن کے ذریعہ بجٹ پیش کیے جانے سے قبل بجٹ 2023 کو لے کر کانگریس کے کچھ لیڈران نے اپنے خیالات ظاہر کیے ہیں۔

کرناٹک ہائی کورٹ کی وارننگ، کہا: چیف سکریٹری دو ہفتوں میں لاگو کرائیں حکم

کرناٹک ہائی کورٹ نے منگل کو انتباہ دیا کہ اگر ریاستی حکومت دو ہفتوں کے اندر سبھی گاؤں اور قصبوں میں قبرستان کے لئے زمین فراہم کرانے کے اس کے حکم پر عمل درآمد کرنے میں ناکام رہتی ہے تو وہ چیف سکریٹری کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی شروع کرنے پر مجبور ہوجائے گا ۔

منگلورو: محمد فاضل قتل میں ہندوتوا عناصر ملوث ہونے کا دعویٰ - اپوزیشن پارٹیوں نےکیا کیس کی دوبارہ جانچ کامطالبہ 

بی جے پی یووا مورچہ لیڈر پروین نیٹارو قتل کے بدلے میں عناصر کی طرف سے سورتکل میں محمد فاضل کو قتل کرنے کا کھلے عام دعویٰ کرنے والے وی ایچ پی اور بجرنگ دل لیڈر شرن پمپ ویل کے خلاف کانگریس ، جے ڈی ایس اور ایس ڈی پی آئی جیسی اپوزیشن پارٹیوں نے اس قتل کیس کی ازسر نو جانچ کا مطالبہ کیا ...

ٹمکورو میں اشتعال انگیز بیان دینے والے شرن پمپ ویل سمیت دیگر ہندوتوا لیڈروں کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ لے کر اے پی سی آر نے ایس پی کو دیا میمورنڈم

حال ہی میں ریاست کرناٹک کے  ٹمکور میں  منعقدہ شوریہ یاترا کے دوران وی ایچ پی لیڈر شرن پمپ ویل نے جو متنازع اور اشتعال انگیز بیان دیا  تھا ، اس پر کٹھن کارروائی کرتے ہوئے اسے گرفتارکرنے کا مطالبہ لے کر  ایسوسی ایشن فار پروٹیکشن آف سوِل رائٹس (اے پی سی آر) کے  ایک وفد نے ٹمکورو ...