تنظیموں پر امتناع عائد کرنا مسئلہ کا حل نہیں: سیتا رام یچوری

Source: S.O. News Service | Published on 28th September 2022, 8:40 PM | ملکی خبریں |

تیرواننتا پورم،28؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) جنرل سکریٹری کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا۔ ایم سیتا رام یچوری نے آج کہا کہ تنظیموں پر امتناع عائد کرنے سے کوئی مقصد حاصل نہیں ہوتا، کیوں کہ وہ دوسرے نام سے پھر دوبارہ وجود میں آجاتے ہیں۔ مرکز کی جانب سے پاپولر فرنٹ آف انڈیا (پی ایف آئی) اور اس سے ملحقہ تنظیموں پر پانچ سال کے لیے امتناع عائد کیے جانے کے پیش نظر انہوں نے یہ خیال ظاہر کیا۔

 مرکزی وزارتِ داخلہ کی جانب سے جاری کردہ ایک اعلامیہ میں کہا گیا کہ انسدادِ غیرقانونی سرگرمیوں کے قانون 1967 (37/1967) کے دفعہ 3 کی ذیلی دفعہ 1 کے تحت محصلہ اختیارات کو استعمال میں لاتے ہوئے مرکزی حکومت اعلان کرتی ہے کہ پاپولر فرنٹ آف انڈیا اور اس کی معاون یا ملحقہ محاذوں جن میں ریہاب انڈیا فاؤنڈیشن (آر آئی ایف)، کیمپس فرنٹ آف اندیا (سی ایف آئی)، آل انڈیا امامس کونسل (اے آئی آئی سی)، نیشنل کنفیڈریشن آف ہیومن رائٹس آرگنائزیشن (این سی ایچ آر او)، نیشنل ویمنس فرنٹ، جونیئر فرنٹ، امپاورمنٹ انڈیا فاؤنڈیشن اور ریہاب فاؤنڈیشن کیرالا کو غیرقانونی قرار دیا جاتا ہے۔

 یچوری نے کہا کہ آر ایس ایس پر تین بار امتناع عائد کیا گیا۔ کیا اس نے اپنی سرگرمی روک دی؟ لہٰذا امتناع کوئی حل نہیں۔ ماضی میں بھی تنظیموں پر امتناع عائد کیا گیا، لیکن وہ نئے نام سے ابھریں۔ انہوں نے مزید کہا کہ سیمی پر نظر ڈالیے، اس پر امتناع عائد ہوا تھا، لیکن کیا ہوا؟

 ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو یہاں مخاطب کرتے ہوئے یچوری نے یہ بات کہی اور کہا کہ ہر قسم کی دہشت گرد سرگرمی کو روکا جانا چاہیے اور بلڈوزر سیاست کو بھی روکا جائے۔

پی ایف آئی کے ساتھ ربط رکھنے والی جماعت انڈین نیشنل لیگ جو حکمراں بائیں بازو کی حلیف پارٹی ہے کو اتحاد سے نکالنے صدر بی جے پی کے سندرن کے مطالبہ پر سوال کا جواب دیتے ہوئے یچوری نے برجستہ کہا کہ صحافیوں کو چاہیے کہ وہ حقائق کو سمجھیں۔

 اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے یچوری نے کہا کہ واٹس ایپ پیامات کی تشہیر سے کوئی مدد نہیں ملے گی۔ ہمارے بچپن کے دنوں میں ایک صحافی کا اندازہ اس کے جوتوں کے تلوں سے کیا جاتا تھا۔ ایک صحافی کو چاہیے کہ وہ خبروں کی تلاش میں نکلے۔ سینئر لیڈر نے زور دے کر کہا کہ وہ انہیں یہ ہدایت کررہے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی حکومت نے کھاد کے لیے بھی کسانوں کو کیا پریشان: کمل ناتھ

مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلی کمل ناتھ نے ایک بار پھر بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت پر کسان مخالف ہونے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ حکومت نے کھاد کے لیے کسانوں کو بہت زیادہ پریشان کیا ہے۔ اپنے سلسلہ وار ٹوئٹس میں سابق وزیر اعلی کمل ناتھ نے کہا کہ مدھیہ پردیش کے کسانوں کو کیمیائی ...

قومی راجدھانی دہلی کی فضا ’انتہائی خراب‘، 321 اے کیو آئی درج

 قومی راجدھانی کی ہوا کا معیار منگل کی صبح 'انتہائی خراب' زمرے میں رہا اور کوالٹی انڈیکس 321 ریکارڈ کیا گیا۔ سسٹم آف ایئر کوالٹی اینڈ ویدر فورکاسٹنگ اینڈ ریسرچ (سفر) کے مطابق منگل کی صبح شہر کا مجموعی ایئر کوالٹی انڈیکس (اے کیو آئی) انتہائی خراب زمرے میں 321 پر ریکارڈ کیا گیا۔ ماحول ...

مہاراشٹر-کرناٹک سرحد تنازعہ میں شدت، بیلگاوی میں مہاراشٹر کے ٹرکوں پر پتھراؤ، حالات کشیدہ

کرناٹک اور مہاراشٹر کے درمیان جاری سرحد تنازعہ نے بیلگاوی علاقہ میں حالات کو کشیدہ کر دیا ہے۔ سرحدی علاقہ بیلگاوی میں تشدد کے واقعات پیش آ رہے ہیں اور منگل کے روز تو بیلگاوی کے باگیواڑی میں شدید احتجاجی مظاہرہ دیکھنے کو ملا۔ اس دوران کرناٹک رکشن ویدیکے سے جڑے کارکنان نے ...

دسمبر 7 سے شروع ہونے والے سرمائی اجلاس سے قبل ہی اپوزیشن پارٹیوں نے مرکز کے سامنے رکھے اہم مطالبات؛ کل جماعتی میٹنگ میں اہم باتوں پر ہوا تبادلہ خیال

بدھ یعنی 7 دسمبر سے  شروع ہوکر 29 دسمبر کو ختم ہونے والے پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس سے پہلے  ہی  مرکزی حکومت نے کل جماعتی میٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا جو منگل کو  منعقد ہوا۔