منگلورو پولس فائرنگ؛ ریاستی حکومت نے پولس کو دی کلین چٹ، کہا؛ کسی بھی پولس اہلکار سے غلطی نہیں ہوئی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 25th October 2021, 6:51 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

منگلورو:25؍ اکتوبر(ایس اؤ نیوز)ریاست کی برسر اقتدار بی جے پی حکومت نے ہائی کورٹ کو بتایا ہے کہ منگلورو میں شہریت قانون (سی اے اے ،این آر سی) مخالف ترمیمی قانون کے احتجاج کو روکنے کےلئےپولس اہلکاروں کی طرف سے کی گئی فائرنگ میں پولس   سے  کوئی غلطی نہیں ہوئی ہے۔

متوفی ایچ ایس دورے سوامی اور دیگر افراد نے ہائی کورٹ میں مفاد عامہ کی عرضی داخل کرتےہوئے 19دسمبر 2019کو منگلورو  شہریت قانون مخالف احتجاج کے دوران ہوئی پولس فائرنگ واقعے کی تحقیقات کے لئے ایک خصوصی تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دینے کےلئے ریاستی حکومت کو حکم دینے کی درخواست کی تھی۔ 22اکتوبر بروز جمعہ کو کرناٹکا ہائی کورٹ کے چیف جسٹس ریتو راج اوستھی کی بنچ نے معاملے کی سنوائی کی۔

ریاستی حکومت کی طرف سے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل دھیان چنپا نے دلائل دیتےہوئے ہائی کورٹ کو جانکاری دی کہ منگلورو فائرنگ معاملےکی میجسٹرئیل جانچ مکمل ہونےکے بعد بند لفافےمیں ہائی کورٹ کو سونپ دی گئی ہے۔ رپورٹ کہتی ہے کہ پولس فائرنگ میں کسی ایک پولس اہلکار کی بھی غلطی نہیں تھی اور اس رپورٹ کو ریاستی حکومت نے قبول کیاہے۔ انہوں نے کہا کہ  جن لوگوں نے گڑبڑ کی ہے ان کےخلاف چارج شیٹ دائر کی گئی ہے اور کریمنل انویسٹی گیشن ڈپارٹمنٹ معاملےکی تفتیش کررہاہے۔

بنچ نے سبھی گذارشات کو ریکارڈ کرلینے کےبعد ریاستی حکومت کو ہدایت دی کہ معاملات کے تحقیقات کےمتعلق وہ افی ڈیوٹ داخل کرے۔ بنچ نے معاملے کی سنوائی ملتوی کرنے سے پہلے کہاکہ تحقیقات کی رپورٹ بند لفافے میں موصول ہوئی ہے۔ عدالت رپورٹ کھولنے اور رپورٹ کی تصدیق کرنےکے بعد متعلقہ افراد کو، درخواست گذاروں کے وکیل کو رپورٹ کی نقل فراہم کردی جائے گی۔معاملے کی اگلی سنوائی  30نومبرکو ہوگی۔

درخواست گذاروں کا اعتراض :سنئیر وکیل پروفیسر روی ورما کمار نے  درخواست گذاروں کی طرف سے دلائل دیتےہوئےکہاکہ میجسٹریٹ جانچ کا معاملہ ایسا لگتاہے  جیسے پولس والوں نے پولس والوں کی طرف سے  پولس والوں کےلئے ہی کیا ہے۔ انہوں نے ہائی کورٹ کو بتایا کہ پولس اہلکاروں کے خلاف 10شکایتیں درج ہوئی ہیں لیکن اس کے باوجود کسی بھی معاملے میں ایف آئی آر درج نہیں کی گئی اور نہ ہی کوئی تحقیقات کی گئی ۔ انہوں نے عدالت سے کہاکہ خود عدالت نے گذشتہ جولائی کے آخر  میں ریاستی حکومت کو حکم دیا تھا کہ پولس اہلکاروں کے خلاف درج کی گئی شکایات کے متعلق معلومات فراہم کریں ۔ لیکن ابھی تک حکومت نے اس حکم پر کوئی عمل نہیں کیا اور نہ ہی اپنا کوئی رد عمل ظاہر کیا ہے۔

یاد رہے کہ  19 ڈسمبر 2019 کو سی اے اے  اور این آر سی  ترمیمی قانون کی مخالفت  میں احتجاج کرنے کے دوران مینگلور میں پولس فائرنگ سے دو لوگوں کی موت واقع ہوئی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل : بی جے پی کو پنچایت نظام پر اعتماد نہیں ہے:ودھان پریشد انتخابات کے کانگریس تشہیری پروگرام میں  سابق وزیر دیش پانڈے کا ںیان

ہرپانچ سال کےبعد منعقد ہونےو الے تعلقہ پنچایت اور ضلع پنچایت انتخابات کو بی جے پی کی ریاستی حکومت نے بغیر کسی وجوہ کے معطل کیاجانا بی جے پی کو پنچایت اور جمہوری نظام پر اعتماد نہیں ہونےکا ظاہر کرتاہے۔ سابق وزیر کانگریس لیڈر آر وی دیش پانڈےنےان خیالات کااظہار کیا۔

ہبلی۔ انکولہ ریلوے لائن منصوبہ : عدالتی فیصلےکا ہوراٹا سمیتی نے استقبال کیا

ہبلی۔ انکولہ ریلوے لائن منصوبے کو جاری کئےجانے سےجنگلی جانوروں پرہونےو الے اثرات کا مطالعہ کرنے ہائی کورٹ نے قومی وائلڈ لائف بورڈ کو حکم دئیے جانے کا ہبلی۔ انکولہ ریلوے ہوراٹ سمیتی نے استقبال کیا ہے۔

اترکنڑا میں اچانک ہونے والی تیز رفتار بارش سے فصل ، گھروں کو نقصان : یلاپور تعلقہ میں ایک گھر زمین بوس

اترکنڑا ضلع بھر میں منگل اور بدھ کی رات اچانک طوفانی ہواؤں  تیز رفتار سے بارش بسنے سے جہاں عوام کو کئی پریشانیاں ہوئیں تو یلاپور تعلقہ کے امچگی میں نانو منجا دیواڑیگا کی ملکیت والا گھر مکمل زمین بوس ہوگیا ہے۔

کنداپور : زیورات کی نمائش گاہ سے 3 لوگوں نے  چرائیں سونے کی چوڑیاں

کنداپور تعلقہ کے کوٹیشور میں واقع یو وی اے میریڈین ہال میں 27 تا 29  نومبر کو جو زیورات کی نمائش لگی تھی اس میں گاہک کی شکل میں آنے والے تین لوگوں نے تقریباً 3 لاکھ روپے مالیت کی سونے کی چوڑیوں پر ہاتھ صاف کر دیا ۔

منگلورو : بغیر لائسنس کی بندوقیں رکھنے والا ایک شخص ایئرپورٹ پر گرفتار

منگلورو ایئر پورٹ کی حفاظتی ڈیوٹی پر تعینات سنٹرل انڈیا سیکیوریٹی فورس (سی آئی ایس ایف) کے عملہ نے برہماور کے رہنے والے رینالڈ ڈیسوزا کو بغیر لائسنس کی بندوقیں اپنی کار میں رکھنے کے الزام میں گرفتار کر لیا ۔

چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات: نندی مجسمے کے راستے کو پیدل چلنے والے راستہ میں تبدیل کرنے اپیل

گزشتہ چند دنوں سے میسورو ضلع میں مسلسل بارشوں کی وجہ سے میسور کے قریب واقع چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات پیش آرہے ہیں جس کی وجہ سے پہاڑ پر واقع چامنڈیشوری دیوی کے درشن کو پہنچنے والے زائرین کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

چکبالاپور ضلع میں کانگریس کی ساکھ بحال کرنے کی کوشش تیز

چکبالاپور اسمبلی حلقہ میں کانگریس پارٹی کی ساکھ باقی رکھنے اور نچلی سطح سے پارٹی کی مضبوطی پرتوجہ دیتے ہوئے اگلے اسمبلی انتخابات میں پارٹی کو کامیاب کرانے کی ہر ممکنہ کوشش کی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار کے پی سی سی ممبر وینشام (ونے شام) نے اپنی رہائش پر نامہ نگاروں سے گفتگو ...

وشوا کنڑا کلا کوٹہ کے زیر اہتمام تہنیتی اجلاس، ڈاکٹروں کو لالچی نہیں بلکہ دلدار ہونا چاہئے:ڈاکٹر منجوناتھ

ئے دیوا انسٹی ٹیوٹ آف کار ڈیا لوجی کے ڈائرکٹر و پد ماشری ڈاکٹر سی این منجوناتھ نے کہا کہ ڈاکٹر کو پیشہ و ر اور دلدار ہونا چاہئے نہ کے دولت کا لالچی۔وشوا کنڑا کلا کوٹہ کے زیر اہتمام منعقد تہنیتی اجلاس سے خطاب کر تے ہو ئے ڈاکٹر منجوناتھ نے اس خیال کا اظہار کیا او رکہا کہ دنیا میں ...

ایس ڈی پی آئی کے عہدیداروں کا اخباری نمائندوں کے ساتھ”میڈیا مکالمہ“پروگرام ، ریاستی صدر عبدالمجیداور دیگر نے کئی موضوعات پر تفصیلی روشنی ڈالی

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) نئے ریاستی عہدیداروں نے پریس کلب میں اخباری نمائندوں کے ساتھ”میڈیا مکالمہ“پروگرام کا انعقاد کیا،

ہاسن چرچ میں ہنگامہ کرنے والے شرپسندوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ

ریاست کرناٹک کے  ہاسن ضلع کے ایک چرچ  میں جب مسیحی برادی کے لوگ اپنی خصوصی عبادت میں مشغول  تھے ، تبھی راشٹرییہ سویم سیوک سنگھ کے ذیلی تنظیمیں بجرنگ دل و وشوہ ہندو پریشد کے ورکرز اچانک چرچ میں گھسے اور ہنگامہ کرنے کی کوشش کی۔