مسلم متحدہ محاذ، جماعت اسلامی ہند اور کئی تنظیموں کے ایک نمائندہ وفدکا سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوے گوڈا سے ملاقات اور شہریت ترمیمی بل   کی مخالفت اور دستور کے تحفظ میں تعاون کرنے کی اپیل

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 8th December 2019, 9:40 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو:08؍دسمبر(ایس اؤ نیوز) مسلم متحدہ محاذ، جما عت اسلامی ہند، سدبھاؤ نا منچ بورڈ آف اسلامک ایجوکیشن کرناٹک، ایف ڈی سی اے، ایس آئی او، اے پی سی آر  اور مومنٹ فار جسٹس جیسے ہم خیال تنظیموں کی قیادت میں مسلم نمائندوں کا ایک وفد 7 / دسمبر 2019  ء  بروز سنیچر، سابق وزیر اعظم شری ایچ ڈی دیوے گوڈا سے ملاقات کرتے ہوئے ملک کے موجودہ حالات پر تبادلۂ خیال کیا۔

بات چیت کے دوران وفد نے رواں پارلیمانی اجلاس میں بحث کا موضوع بنے شہریت ترمیمی بل مسودہ کے متعلق اپنے خدشات اور تشویش کا اظہار کیا۔ وفد نے بتایاکہ شہریت بل کا مسودہ ہمارے ملک کے دستور اور سکیولر روایت کے خلاف ہے، عوام کو مذہبی تفریق کی بنیاد پر ملکی شہریت دی جاتی ہے تو وہ دراصل دستور کی دفعہ 14  اور بین الاقوامی حقوق انسانی کے معاہدوں کی خلاف ورزی ہو گی۔ وفد نے شبہ جتایا کہ متعلقہ بل کے پس پردہ سیاسی مقاصد کارفرما ہیں، اس سے فرقہ پرستی کو بڑھاوا  دینے اور مسلمانوں کو بلی کا بکرہ بنائے جانے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے اس کو ایک سیاسی حربہ قرار دیا۔ متعلقہ بل کے مسودے میں کئی طرح کی خامیاں اور کمیاں موجود ہیں۔ ملک کی ابتر معاشی حالت اور عام شہریوں کو درپیش بنیادی سنگین مسائل سے توجہ ہٹانے کی کوشش کے طور پر ترمیمی بل کو پیش کئے جانےکی بات کہی۔ وہیں سابق وزیر اعظم سری دیوے گوڈا سے درخواست  کی گئی کہ وہ پارلیمنٹ میں متعلقہ بل کی سخت مخالفت کرتے ہوئے فرقہ وارانہ ہم آہنگی او ر بھائی چارگی کے ماحول کو بچائے رکھنے، انصاف اور قانون کی بالاتری کو بر قرار رکھنے، دستوری اقدار کی حفاظت کے لئے تعاون کرنے کی وفد نے گزارش کی۔ اور پارلیمنٹ کے روان اجلاس میں بل کی مخالفت میں اپنا موقف درج کرانے کے علاوہ انسانی حقوق، عدل و انصاف کی خاطر اور ملک کو بچانے کے لئے فسطائیت کا مقابلہ کرنے کے لئے ایک عوامی تحریک کی قیادت کرنے کی گزارش کی گئی۔

  اس موقع پر سابق وزیر اعظم سری دیوے گوڈا نے فسطائیت کے متعلق اپنے تجربات کو بیان کیا اور وفد کی گزارشات پر توجہ دینے کی یقین دہانی کرائی۔ وفد میں جماعت اسلامی ہند کرناٹک کے امیر حلقہ ڈاکٹر محمد سعد بلگامی، ایف ڈی سی اے کے موظف آئی پی ایس افسر فیروز پاشاہ، محمد بشارت، جمعیۃ اہل حدیث کے مولانا اعجاز احمد ندوی، BIE کے سکریٹری ریاض احمد رون، مومنٹ  فار جسٹس اور ایس آئی او کے نمائندے بھی شامل تھے۔  

ایک نظر اس پر بھی

یوم جمہوریہ کے موقع پر پس مرگ پدما وبھوشن ایوارڈ پانے والوں میں شامل ہیں اڈپی پیجاورمٹھ سوامی اور جارج فرنانڈیز

یوم جمہوریہ کے موقع پر مرکزی حکومت کی طرف سے مختلف شعبہ ہائے زندگی میں نمایاں خدمات انجام دینے والی شخصیات کو پدما بھوشن اور پدماوبھوشن جیسے اعزازات سے نوازا جاتا ہے۔ امسال جن شخصیات کو پس مرگ پدماوبھوشن ایوارڈ سے نوازا گیا ہے اس میں پیجاور مٹھ کے سوامی اور سابق مرکزی وزیر ...

شہریت قانون کی مخالفت میں اب شیموگہ میں نظر آرہا ہے شاہین باغ ؛26 جنوری کی رات کو پبلک پارک میں عورتوں کا جم غفیر!

جیسے جیسے شہریت قانون کی مخالفت میں اُٹھنے والی آوازوں کو دبانے کی کوشش کی جارہی ہے، یہ اُتنی ہی تیزی کے ساتھ اُبھرتی نظر آرہی ہے، اب تازہ خبر ریاست کرناٹک کے شہر شموگہ سے سامنے آئی ہے جہاں 25 جنوری کی شام سے ہی  آر ایم نگر میں موجود پبلک پارک میں خواتین کی بھیڑ جمع ہونی شروع ...

عوا م کے آدھار کارڈ سے ووٹر کارڈ کا لنک : پارلیمنٹ میں بل پیش کرنے کی تیار ی میں ہے حکومت ؛ کیاایک سے زائد ووٹ کو روکنے کے مقصد سے ہورہا ہے؟

پان  کارڈ، راشن کارڈ، بینک کھاتوں کے بعد اب بہت جلد عوام کے ووٹرکارڈ سے بھی آدھارکارڈ لنک کرنالازمی ہوجائے گا۔ ملک بھر میں ایک اندازے کے مطابق 121کروڑ عوام آدھارکارڈ کے ذریعے رجسٹرڈ ہیں۔ بھارت کی کل آبادی کے 92فی صدعوام آدھار کارڈ کے ساتھ جڑے ہوئے ہیں۔ سپریم کورٹ کی روک سے پہلے ...

منگلورو ائیرپورٹ میں بم رکھنے والے دہشت گرد کو آر ایس ایس کی پشت پناہی حاصل، ایس ڈی پی آئی نے وزیر اعلی او ر وزیر داخلہ سے مانگا استعفیٰ

 سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) نے منگلور ایر پورٹ میں بم رکھنے والے دہشت گرد آدتیہ راؤ معاملے میں سچائی کو سامنے لانے اور وزیر اعلی و وزیر داخلہ کے استعفی کے مطالبے کو لیکر بنگلور ٹاؤن ہال میں ایک احتجاجی مظاہرے کا انعقاد کیا۔

26جنوری کو احتجاجی مظاہروں کی اجازت نہیں:پولیس کمشنر بھاسکر راؤ

شہرکے پولیس کمشنر بھاسکر راؤ نے یوم جمہوریہ تقریبات کیلئے شہراور مانک شاہ پریڈ گراؤنڈ پر سکیورٹی انتظامات کی تفصیلات پیش کرنے کے دوران واضح کیا کہ 26جنوری کو شہر بھر میں یوم جمہوریہ تقریبات منانے والے اداروں انجمنوں پر کوئی پابندی عائد نہیں ہے -

رات بارہ بجے ہی بھٹکل میں منائی گئی یوم جمہوریہ کی تقریب؛ ہندوستانی آئین کی تجاویز پڑھ کر سنائی گئیں؛سینکڑوں لوگوں کی شرکت

بھٹکل میں  وی دی انڈین (بھٹکل) کی جانب سے تعلقہ اسٹڈیم کے باہر رات بارہ بجے یوم جمہوریہ کی تقریب نظر آئی جہاں  عوام نے  ہندوستانی آئین کی تجاویز پڑھ کر  ہندوستانی دستور کے تحفظ  کا عہد لیا۔

سی اے اے: شاہین باغ روڈ کھلوانے کیلئے آمنے سامنے ہوں گے لوگ؟ پولیس کو دیا ایک ہفتے کا وقت

شاہین باغ میں پرامن مظاہرے کے درمیان اب لوگوں کے صبر کا باندھ ٹوٹتا دکھائی دے رہا ہے۔اب راستہ بند ہونے کی وجہ سے پریشانی اٹھا رہے لوگوں نے بھی سڑک پر اترنے کا فیصلہ کر لیا ہے،یہ لوگ تقریبا 40 دن سے بند کالندی کنج راستے کو کھلوانے کے لئے مارچ نکالنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں۔بتا دیں ...

انڈین نوائط فورم کی جانب سے لوگو ڈیزائن کرنے کا مقابلہ؛ بہترین ڈیزائن کرنے پر دس ہزار روپئے کے انعامات کا اعلان

بیرون بھٹکل میں قائم بھٹکل کی آٹھ جماعتوں پر مشتمل انڈین نوائط فورم (آئی این ایف) نے  اپنے ادارہ کے لئے خوبصورت لوگو (LOGO) ڈیزائن  کرنے کا مقابلہ منعقد کیا ہے اور سب سے خوبصورت اور بہترین لوگو ڈیزائن کرنے پر دس ہزار روپئے کے انعامات کا اعلان کیا ہے۔

26جنوری کو احتجاجی مظاہروں کی اجازت نہیں:پولیس کمشنر بھاسکر راؤ

شہرکے پولیس کمشنر بھاسکر راؤ نے یوم جمہوریہ تقریبات کیلئے شہراور مانک شاہ پریڈ گراؤنڈ پر سکیورٹی انتظامات کی تفصیلات پیش کرنے کے دوران واضح کیا کہ 26جنوری کو شہر بھر میں یوم جمہوریہ تقریبات منانے والے اداروں انجمنوں پر کوئی پابندی عائد نہیں ہے -

مودی حکومت نے ’بھیما کوریگاؤں تشدد‘ کی جانچ این آئی اے کو سونپی، مہاراشٹر حکومت ناراض

شیوسینا کے ذریعہ بی جے پی سے رشتہ توڑے جانے اور مہاراشٹر میں کانگریس و این سی پی کے ساتھ مل کر حکومت سازی کے بعد سے ہی مرکز کی مودی حکومت اور مہاراشٹر حکومت کے درمیان اختلافات منظر عام پر آنے شروع ہو گئے تھے، جو اب بڑھتے ہوئے نظر آ رہے ہیں۔

سپریم کورٹ کا دہلی میں این ایس اے لگائے جانے کے خلاف عرضی کی سماعت سے انکار

سپریم کورٹ نے دہلی میں قومی سلامتی قانون (این ایس اے) کےنفاذ کرنے کے حکومت کے فیصلے کے خلاف دائر عرضی پر سماعت کرنے سے جمعہ کو انکار کردیا۔ جسٹس ارون مشرا اور جسٹس اندرا بنرجی کی بنچ نے عرضی گذار منوہر لال شرما کی عرضی کی سماعت سے انکار کردیا ہے۔