آئی پی ایل : بنگلورو نے کولکاتا کو 8وکٹ سے دی شکست

Source: S.O. News Service | Published on 22nd October 2020, 2:30 PM | اسپورٹس |

ابوظہبی،22؍اکتوبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) کولکاتا نائٹ رائیدرس کے لیے آج کا دن انتہائی خراب ثابت ہوا کیونکہ صرف ٹاس جیتنے کے علاوہ ٹیم کے لیے کچھ بھی مثبت نہیں ہوا۔ ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کولکاتا کے کپتان ایان مورگن کے لیے پوری طرح غلط ثابت ہوا اور اس کے لیے ذمہ دار ان کے بلے باز کہے جائیں گے جنھوں نے 20 اوور میں محض 84 رن کا اسکور کھڑا کیا۔ اس چھوٹے اسکور کو بنگلور کی مضبوط بلے بازی والی ٹیم نے محض 2 وکٹ کے نقصان پر 13.3 اوور میں ہی حاصل کر لیا۔ بنگلور کے گیندباز محمد سراج کی تعریف کرنی ہوگی جنھوں نے اپنے 4 اوور میں سے 2 میڈن اوور پھینکے اور محض 8 رن دے کر 3 وکٹ حاصل کیے۔

کولکاتا کی خراب بلے بازی کا اندازہ اسی بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ دونوں سلامی بلے باز شبمن گل اور راہل ترپاٹھی محض 1-1 رن بنا کر آؤٹ ہو گئے اور تیسرے نمبر پر اترے نتیش رانا بغیر کوئی رن بنائے پویلین لوٹ گئے۔ بنگلور کے گیندباز محمد سراج کی تعریف کرنی ہوگی جنھوں نے ٹیم کے لیے دوسرے اور اپنے پہلے اوور میں کوئی رن دیے بغیر دو وکٹ جھٹک لیے اور پھر اگلے اوور میں نودیپ سینی نے شبمن گل کو آؤٹ کر دیا۔ پھر سراج نے ٹم بینٹن کو بھی 8 رن کے انفرادی اسکور پر آؤٹ کر دیا۔ 3.3 اوور میں محض 14 رن پر کولکاتا کے 4 وکٹ آؤٹ ہو گئے اور ٹیم پوری طرح سے دباؤ میں آ گئی۔

ہاں پر دنیش کارتک اور ایان مورگن سے کافی امیدیں تھیں، لیکن دنیش کارتک بھی 4 رن بنا کر یجویندر چہل کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔ جلد ہی پیٹ کمنس کو بھی چہل نے 4 رن کے انفرادی اسکور پر پویلین بھیج دیا۔ اس وقت ٹیم کا اسکور 12.3 اوور میں 6 وکٹ کے نقصان پر 40 رن تھا اور کپتان ایان مورگن کے سامنے مسئلہ یہ تھا کہ تیزی سے بھی رن بنائیں اور وکٹ بھی نہ گنوائیں۔ رنوں کی رفتار بڑھانے کی کوشش میں وہ سولہویں اوور کی چوتھی گیند پر واشنگٹن سندر کا شکار ہو گئے۔ انھوں نے 34 گیندوں پر 30 اہم رن بنائے۔ بعد میں کلدیپ یادو اور لاکی فرگوسن نے سنبھل کر کھیلتے ہوئے کچھ رن بٹورے جس کی وجہ سے اسکور 20 اوور میں 84 رن تک پہنچ سکا۔ کلدیپ بیسویں اوور کی آخری گیند پر رن آؤٹ ہوئے۔ وہ 19 گیندوں پر 12 رن بنانے میں کامیاب ہوئے جب کہ فرگوسن نے 16 گیندوں پر ناٹ آؤٹ 19 رن بنائے۔

آج پورے میچ میں ایک طرح سے بنگلور کے گیندباز ہی چھائے رہے۔ محمد سراج نے 4 اوور میں محض 8 رن دے کر 3 وکٹ لیے جب کہ یجویندر چہل نے 4 اوور میں 15 رن دے کر 2 وکٹ لیے۔ 1-1 وکٹ نودیپ سینی اور واشنگٹن سندر کو حاصل ہوا جنھوں نے بالترتیب 3 اوور میں 23 رن اور 4 اوور میں 14 رن دیے۔ کرس مورس نے 4 اوور میں 16 رن دے کر کوئی وکٹ حاصل نہیں کیا اور اوسورو اڈانا کو صرف 1 اوور کرنے کا موقع ملا جنھوں نے 6 رن دیے اور کوئی وکٹ نہیں ملا۔

85 رن کے چھوٹے ہدف کا پیچھا کرنے اترے بنگلور کے سلامی بلے باز نے شروع سے ہی ظاہر کر دیا کہ وہ کسی جلدبازی میں نہیں ہیں۔ اطمینان کے ساتھ انھوں نے بلے بازی کی اور خراب گیندوں پر شاٹ بھی لگائے۔ خصوصی طور پر دیودت پڈیکل بلاخوف شاٹ کھیل رہے تھے۔ بنگلور کا پہلا وکٹ ساتویں اوور کی دوسری گیند پر گرا جب ایرون فنچ کو لاکی فرگوسن نے وکٹ کیپر دنیش کارتک کے ہاتھوں کیچ کرایا۔ یہ فرگوسن کا پہلا اوور تھا اور یہ حیران کن ہے کہ پچھلے میچ میں اپنی گیندبازی سے سبھی کو متاثر کرنے والے فرگوسن کو ایان مورگن نے ساتویں اوور میں گیندبازی دی جب میچ تقریباً ہاتھ سے نکل چکا تھا۔ فنچ جب 16 رن بنا کر آؤٹ ہوئے تب تک بنگلور کا اسکور 46 رن ہو گیا تھا۔

دوسرا وکٹ دیودت پڈیکل کا گرا جو اپنی غلطی کی وجہ سے رَن آؤٹ ہوئے۔ انھوں نے 17 گیندوں میں 3 چوکوں کی مدد سے 25 رن بنائے۔ اس کے بعد بنگلور نے کوئی وکٹ نہیں گنوایا اور آسانی کے ساتھ جیت کی طرف بڑھتے رہے۔ تیسرے نمبر پر اترے گرکیرت مان نے 4 چوکوں کی مدد سے 26 گیندوں پر ناٹ آؤٹ 21 رن بنائے اور کپتان وراٹ کوہلی نے 2 چوکوں کی مدد سے ناٹ آؤٹ 18 رن (17 گیندوں پر) بنائے۔ جیت کے لیے 85 رن کا ہدف بنگلور نے 13.3 اوور میں محض 2 وکٹ کے نقصان پر حاصل کر لیا۔

گیندبازی میں لاکی فرگوسن کے علاوہ کولکاتا کا کوئی گیندباز بنگلور کے بلے بازوں کو پریشان نہیں کر سکا۔ فرگوسن نے 4 اوور میں 18 رن دے کر 1 وکٹ حاصل کیا اور بقیہ گیندبازوں کو کوئی وکٹ نہیں ملا۔ چکرورتی ورون نے 4 اوور میں 28 رن، پیٹ کمنس نے 3 اوور میں 18 رن، اور پرسدھ کرشنا نے 2.3 اوور میں 20 رن دیے۔ حالانکہ ان گیندبازوں کی کارکردگی بہت بری نہیں رہی، لیکن کولکاتا کے بلے بازوں نے رن ہی اتنے کم بنائے تھے کہ اس کا دفاع کرنا آسان نہیں تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

آئی پی ایل فائنل میں چنئی نے دی کولکاتا نائٹ رائڈرس کو شکست، چنئی بنا چوتھی مرتبہ آئی پی ایل چیمپئن

سلامی بلے باز ڈو پلیسسز (86) کی بہترین نصف سنچری کے ساتھ روبن اتھپا کے (31) اور معین علی کے (ناٹ آؤٹ37) کی جارحانہ اننگز کے نتیجے میں چنئی سپر کنگس نے کولکاتا نائٹ رائڈرس کو  27 رنوں سے شکست دے دی اور چوتھی بار آئی پی ایل چمپئن بننے کا فخر حاصل کرلیا۔ 

آئی پی ایل 2021: کولکاتہ تیسری مرتبہ آئی پی ایل کے فائنل میں ، راہل ترپاٹھی نے چھکا لگا کر دلائی جیت

)  آئی پی ایل 2021 کا خطابی مقابلہ اب کولکاتہ نائٹ رائیڈرس اور چنئی سپرکنگس کے درمیان کھیلا جائے گا ۔ کے کے آر نے کوالیفائر 2 کے میچ میں دہلی کیپیٹلز کو 3 وکٹوں سے شکست دیدی ہے ۔ دہلی کی ٹیم پوائنٹس ٹیبل پر سرفہرست رہی تھی اور اس کو کوالیفائر 1 میں چنئی سپرکنگس نے شکست دی تھی ۔ میچ ...

چنئی نے ریکارڈ بنایا، نویں بار آئی پی ایل کے فائنل میں پہنچی، دہلی کو دی شکست

دبئی میں کھیلے گئے کوالیفائنگ مقابلہ میں چنئی سپر کنگس (سی ایس کے) نے دہلی کیپیٹلس کو شکست دے کر فائنل میں اپنی جگہ بنا لی ۔ سی ایس کے کپتان دھونی نے ایک شاندار پاری کھیلتے ہوئے چھہ گیندوں میں 18 رن بنائے اور آخری گیند پر چوکا لگاکر ٹیم کو جیت دلائی۔رابن اتھپا اور رتو راج ...