بالاسبرامنیم اس ملک کے موسیقی اورلسانی ثقافت کی ایک عمدہ مثال تھے: سونیا گاندھی

Source: S.O. News Service | Published on 26th September 2020, 11:18 PM | ملکی خبریں |

نئی  دہلی،26؍ستمبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) کانگریس  کی  چیئرپرسن سونیا گاندھی نے موسیقی کی دنیا کی ایک عظیم ہستی بالاسبرامنیم کے انتقال پراپنے گہرے رنج  وغم  کا اظہار کرتےہوئے کہا ہے کہ وہ ملک کی  موسیقی اور لسانی  ثقافت کے عمدہ مثال تھے اور ان کے نہیں رہنے  سے آرٹ اور کلچرل کی دنیا پھیکی پڑگئی ہے۔

”محترمہ گاندھی نے بالاسبرامنیم کے بیٹے ایس پی بی چرن کو بھیجے گئے ایک تعزیتی پیغام میں سنیچر کو کہا  ہے کہ ’’بالاسبرامنیم  کے انتقال  سے میں بہت غم زدہ ہوں۔ انہوں  نے چھ  ہفتہ سے زیادہ عرصے تک کووڈ بیماری کا بہادری سے مقابلہ کیا۔‘‘

کانگریس چیئرپرسن نے کہا کہ بالاسبرامنیم ہندوستان کی موسیقی اورلسانی ثقافت کے عمدہ مثال تھے۔ انہوں نے تمل ،تیلگو،کننڑ،ملیالم اور ہندی میں یکساں سریلی اورموثر انداز میں سنگیت کو اپنی آواز میں پرویا۔ انہوں نے اپنے گانوں سے لاکھوں شائقین  کا دل جیتا۔ انہوں نے کہا کہ’’وہ حقیقت  میں پادوم نیلا۔ دی سنگنگ مون‘تھے۔  غم کی اس گھڑی میں آپ کے اہل خانہ کے تئیں میری نیک خواہشات ہیں۔ ایشوران کی آتما کوشانتی دے۔‘‘

واضح رہے کہ  معروف موسیقار اورگلوکار کا کل دوپہر انتقال ہوگیا۔ وہ 74 سال کے تھے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

دہلی تشدد: عمر خالد نے عدالت میں بیان کیا اپنا درد، کہا 'کسی سے ملنے تک نہیں دیا جا رہا'

 دہلی تشدد معاملہ میں گرفتار عمر خالد اس وقت عدالتی حراست میں ہیں۔ جمعرات کے روز انھیں دہلی ہائی کورٹ میں پیش کیا گیا تھا جہاں انھوں نے پولس پر الزام عائد کیا ہے کہ انھیں کسی سے ملنے کی اجازت نہیں دی جا رہی۔