بابری مسجد: مصالحتی کمیٹی سے 18 جولائی تک رپورٹ طلب، ہمیں عدالت پر مکمل اعتماد: ارشد مدنی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th July 2019, 11:18 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،11؍جولائی (ایس او نیوز؍پر ریلیز) بابری مسجد ملکیت تنازعہ کے ایک فریق گوپال سنگھ وشارد کی عرضی پر چیف جسٹس رنجن گگوئی کی سربراہی والی پانچ رکنی بینچ نے آج سماعت کرتے ہوئے مصالحت کمیٹی کو ہدایت کی کہ وہ 18 جولائی تک اپنی حتمی رپورٹ پیش کرے. چیف جسٹس رنجن گگوئی نے کہا کہ عدالت پہلے مصالحت کمیٹی کی رپورٹ کا مطالعہ کریگی اور اگر عدالت یہ محسوس کرے گی کہ مصالحت کے تعلق سے کوئی امید افزائ پیش رفت نہیں ہوئی اوریہ کہ مصالحت سے اس مسئلہ کاحل نکلتا ہوا محسوس نہیں ہو رہا ہے, تو عدالت آئندہ 25 جولائی سے اس معاملہ پر روزانہ سماعت شروع کرسکتی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ گوپال سنگھ وشارد بھی اس مقدمہ میں فریق ہیں پچھلے دنوں انہوں نے عدالت میں ایک عرضی داخل کرکے معاملہ کی جلد سماعت کی درخواست کی تھی۔ انہوں نے عرضی میں کہا تھا کہ مصالحت میں کوئی پیش رفت نہیں ہو رہی ہے اس لئے اس کی باقاعدہ سماعت کی جانی چاہئے۔ عرضی پر غورکرتے ہوئے عدالت نے یہ اشارہ دیا کہ اگر مصالحت کی کوششوں میں کوئی پیش رفت نہیں ہوئی ہے تو اب عدالت اس معاملہ کی عنقریب روزانہ سماعت کرسکتی ہے۔

واضح رہے کہ بات چیت کے ذریعہ اس معاملہ کا حل نکالنے کے لئے سپریم کورٹ نے سابق جج ایم ایم خلیفۃ اللہ کی سربراہی میں ایک تین رکنی پینل قائم کیا تھا جس میں مذہبی گرو شری شری روی شنکر اور سینئر ایڈوکیٹ شری رام پنچو شامل ہیں۔ پچھلی سماعت میں اس کمیٹی نے عدالت سے گزارش کی تھی کہ مصالت کے لئے اسے مزید مہلت دی جائے جس پر عدالت نے اسے 15 اگست تک کی مہلت دی تھی۔

جمعرات کے روز دوران کارروائی عدالت نے فریق اول جمعیۃ علما ہند کی جانب سے سینئر ایڈوکیٹ ڈاکٹر راجیودھون و دیگر وکلا موجودتھے۔ ڈاکٹرراجیودھون نے کہا کہ وہ عدالت کا حکم ماننے کو تیارہے اورجب بھی معاملہ کی سماعت شروع ہوگی وہ عدالت میں مزید بحث کے لئے موجودہوں گے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ موقع مصالحتی پینل پر تنقید کا نہیں ہے بلکہ ہمیں اس کی رپورٹ کا انتظار کرنا چاہئے کیونکہ یہ پینل خودعدالت نے تشکیل دیا تھا لیکن اگر فریق مخالف اس عمل سے اکتا گیا ہے تو اس میں مصالحتی پینل کا کوئی قصورنہیں ہے۔

جمعیۃ علما ہند کے صدرمولانا سید ارشد مدنی نے جمعرات یعنی 11 جولائی کی قانونی پیش رفت پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم تو شروع سے چاہتے ہیں کہ عدالت اس معاملہ میں اپنا فیصلہ دے لیکن چونکہ عدالت مصالحت کے ذریعہ اس کا حل چاہتی تھی اور اس کے لئے اس نے باضابطہ طور پر مصالحت کاروں کا ایک پینل بھی قائم کردیا تھا، اس لئے عدالت کی خواہش کا احترام کرتے ہوئے ہم نے مصالحت کاروں کے ساتھ تعاون کیا اور ان کے سامنے اپنا موقف رکھا۔

مولانا مدنی نے کہا کہ ہمارے وکلا اب مصالحتی کمیٹی کی رپورٹ کا انتظارکررہے ہیں اور اب 18 جولائی کے بعد ہی یہ بات سامنے آئے گی کہ آئندہ عدالت کی حکمت عملی کیا ہوگی تاہم اگر 25 جولائی سے سماعت کا آغاز ہوتاہے تو اس کے لئے ہمارے وکلائ پوری طرح تیارہیں ، انہوں نے کہا کہ ہم عدالت کا نہ صرف احترام کرتے ہیں بلکہ اس پر اعتمادبھی کرتے ہیں ہم انصاف چاہتے ہیں اور ہمیں یقین ہے کہ عدالت محض اعتقادکی بنیادپر کوئی فیصلہ نہیں کریگی بلکہ اس کا فیصلہ ثبوت وشواہد کی بنیادپر ہوگا انہوں نے تمام لوگوں سے یہ اپیل بھی کی کہ وہ قانونی عمل پر اعتمادرکھیں اور صبروتحمل کے ساتھ عدالت کے فیصلہ کا انتظارکریں ساتھ ہی غیر ضروری بیان بازی سے بھی گریز کریں تاکہ معاشرہ میں کسی قسم کا اشتعال نہ پھیلے انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ ایک قانونی معاملہ ہے جو ملکیت سے جڑاہواہے اوراس معاملہ میں ہماراموقف بہت مضبوط ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بابری مسجد ملکیت کا معاملہ؛ مقدمہ کی سماعت آخری مرحلے میں، ایڈوکیٹ ڈاکٹر راجیو دھون پیر کو کریں گے بحث ؛ 17 اکتوبر تک تمام فریقین کو بحث مکمل کرنے کے احکامات

بابری مسجد حق ملکیت معاملہ کی سماعت کل پیر سے ایک بار پھرشر وع ہونے جارہی ہے، حتمی بحث کا یہ 38 واں دن ہوگا جس کے دوران سوٹ نمبر 4 پر مسلمانوں کی نمائندگی کرنے والے  وکیل ڈاکٹر راجیو دھون اپنی نا مکمل بحث کا آغاز کریں گے۔گذشتہ ایک ہفتہ سے دسہرے کی تعطیلات کی وجہ سے عدالت کی ...

سول سوسائٹی کے ارکان کے ساتھ مل کر جماعت اسلامی ہند وفد کا کشمیر دورہ، کشمیر کے مسائل پر عام لوگوں سے کی گفتگو

سول سوسائٹی اور جماعت اسلامی ہند کے   ذمہ داران پر مشتمل ایک وفدنے مورخہ7/ اکتوبر سے 10/ اکتوبر کے درمیان کشمیر کا دورہ کیا اور وہاں کے حالات کا جائزہ لینے کے بعد پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے بتایا کہ ابھی بھی کشمیر میں عوام بے حد پریشان ہیں اور کئی مسائل کا سامناکررہے ہیں۔ ریلیز ...

’وعدے پورے نہیں کرنے والی بی جے پی کو ووٹ مانگنے کا کوئی حق نہیں‘: رامیشور راؤ

جھارکھنڈ ریاستی کانگریس کمیٹی کے صدر اور سابق ممبر پارلیمنٹ رامیشور راؤ نے الزام لگاتے ہوئے آج کہا ہے کہ ریاست کے وزیراعلی رگھوبر داس کی قیادت میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی حکومت گزشتہ پانچ برسوں میں وعدے پورے کرنے میں ناکام رہی ہے اس لئے اسے عوام سے ووٹ مانگنے کا کوئی ...

کانگریس رکن بننے پر فخر محسوس کر رہی ہوں: الکا لامبا

گزشتہ اسمبلی انتخابات میں دہلی کی چاندنی چوک سے عام آدمی پارٹی کے ٹکٹ پر اسمبلی پہنچنے والی الکا لامبا ہفتہ کو کانگریس میں واپس آگئیں۔ کانگریس کے پارٹی معاملات کے دہلی کے انچارج پی سی چاکو کی موجودگی میں محترمہ لامبا نے پارٹی کی رکنیت حاصل کی۔ کانگریس کی طلبا یونین کی تنظیم ...

کشمیر میں مواصلاتی پابندی، اہلیان کشمیر پر قہر سامانیوں کی داستان

وادی کشمیر میں گزشتہ زائد از دو ماہ سے موبائل فون اور انٹرنیٹ خدمات پر پابندی، جو ہنوز جاری ہے، کے دوران اہلیان وادی کو جن متنوع مصائب و گوناگوں مشکلات سے دوچار ہونا پڑا ان مصائب ومشکلات سے نصف صدی قبل کے لوگ بھی دوچار نہیں تھے۔