کٹر اور انتہا پسند اسلام سے آسٹریلیا کو خطرہ ہے: وزیرِ اعظم

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 15th November 2018, 11:27 AM | عالمی خبریں |

 سڈنی 15نومبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) آسٹریلیا کی پارلیمنٹ کی پہلی مسلمان خاتون رکن نے وزیر اعظم پر ان کی جانب سے یہ کہنے کی بنا پر تنقید کی ہے کہ ملک کے طرز زندگی کے لیے سب سے بڑا خطرہ، کٹر، پرتشدد، انتہا پسند اسلام ہے۔

سکاٹ مورسن کے یہ تبصرے اس کے بعد سامنے آئے جب جمعے کے روز چاقو سے مسلح ایک صومالیہ نژاد شخص میلبورن میں ایک مہلک حملے کے بعد پولیس کی گولیوں کا نشانہ بن کر ہلاک ہو گیا۔

پارلیمنٹ کی رکن این ایلی جو دہشت گردی کے انسداد سے متعلق ایک سابق بین الاقوامی ماہر ہیں، کہتی ہیں کہ آسٹریلیا کے وزیر اعظم سکاٹ مورسن کے تبصرے تنازع کا باعث بنے۔

مورسن نے میلبورن میں ایک حملے کے بعد اس سے لاحق خطرے کی تفصیلات بتائیں جسے انہوں نے انتہا پسند اسلام کا کٹڑ اور خطرناک نظریہ کہا۔

پولیس کا خیال ہے کہ صومالی نژاد تارک وطن حسان خلیف شیر علی کے، جس نے ایک شخص کو ہلاک اور دو افراد کو چاقو کے وار کر کے زخمی کر دیا تھا، داعش کے ساتھ رابطے تھے اور اسے انتہا پسند بنا دیا گیا تھا۔

وزیر اعظم نے اسلامی کمیونیٹیز پر زور دیا ہے کہ وہ یہ یقینی بنائیں کہ خطرناک تعليمات اور نظریات آسٹریلیا میں نہ پھیلیں۔

این ایلی مصر میں پیدا ہوئی تھیں اور دو سال کی عمر میں آسٹریلیا منتقل ہوئیں۔ 2016 میں پارلیمنٹ کی رکن منتخب ہونے کے بعد وہ آسٹریلیا کی پارلیمنٹ کی پہلی مسلمان خاتون بن گئی تھیں۔

ان کا خیال ہے کہ سیاست دانوں کو انتہا پسندی کے خاتمے کے لیے مسلمان کمیونیٹز کو مہارتیں اور اعتماد دینے پر توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں مذمتی الفاظ سے آگے جانے کی ضرورت ہے۔ میرا خیال ہے کہ ہمیں مسلمان کمیونٹیز کے لیے ان اپیلوں سے آگے جانا ہو گا، جو قانون نافذ کرنے والا ہر وہ ادارہ کرتا ہے جس سے میں نے کبھی بات کی ہے، تاکہ سیکیورٹی کے ایک بہت اہم اتحادی کو تسلیم کیا جائے اور روک تھام کے کسی موثر، جلد مداخلت کے طریقے کی جانب بڑھا جائے۔

دوسرے مسلمان راہنماؤں کا خیال ہے کہ جمعے کے روز میلبورن میں ہونے والا مہلک حملہ آسٹریلیا کے سیکیورٹی اداروں کی ناکامیوں کا ایک نتیجہ تھا۔

حملہ آور شیر علی کا آسٹریلیا کا پاسپورٹ اس سے قبل ان خدشات کے باعث منسوخ ہوا تھا کہ اس نے 2015 میں شام کے سفر کا منصوبہ بنایا تھا۔

یہ جاننے کے باوجود کہ وہ انتہا پسند نظریات کا حامل تھا، انٹیلی جینس اداروں نے فعال طریقے سے اس کی نگرانی نہیں کی اور اسے ایک خطرہ نہیں سمجھا گیا۔ وہ حملے کے دوران پولیس کی فائرنگ کا نشانہ بنا اور بعد میں اسپتال میں دم توڑ گیا۔

اسی دوران فنڈز اکٹھے کرنے کی ایک مہم میں اس بے گھر شخص کی مدد کے لیے لگ بھگ 85 ہزار ڈالرز اکٹھے کر لیے ہیں جس نے شیر علی سے ایک شاپنگ ٹرالی ٹکرا کر دو پولیس اہل کاروں کو اس کے چاقو کے حملوں سے بچایا۔

مشتبہ دہشت گرد پہلے ہی ایک کیفے کے مالک کو ہلاک اور دو کو زخمی کر چکا تھا۔ آسٹریلیا میں دہشت گردی کا بدستور ایک ممکنہ خطرہ ہے۔

آسٹریلیا میں چھ لاکھ مسلمان بستے ہیں اور عیسائیت کے بعد اسلام ملک کا دوسرا سب سے بڑا مذہب ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

شہریت ترمیمی بل: دستور سے کھلواڑ ........... آز: معصوم مرادآبادی

ہندوستان کے سیکولرجمہوری آئین پر ایک ایسا خطرناک ہتھوڑا چلنے والا ہے جس کی زد میں آنے والی ہر چیز ٹوٹ پھوٹ کر رہ جائے گی ۔حکومت شہری قانون میں ایک ایسی تباہ کن ترمیم کرنے جارہی ہے جو مذہبی تعصب اور مسلم دشمنی کی بدترین مثال ہے۔عام خیال یہ ہے کہ مجوزہ شہریت ترمیمی بل مسلمانوں ...

  بغداد میں مسلح حملہ آوروں کے مظاہرین پرخونیں حملے کے باوجود احتجاج جاری

عراق کے دارالحکومت بغداد میں نامعلوم مسلح حملہ آوروں کے خونریز حملے کے باوجود مظاہرین نے حکومت مخالف احتجاج جاری رکھا ہوا ہے اور وہ جنوبی شہروں میں بھی اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرے کررہے ہیں۔بغداد میں جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب نامعلوم حملہ آوروں نے مظاہرین پر ...

نجف میں مقبول شیعہ رہ نما مقتدیٰ الصدر کے مکان پر راکٹ حملہ

عراق کے دارالحکومت بغداد میں مظاہرین کے خون کی ہولی کے ایک روز بعد جنوبی شہر نجف میں مقبول شیعہ رہ نما مقتدیٰ الصدر کے مکان پر ایک ڈرون سے راکٹ داغا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق اس ڈرون حملے میں مکان کو معمولی نقصان پہنچا ہے۔البتہ اس سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔اس حملے کے وقت خود ...

امریکہ - سوڈان میں سفارتی تعلقات کی بحالی کے اعلان پر سعودیہ  کا خیر مقدم

سعودی عرب کی وزارت خارجہ نے جمہوریہ سوڈان اور امریکا کے درمیان سفارتی تعلقات کی بحالی کے اعلان کا خیرمقدم کیا گیا ہے۔خیال رہے کہ امریکا اور سوڈان کے درمیان دو عشروں سے سفارتی تعلقات منقطع چلے آ رہے ہیں۔ سوڈان میں صدر عمر البشیر کی رواں سال معزولی کے بعد خرطوم اور واشنگٹن کے ...

 سعودی عرب کی طبی ٹیم کی دارالسلام میں تنزانیا کے 13 بچوں کی سرجری

شاہ سلمان سنٹر فار ریلیف اینڈ ہیومینی ٹیرین ایکشن کی رضاکارانہ میڈیکل ٹیم نے جمعہ کے روز افریقی ملک تنزانیا کے دارالحکومت دارالسلام میں 13 بچوں کی سرجری کی۔ ان میں سے پانچ کیسز میں بچوں کی اوپن ہارٹ سرجری کی گئی جب کہ دیگر 8 بچوں کے بھی دل کے آپریشن کیے گئے۔

فلوریڈا واقعہ سعودی عوام کی سوچ کی عکاسی نہیں کرتا:سعودی وزیر مذہبی امور

سعودی عرب کے وزیر برائے مذہبی امور ڈاکٹر عبداللطیف آل الشیخ نے امریکی ریاست فلوریڈا کے ایک فوجی اڈے پر سعودی فوجی کے ہاتھوں فائرنگ کے نتیجے میں تین امریکی فوجیوں کی ہلاکت کی مذمت کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ فلوریڈا واقعہ سعودی عرب کے عوام کی سوچ کی عکاسی نہیں کرتا۔