منگلورو: شہریت ترمیمی قانون مخالف احتجاج کے دوران ہوئے لاٹھی چارج اور فائرنگ معاملے میں ایف آئی آر درج ہونا چاہیے؛ ہائی کورٹ کا تیکھاتبصرہ

Source: S.O. News Service | Published on 19th February 2020, 12:12 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

منگلورو19/فروری (ایس او نیوز) منگلورو میں شہریت ترمیمی قانون کے خلاف19دسمبر2019 کو ہوئے پرتشدد احتجاج کے دوران پولیس کی طرف سے کیے گئے لاٹھی چارج اور فائرنگ کے سلسلے میں کرناٹکا ہائی کورٹ کی ڈیویزن بنیچ کے رکن جسٹس جان مائیکل نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ پولیس کوا س معاملے میں ایف آئی درج کرنا چاہیے۔

خیال رہے کہ تشدد برپا کرنے کے الزام میں جن لوگوں کو پولیس نے گرفتار کیا تھاان میں سے 21ملزمین کی عدالت نے ضمانت کی عرضی پر 17 فروری کوبحث کرتے ہوئے ملزمین کے وکیلوں نے یہ دلیل عدالت کے سامنے رکھی تھی کہ ”پولیس نے جھوٹے الزامات لگاکر ان لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔ ہمارے مؤکلوں کے تشدد میں شامل ہونے کا کوئی ثبوت پولیس نے پیش نہیں کیا ہے۔جبکہ پولیس نے فائرنگ کرتے ہوئے عوام پر ظلم ڈھایا ہے، اور اس کے خلاف کوئی ایف آئی آ ر داخل نہیں کی گئی ہے۔“اس نکتے کو عدالتی بینچ نے سنجیدگی سے لیتے ہوئے حکومت سے پوچھا تھا کہ ایف آئی آر داخل کیے جانے کے بارے میں اس کے پاس کیا تفصیلات ہیں۔

 کل جب اس معاملے کی سماعت ہورہی تھی تو سرکاری وکیل نے کہا کہ اس معاملے سے متعلق تمام تفصیلات ڈیویزن بینچ کے سامنے 24فروری کو پیش کیے جاسکیں گے اس لئے تب تک کے لئے مہلت دی جائے۔ لیکن کورٹ کے جسٹس جان مائیکل ڈی کونہانے للیتا کماری معاملے میں سپریم کورٹ کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا قابل دست اندازی(cognizible) جرم میں ایف آئی آر درج کیا جانا ضروری ہے۔اس لئے فائرنگ میں ہلاک ہونے والے افراد کے وارثین یارشتے داروں کی طرف سے جو شکایت درج کروائی گئی ہے اس پر پولیس کو ایف آئی آر درج کرنا چاہیے۔

عدالت نے ملزمین کی ضمانت کی عرضی پر سماعت کے دوران یہ تبصرہ بھی کیا کہ پولیس نے جو تصاویر اور ویڈیو فوٹیج بطور ثبوت پیش کیے ہیں ان میں سے کہیں بھی ملزمین کے حاضر ہونے کا ثبوت نہیں ملتا ہے۔ اس کے علاوہ ان تصاویر اور فوٹیج میں مظاہرین کے پاس کوئی ہلاکت خیز ہتھیار ہونے کی بات بھی ثابت نہیں ہورہی ہے سوائے ایک شخص کے جس کے ہاتھ میں بوتل دکھائی دے رہی ہے۔ اس کے علاوہ کسی بھی تصویر میں پولیس عملہ یا پولیس اسٹیشن دکھائی نہیں دے رہا ہے جبکہ درخواست گزاروں (ملزمین) کی طرف سے پیش کردہ تصویروں میں خود پولیس کی طرف سے عوام پر پتھراؤ کرنے کی شہادت مل رہی ہے۔

عدالت نے ملزمین کودیگر شرائط کے ساتھ ایک لاکھ روپے فی کس اور اتنی ہی شخصی ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا۔ ضمانت منظور کرتے ہوئے عدالت نے واضح تبصرہ کیا کہ ”جو ریکارڈ یہاں موجود ہے اس سے صاف ہوجاتا ہے کہ جان بوجھ کر جھوٹے ثبوت پیش کرکے درخواست گزاروں کی شخصی آزادی چھیننے کی کوشش کی گئی ہے۔درخواست گزاروں کا کوئی سابقہ مجرمانہ ریکارڈ بھی نہیں ہے،اور پیش آمدہ جرم کے ساتھ ان لوگوں کابراہ راست کوئی تعلق بھی نظر نہیں آرہا ہے۔“عدالت نے یہ بھی کہا کہ چونکہ پولیس کے خلاف بھی شکایات درج کی گئی تھیں اس لئے پولیس کی طرف سے خودساختہ مقدمات اور غلط طور پر لوگوں کو جرائم میں ملوث دکھانے کے امکانات موجود ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

گوکرن کے مُدگا سمندر میں بوٹ اُلٹ گئی؛ دو گھنٹوں کے آپریشن کے بعد تمام چھ ماہی گیر وں کو بچالیا گیا

   انکولہ کے  بیلیکیرے سمندر میں  ماہی گیری کرکے واپس لوٹنے کے دوران  اونچی اُٹھتی  سمندری لہروں کی زد میں آکر  بوٹ کے اُلٹ جانے سے  بوٹ پر سوارتمام   چھ ماہی گیروں کے جان کے لالے پڑ گئے تھے، مگر  دو گھنٹوں کی سخت مشقت کے بعد  دوسری بوٹ پر سوار کرکے تمام چھ ماہی گیروں کو  ...

ڈانڈیلی:کورونا کی تیسری لہر کو روکنے کے لئے سرحدی علاقوں پر سخت چوکسی : افسران جائے وقوع پر پہنچ کر کر رہے ہیں  جانچ

کورونا کی تیسری لہر کے خطرے کو دیکھتےہوئے تعلقہ کے برچھی چک پوسٹ ،ہالمڈی سمیت ڈانڈیلی کے سرحدی علاقوں پر تعلقہ انتظامیہ اور شہری انتظامیہ کی طرف سے کڑے اقدامات کئے گئے ہیں۔

بھٹکل تنظیم وفد کا کمٹہ اور اطراف کے سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ؛ متاثرین میں را شن کٹس تقسیم

   قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم  بھٹکل کا ایک وفد محی الدین الطاف کھروری کی قیادت میں  بدھ کو  کمٹہ اور آس پاس کے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں نقصانات کا جائزہ لینے پہنچا، جس کے دوران گوکرن کے  اگراگونا اور چنداور کے سنتے گولی پہنچ کرگھروں کو ہوئے نقصانات کا جائزہ لیا ...

کاروار : شمالی کینرا کے کووڈ معاملوں میں آیا دوبارہ اچھال ۔ ضلع انتظامیہ نے کیا پھر سے نئی پابندیوں کا اعلان 

ضلع شمالی کینرا میں کووڈ پوزیٹیو معاملوں میں پھر سے اچھال آنے کے بعد ضلع انتظامیہ نے اس پر قابو پانے کے اقدامات شروع کیے ہیں اور نئی پابندیوں اور نئے ضابطوں  کا اعلان کیا ہے ۔

آئی ایس آئی ایس موڈیول چلانے کے الزام میں منگلورو اور بنگلورو سے این آئی اے نے کیا 2 افراد کو گرفتار  

کل 4 اگست کو کشمیر ، بنگلورو اور مینگلورو میں تین مقامات پر بیک وقت چھاپہ ماری کے بعد نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی کے افسران نے کشمیر سے دو بنگلورو سے ایک اور منگلورو سے ایک شخص کو شام کی دہشت گرد تنظیم آئی ایس آئی ایس موڈیول چلانے کے الزام میں  گرفتار کیا ۔

ڈاکٹر سدھاکر کو دوسری بار وزیر بنائے جانے پر چکبالاپور میں خوشی کی لہر

وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی کی کابینہ میں چکبالا پور اسمبلی حلقہ کی نمائندگی کرنے والے ڈاکٹر کے سدھاکر نے دوسری مرتبہ وزیر کے طور پر حلف لیا جس کی بدولت اسی ضلع سے دومرتبہ نمائندگی کرنے والے ایک وزیر کے طور پر ابھرے ہوئے ہیں۔

کووِڈ ویکسین کی قلت کا معاملہ: بی جے پی، کانگریس اور جنتا دل کے کارپوریٹروں کے درمیان لفظی جھڑپ

میسور وسٹی کارپوریشن کے کونسل ہال میں کارگزار مئیر انور بیگ کی صدارت میں میسور سٹی کارپوریشن کونسل کا اجلاس منعقد کیا گیاجس میں میسور ومیں کووِڈویکسین کی قلت کو لے کر کانگریس، بھارتیہ جنتا پارٹی اور جنتا دل (ایس) کے کارپوریٹروں کے درمیان لفظی جھڑپ ہوگئی۔

زمین فراہم کرنے والے کسانوں کے فائلس کی جلد نکاسی کرنے ہدایت

بنگلور ڈیولپمنٹ اتھارٹی(بی ڈی اے) کے چیرمین ایس آر وشواناتھ نے افسروں کو ہدایت دی کہ ناڈا پرابھو کیمپے گوڈا لے آؤٹ کی تعمیر کے لئے ز مین فراہم کرنے والے کسانوں کے فائلس ایک ماہ کے اندر مکمل کریں۔کیمپے گوڈا لے آؤٹ کے لئے جگہ فراہم کرنے والے کسانوں کے ساتھ طلب کر دہ اجلاس کے دوران ...

بومئی کابینہ کے 29 وزراء کی حلف برداری کوئی نائب وزیراعلیٰ نہیں -اگلے دو دنوں میں قلمدانوں کی تقسیم

حسب اعلان ریاستی وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے آج اپنی کابینہ میں 29 اراکین کو شامل کرکے 30 رکنی وزارت تشکیل دے دی- راج بھون کے گلاس ہاؤز میں منعقدہ حلف برداری تقریب میں ریاستی گورنر تاورچندگہلوٹ نے 29 وزراء کو عہدہ کی رازداری کا حلف دلایا-