کانگو میں مسلح گروہوں میں جھڑپیں، 43 افراد ہلاک

Source: S.O. News Service | Published on 19th July 2020, 10:50 PM | عالمی خبریں |

کنشاسا(کانگو)،19؍جولائی(ایس او نیوز؍ایجنسی) کانگو کے جنوبی کیوو صوبے میں مسلح دیہاتیوں کے گروہوں کے درمیان دو روز تک جاری رہنے والی جھڑپوں میں کم ازکم 43 افراد ہلاک ہو گئے ہیں، جن میں اکثریت عورتوں اور بچوں کی ہے۔

ایسوسی ائیڈ پریس کی ایک رپورٹ میں مقامی افراد کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ ایک مسلح گروہ نے، جسے نومینو کہا جاتا ہے، جمعرات کے روز ایک گاؤں کیپوپو پر حملہ کیا جس کے بعد سے کم ازکم 40 افراد لاپتا ہیں۔

جنوبی کیو و سول سوسائٹی گروپ سے تعلق رکھنے والے اینڈری بیاڈونا نے بتایا کہ یہ حملہ مائی مائی نامی ایک باغی گروپ کے خلاف کیا گیا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ ان مسلح گروہوں کے درمیان تصادم جمعرات کو شروع ہوا، جو پھیلتا چلا گیا۔ مسلح افراد نے آس پاس کی کئی بستیوں کو نذر آتش کر دیا۔

مقامی فوج کے ترجمان کیپٹن ڈیوڈو نے کئی بستیوں میں حملوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ان کا آغاز جمعرات کو ہوا تھا جو جمعے کے روز تک جاری رہا۔

انہوں نے بتایا کہ علاقے کے لوگوں کے تحٖفظ کے لیے فوج تمام ضروری اقدامات کر رہی ہے۔

کانگو کے مشرقی صوبوں میں کئی مسلح گروہ موجود ہیں جو معدنیات سے مالا مال اس خطے میں قبضے کے لیے ایک دوسرے سے لڑتے رہتے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بحرین کی اسرائیل سے ڈیل،علاقائی سلامتی کو تقویت ملے گی: شیخ سلمان کی نیتن یاہو سے گفتگو

بحرین کے ولی عہد شیخ سلمان بن حمد آل خلیفہ نے اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو سے ٹیلی فون پر بات چیت کی ہے۔انھوں نے عالمی سلامتی اور امن کو مضبوط بنانے اور امن ، استحکام اور خوش حالی کے فروغ کے لیے مسلسل کوششیں جاری رکھنے کی ضرورت پر زوردیا ہے۔

ایردوآن نے یو این میں اٹھایا مسئلہ کشمیر، ’اندرونی معاملات میں دخل نہ دے ترکی‘ انڈیا کی تاکید

 جموں و کشمیر کے حوالہ سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں ترکی کے صدر رجب طیب اردوآن کے بیان پر اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندہ ٹی ایس ترومورتی نے سخت احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترکی کو دوسرے ممالک کی خودمختاری کا احترام کرنا سیکھنا چاہئے۔