آسام میں بی جےپی اقتدار میں واپسی کی متمنی مگر سی اے اےرکاوٹ بن سکتا ہے

Source: S.O. News Service | Published on 28th February 2021, 12:23 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 28؍فروری (ایس او نیوز؍ایجنسی)  الیکشن کمیشن آف انڈیا نے جمعہ کو اسمبلی الیکشن کی تاریخوں کا اعلان کردیا۔ مغربی بنگال میں8؍ تو آسام میں 3؍ مراحل میں الیکشن ہونے ہیں۔یہی دو ریاستیں  ہیں جہاں بی جےپی کی زیادہ توجہ مرکوز ہے۔294؍ رکنی بنگال اسمبلی پر وہ قبضہ کرنے کا خواب دیکھ رہی ہے تو آسام کی 126؍ رکنی  میں  اس کے سامنے  اقتدار بچائے رکھنے کا چیلنج  ہے۔   دو نئی علاقائی پارٹیوں کے اتحاد کی شکل میں تیسرے محاذ کے معرض وجود میں آجانے کے بعد آسام میں مقابلہ سہ رخی ہونے کا امکان ہے۔

ایک طرف جہاں بی جےپی اپنی اتحادی پارٹیوں  کے ساتھ ریاست میں اپنا اقتدار بچانے کیلئے میدان میں اترے گی تو وہیں دوسری جانب کانگریس اپنی اتحادی پارٹیوں  کے ساتھ جن میں بدرالدین اجمل کی آل انڈیا  یونائیٹڈ ڈیموکریٹک فرنٹ (یوڈی ایف)  بھی شامل ہے، بی جےپی سے اقتدار چھیننے کی کوشش کریگی۔   یو ڈی ایف کے ساتھ کانگریس کے اتحاد نے  اقلیتی ووٹوں  کے انتشار  کے امکان کو کم کردیا ہے جس کے بعد اس اتحاد کے امکانات پہلے سے زیادہ روشن ہوگئے ہیں۔  راہل گاندھی  آسام میں اپنی انتخابی مہم کے آغاز  کے وقت ہی شہریت ترمیمی ایکٹ کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرکے اوراسے نافذ نہ ہونے دینے کا اعلان کرکے یہ واضح کرچکے ہیں کہ سی اے اے کانگریس اوراس کے اتحاد کا اہم انتخابی موضوع ہوگا۔ دوسری جانب بی جےپی کیلئے اس محاذ پر اپنا دفاع مشکل  ہے۔

الیکشن کی تاریخوں کا اعلان  ہوتے ہی آسام کے سینئر وزیر اور شمالی ہند میں بی جےپی کے کلیدی لیڈر ہیمنت بسوا شرما نے ٹویٹ کیا ہے کہ ’’آسام اسمبلی الیکشن کا اعلان ہوگیا ہے اور دوبارہ حکومت سازی کیلئے ہمیں آپ کے آشیرواد کی ضرورت ہے۔ گزشتہ 5؍ برسوں  میں  آپ نے ہم پر جس اعتماد کا مظاہرہ کیا اس کیلئے ہم آپ کے شکر گزار ہیں۔اس دوران آسام نے حیرت انگیز ترقیاں کیں۔ ہم وعدہ کرتے ہیں کہ وزیراعظم نریندر مودی کی قیادت میں یہ سلسلہ جاری رکھیں  گے۔‘‘ بہرحال بی جےپی کو اس بات کا احساس پوری شدت سے ہے کہ شہریت ترمیمی ایکٹ (سی اے اے )  ریاست میں اس کا کھیل بگاڑ سکتاہے۔ اس قانون  کے منظور ہوتے ہی آسام میں بڑے پیمانے پر احتجاج اور مظاہرے ہوئے۔  یہاں کے عوام اسے آسامی ثقافت کیلئے خطرہ محسوس کرتے ہیں۔  

ایک نظر اس پر بھی

ہانک کانگ نےہندوستان،پاکستان اور فلپائن کی پروازوں پر لگائی دو ہفتوں کی پابندی

کورونا وبا کےپھیلاؤ کےپیش نظر ہانگ کانگ نے فیصلہ کیا ہےکہ وہ اگلےدوہفتوں کےلئےہندوستان، پاکستان اور فلپائن سےآنےوالی پروازوں پر پابندی لگارہا ہے۔ہانگ کانگ نےان تین ممالک سےآنےوالی تمام پرواز یں معطل کر دی ہیں۔ہانک کانگ کےذمہ داران اس کی وجہ کووڈ19 کے ایشیائی ممالک میں ...

مدھیہ پردیش میں کووڈ کا قہر، 30 اپریل تک کورونا کرفیو کا نفاذ

مدھیہ پردیش میں حکومت کی تمام کوششوں کے باوجود کورونا کا قہرجاری ہے۔ ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد جہاں اڑسٹھ ہزار کو تجاوز کر گئی ہیں وہیں پچھلے چوبیس گھنٹےمیں ریاست میں کورونا کے بارہ ہزار دو سو اڑتالیس نئے معاملے درج کئے گئے ہیں ۔

کووڈ بحران سے نمٹنےکےلیے سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے وزیراعظم مودی کو دیئے یہ 5اہم مشورے

ہندوستان میں عالمی وبا کورونا وائرس کے مثبت معاملوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کے بارے میں ہر حلقے سے تشویش کا اظہار کیاجارہا ہے۔ اسی ضمن میں ملک کے سابق وزیراعظم، کانگریس کے سینئر ترین رہنما اور معروف ماہر معاشیات ڈاکٹر منموہن سنگھ  نے وزیراعظم نریندر مودی کو کووڈ۔19 کے بحران سے ...

بہار میں15 مئی تک اسکول ، کالج اور تمام مذہبی مقامات بند ،رات کا کرفیو نافذ

ہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے ریاست میں کورونا کے تیزی سے بڑھ رہے معاملوں پر لاک ڈاﺅن کا اشارہ دیتے ہوئے باہر سے آنے والے لوگوں سے جلد سے جلد لوٹنے کی اپیل کرتے ہوئے آج کہاکہ وبا کی روک تھام کیلئے فی الحال ریاست میں ” رات کا کرفیو“ سرکاری دفاتر میں کام کی مدت کم کرنے ، سبھی ...