ارے بائیل گھاٹ پر کانکریٹ روڈ بنانے 52کروڑر وپئے کا منصوبہ مرکزی حکومت کو ارسال : شیورام ہیبار

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 26th November 2020, 9:09 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:26؍نومبر(ایس اؤ نیوز)ضلع نگراں کار وزیر شیورام ہیبار نے  ارے بائیل سے لے کر اڈگوندی تک کی 16کلومیٹر قومی شاہراہ 63کو مکمل طورپر کانکریٹ سڑک میں منتقل کرنے کے لئے خصوصی توجہ دیتے ہوئے  52کروڑر وپئے کا منصوبہ تشکیل دے کر منظوری کے لئے مرکزی حکومت کو بھیج دیا ہے۔

ارے بائیل شاہراہ ٹرافک کے لئے بالکل مناسب نہیں رہی، پوری سڑک خستہ ہوگئی ہے، اس سے قبل متعلقہ سڑک کی درستی کےلئے 20کروڑ روپئے کی منظوری لینے میں کامیاب ہوئے تھے۔ مرکزی حکومت کے محکمہ قومی شاہراہ نے سال 2020-21 کے سالانہ منصوبے میں ریاست کے مختلف منصوبہ جات کے لئے کل 2619کروڑ روپئے منظور کئے ہیں۔ جس میں ارے بائیل سڑک کی درستی کے لئے 20کروڑ روپئے بھی میں شامل ہیں۔ 20کروڑ روپیوں کی مدد سے سڑک کی مرمت تو ہوگی لیکن اگلے ایک سال میں سڑک کی پھر وہی درگت ہونے کا خیال ظاہرکرتےہوئے شیورام ہیبار نے ارے بائیل سے اڈگونڈی تک سروے کرایا اور 16کلومیٹر لمبی سڑک کو مکمل طورپر کانکریٹ  میں منتقل کرنے کافیصلہ لیا۔ پی کیو سی (پیومنٹ کوالٹی کانکریٹ) کا استعمال کرتےہوئے سڑک کی تعمیر کی جائے گی تو طویل عرصے تک سڑک خراب یا خستہ نہیں ہوگی، کیونکہ سڑک کی تعمیر میں اسٹیل کی سلاخیں استعمال کئے جانے سے بھاری وزنی سواریوں کے گزرنے سے سڑک پر کوئی اثر نہیں ہوگا اور قریب ایک فٹ اونچا کانکریٹ ڈالے جانے سے سڑک کافی مضبوط و مستحکم رہنے کی  بات وزیر شیورام ہیبار نےکہی۔

سڑک تعمیر کے لئے 20کروڑ روپئے منظور ہوئے تو شیورام ہیبار نے کہاکہ صرف20کروڑروپیوں میں سڑک کے گڑھے وغیرہ بھرنے کے لئے ہی خرچ ہوجائیں گے اور اگلے ایک سال میں ہی سڑک دوبارہ خراب ہوجائے گی ۔ اس سلسلےمیں انہوں نے افسران کو کہاکہ وزیر اعلیٰ بی ایس یڈیورپا اور مرکزی وزیر نتین گڈکری سے منظوری لینےکی ذمہ داری میری ہے آپ پی کیوسی کانکریٹ والی سڑک تعمیر کا منصوبہ بنانے کہا ۔ اب وہ مرکزی حکومت کو بھیجا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار: سائنس اور انجنئیرنگ میں پی ایچ ڈی کےلئے کرناٹک حکومت کی طرف سے اسکالرشپ

حکومت کرناٹکا کے محکمہ سائنس اور ٹکنالوجی کے ڈی ایس ٹی سائنس اور انجنئیرنگ میں پی ایچ ڈی (تحقیق) کے لئے ڈی ایس ٹی ۔پی ایچ ڈی  اسکالرشپ نامی پروگرام خود مختار ادارے کرناٹکا سائنس اور ٹکنالوجی ترغیب سوسائٹی کے ذریعے نافذ کیا جارہاہے۔

منگلورو میں پولیس فائرنگ کےردعمل میں نوجوانوں نے کیا تھا ہیڈ کانسٹیبل پر حملہ ۔ پولیس کمشنر کا بیان

سٹی پولیس کمشنر این ششی کمار نے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ گزشتہ سال دسمبر میں چترا ٹاکیز کےقریب پولیس ہیڈ کانسٹیبل پر جو حملہ کیا گیا تھا وہ دراصل شہریت ترمیمی قانون کے خلاف احتجاج کے دوران منگلورو میں پھوٹ پڑنے والے فساد کے بعد پولیس کی فائرنگ سے جو دو ہلاکتیں ہوئی ...

منگلورو: گئو رکھشکوں پر دائر مقدمات واپس لیے جائیں گے۔ وزیر مویشی پالن کی یقین دہانی

وزیر برائے مویشی پالن پربھو چوہان نے ضلع انتظامیہ کےساتھ جائزاتی میٹنگ کےبعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گئو رکھشکوں کے خلاف جو مقدمات درج کیے گئے ہیں، ریاستی حکومت کی طرف سے وہ مقدمات واپس لیے جائیں گے۔

کاروار: صحافی شیشگیری نے کیا سمندر میں 12کلو میٹر تک ڈونگی پر تنہا سفر؛ موبائل پر وقت گذاری کے بجائے کھیل کود اورایڈوینچر اسپورٹس کی طرف توجہ دینے نوجوانوں سے کی اپیل

 کاروار سے دگ وجئے نیوز کی رپورٹنگ کرنے والے بھٹکل سے تعلق رکھنے والے صحافی شیشگیری منڈلی نے کیاک پر بحیرہ عرب میں تقریباً 12کلومیٹر تک تنہا سفر کرتے ہوئے ایڈوینچر اسپورٹس میں اپنی دلچسپی کا کامیاب مظاہرہ کیا۔