آننت کمار ہیگڈے۔ جو صرف ہندووادی ہونے کی اداکاری کرتا ہے ’کراولی منجاؤ‘کے چیف ایڈیٹر گنگا دھر ہیرے گُتّی کے قلم سے

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 4th February 2019, 12:07 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں | ملکی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل 3/فروری (ایس او نیوز) اُترکنڑا کے رکن پارلیمان آننت کمار ہیگڈے جن کے بارے میں مشہور ہے کہ وہ  عین انتخابات کے موقعوں پر متنازعہ بیانات دے کر اخبارات کی سُرخیاں بٹورتے ہوئے انتخابات جیتنے میں کامیاب ہوتا ہے، اُس کے تعلق سے کاروار سے شائع ہونے والے معروف کنڑا روزنامہ کراولی منجاو کے ایڈیٹر نے سنڈے  ایڈیشن میں اپنے خیالات کا اظہار  کیا ہے، جس کا اُردو ترجمہ یہاں پیش کیا جارہا ہے۔

  ’’ہند و لڑکیو ں کے جسم کو چھونے والے ہاتھ کاٹ دئے جائیں۔‘‘ یہ ہمارے رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے کا بیان ہے جو ان کے دسیوں متنازع بیانات میں سے ایک ہے، جس کے ذریعے انہوں نے ایک اور پانسہ پھینکا ہے۔اننت کمار ہیگڈے کو اگرکوئی کٹرپنتھی یا کٹر وادی مہابرہمن اور منووادی سمجھتا ہے تو پھر یہ غلط ہے۔ اگر اس لحاظ سے کسی کے پاس کوئی اہلیت ہے اور کسی کو  ایسی کوئی ڈگری دی جاسکتی ہے تو وہ ہمارے ضلع میں سرسی کے رکن اسمبلی اور سابق وزیر وشویشورا ہیگڈے کاگیری ہیں جو اس کے قابل ہیں۔

جہاں تک اننت کمار ہیگڈے کا معاملہ ہے وہ سیاسی مفاد کے لئے متنازع بیانات کو چارے کے طور پراستعمال کرتے ہیں۔ وہ سمجھتے ہیں کہ ایسے میں اگر مخالف پارٹیوں کی جانب سے ان کی مخالفت ہوتی ہے تو پھر یہ ان کے لئے عوامی مقبولیت کا سبب ہوتی ہے۔فی الحال وہ رکن پارلیمان کی حیثیت سے اپنی ناکامیوں کی وجہ سے پیش آنے والی صورتحال سے گزر رہے ہیں۔اس کی وجہ سے اگر انہیں کوئی انتہا پسند، ہندو وادی اور اقلیتوں کو قصوروار ٹھہرانے والا فرقہ پرست مانتا ہے تو وہ ان کی اپنی عقل اور سوچ کی حد ہے۔ وہ بے شک منو وادی نہیں ہے۔ ذات پات کے نظام والے ہندو دھرم میں برہمنوں کے ایک محافظ کے طور پر ان کو دیکھنابس ایک چھلاوہ ہے۔ وہ ہر گھڑی گرگٹ کی طرح ایک رنگ بدلنے والی شخصیت ہے۔ وہ نئے زمانے کے چانکیہ کی طرح عقل اور زبان کی طاقت سے کمزور شودروں کو اپنی عسکری طاقت بناکر ان کے دلوں میں اقلیتوں کے خلاف زہر گھولنا اور انہیں دیش مخالف قرار دے کر اپنے فوجیوں کو قربان کرنے والے انسان ہیں۔ سماجی ترقی کے مقابلے میں صرف فرقہ پرستی کو ہوا دینے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

گزشتہ پانچ میعادوں میں کسی ایک تعمیری کام کی بنیاد رکھنے کی کوئی خبریا کسی منصوبے کے افتتاح کاپروگرام ان کے نام نہیں ہے۔ تو پھرسوال اٹھ سکتا ہے کہ کروڑوں روپے کے ایم پی فنڈ کاانجام کیا ہوا۔اس لئے انہوں نے اسے فرقہ واریت کا موضوع چھیڑ کر دبا رکھا ہے۔ لیکن وہ بے شک فرقہ پرست نہیں ہیں ۔ وہ محض ایک افیون ہے جو عوامی نمائندہ بننے کے لئے عوام کو کھلارہے ہیں۔ وہ کبھی بھی ہندو دھرم یا ہندوؤں کے مفاد کے لئے رہے ہی نہیں۔ یہ صر ف ان کے لئے ایک لبادہ ہے۔یہ بیانات سب ناٹک ہیں۔ وہ دیش، ذات اور دھرم کے چاہنے والے بھی نہیں ہیں۔ صرف خودپسند اور خود پرست آدمی ہیں۔ ایک بات یاد رکھئے کہ اپنی ذمہ داریاں نبھانے میں ناکام ہونے والے عوام کے سامنے اس کا اعتراف کرنے میں شرمندگی محسوس کرتا ہے۔مگر اس ناکامی کو بھی جو اپنی عیاری اور چالاکی سے سماجی اقدار کی شکل میں پیش کرتے ہوئے سڑک چھاپ ناٹک کے طرز پر ڈائیلاگ بازی کرتا ہے اور اداکاری کیا کرتا ہے، وہ اننت ہے!
 

ایک نظر اس پر بھی

اُترکنڑا سے چھٹی مرتبہ جیت درج کرنے والے اننت کمار ہیگڑے کی جیت کا فرق ریاست میں سب سے زیادہ؛ اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ بھٹکل میں حاصل ہوئے

پارلیمانی انتخابات میں شمالی کینرا کے بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے نے پوری ریاست کرناٹک میں سب سے زیادہ ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔ انہوں نے 479649 ووٹوں کی اکثریت سے کانگریس  جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدور  آنند اسنوٹیکر  کو شکست دی ۔

ریاست میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے سیاسی لیڈروں کی ذلت بھری شکست

ریاست کرناٹکا میں انتخابی میدان میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے چند نامورسیاسی لیڈران جیسے ملیکا ارجن کھرگے، دیوے گوڈا، ویرپا موئیلی اورکے ایچ منی اَپا وغیرہ کو اس مرتبہ پارلیمانی انتخاب میں انتہائی ذلت آمیز شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے۔ 

منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

بھٹکل میں رمضان باکڑہ کی نیلامی؛ 40 باکڑوں کے لئے میونسپالٹی کو 1126 درخواستیں

رمضان کے آخری عشرہ کے لئے بھٹکل  میں لگنے والے رمضان باکڑہ کی آج میونسپالٹی کی جانب سے  نیلامی کی گئی۔ بتایا گیاہے کہ 40 باکڑوں کی نیلامی کے لئے  میونسپالٹی کے جملہ 1126 درخواست فارمس فروخت ہوئے تھے۔ 

بی جے پی کے سینئر لیڈر آر اشوک نے سدارامیا اور کمار سوامی سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا

وکھے درخت کے پتوں کی مانند جھڑرہے کانگریس اراکین اسمبلی کی آنکھوں میں اندھیراچھا گیا ہے۔ انہیں آگے کوئی راستہ نظر نہیں آرہا ہے۔ ریاست کے عوام نے مخلوط حکومت کی چڈی پھاڑدی ہے۔ اس قسم کی طنزیہ باتیں بی جے پی کے سینئر قائدآر اشوک نے کہیں۔

کرناٹک پبلک اسکولوں میں سرکاری اسکولوں کو ضم نہیں کیا جائے گا

سرکاری اسکولوں کو ضم کئے بغیر ہی کرناٹک پبلک اسکول چلانے کی تجویز محکمہ تعلیمات کے زیر غور ہے ۔ سرکاری نظام کے تحت ایک ہی پلاٹ فارم پر پہلی سے بارھویں جماعت تک کی تعلیم کی سہولت فراہم کرنے کے مقصد سے کرناٹک پبلک اسکولوں کا انعقاد 2018-19 سے ہی شروع ہوگیا تھا ۔

کمارسوامی نے وزیراعلیٰ کا عہدہ دیش پانڈے کو سونپنے کی رکھی تھی شرط ، کانگریس لیڈران رہ گئے دنگ؛ کماراسوامی کی قیادت پر ہی ظاہر کیا گیا اعتماد

لوک سبھا انتخابات میں کانگریس جے ڈی ایس اتحاد کی رسواکن شکست کے بعد کل وزیراعلیٰ کمار سوامی کی قیادت میں طلب کی گئی غیر رسمی کابینہ میٹنگ کے دوران وزیراعلیٰ کمار سوامی کی طرف سے استعفے کی پیش کش کے متعلق چند نئے انکشافات سامنے آئے ہیں۔

لوک سبھا انتخابات کے نتائج کے بعد دیناکرن کا الیکشن کمیشن سے سوال؛ ڈالے گئے ووٹ پارٹی کو کیوں نہیں ملے ؟

 لوک سبھا انتخابات کے نتائج آنے کے بعد اپوزیشن پارٹیاں  ا ی وی ایم پر سوال اٹھانے لگے ہیں۔پہلے بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے سوال کھڑے کرتے ہوئے کہا تھا کہ سپریم کورٹ کو اپوزیشن جماعتوں کے مطالبے پر غور کرنا چاہئے۔

سنئیر لیڈران کا بیٹوں کو آگے بڑھانے پر راہول کو اعتراض؛ راجستھان، مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ میں پارٹی کے صفایاپر راہل ناراض؛ استعفیٰ دینے پر بضد

کانگریس کے بعض سنئیر لیڈران اور بعض وزراء اعلیٰ کا اپنے بیٹوں کو ہی آگے بڑھانے میں لگے ہونے پر اعتراض جتاتے ہوئے راہول گاندھی اپنے عہدے سے استعفیٰ دینے پر بضد ہیں۔ ذرائع کی مانیں تو  لوک سبھا انتخابات میں خراب کارکردگی کے بعد کانگریس صدر راہل گاندھی  اپنے عہدے سے استعفیٰ ...

وائی ایس آر کانگریس کے سربراہ کی وزیراعظم مودی سے ملاقات، آندھرا کو خصوصی درجہ دینے پر زور

 وائی ایس آر کانگریس کے سربراہ جگن موہن ریڈی نے وزیر اعظم نریندر مودی سے اتوار کو دہلی میں ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔اس کے بعد انہوں نے بغیر کسی طے پروگرام کے بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ سے ملاقات کی۔

گذشتہ دس سالوں سے جیل میں مقید مسلم نوجوان کو قانونی کی تعلیم جاری رکھنے کی اجازت، جمعیۃ علماء نے قانونی امداد کے ساتھ ساتھ تعلیمی وظیفہ بھی دیا، پہلے مرحلہ کا نتیجہ اطمنان بخش: گلزار اعظمی

ممبئی کی خصوصی مکوکا(این آئی اے) عدالت نے جھوٹے دہشت گردانہ معاملے کا سامنا کررہے ایک مسلم نوجوان کو قانون کی تعلیم جاری رکھنے اور اسے امتحان میں شرکت کرنے کی مشروط اجازت دی۔13-7 ممبئی سلسلہ وار بم دھماکہ معاملے کا سامنا کررہے ملزم ندیم اختر کو ایل ایل بی پہلے سال کے دوسرے مرحلہ ...

مرکز نے سپریم کورٹ سے کہا، رافیل معاہدہ میں پی ایم اوکادخل نہیں، تمام عرضیاں ہوں مسترد

لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن نے رافیل لڑاکا طیارے معاہدے میں بے ضابطگیوں کا الزام لگاتے ہوئے اسے سب سے بڑا مسئلہ بنایا۔کانگریس صدر راہل گاندھی نے اس معاہدے کے لئے براہ راست طور پر وزیر اعظم نریندر مودی کو ذمہ دار بتایا۔

مودی جی کا پرگیہ سنگھ ٹھاکور سے لاتعلقی ظاہر کرنا ایسا ہی ہے جیسے پاکستان کا دہشت گردی سے ۔۔۔۔ دکن ہیرالڈ میں شائع    ایک فکر انگیز مضمون

 وزیر اعظم نریندرا مودی کا کہنا ہے کہ وہ مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو دیش بھکت قرار دیتے ہوئے ”باپو کی بے عزتی“ کرنے کے معاملے پر پرگیہ ٹھاکورکو”کبھی بھی معاف نہیں کرسکیں گے۔“امیت شاہ کہتے ہیں کہ پرگیہ ٹھاکور نے جو کچھ کہا ہے(اور یونین اسکلس منسٹر اننت کمار ہیگڈے ...

بلقیس بانو کیس۔ انصاف کی جدوجہد کا ایک سنگ میل ......... آز: ایڈووکیٹ ابوبکرسباق سبحانی

سترہ سال کی ایک لمبی اور طویل عدالتی جدوجہد کے بعد بلقیس بانو کو ہمارے ملک کی عدالت عالیہ سے انصاف حاصل کرنے میں فتح حاصل ہوئی جس فتح کا اعلان کرتے ہوئے عدالت عالیہ (سپریم کورٹ آف انڈیا) نے گجرات سرکار کو حکم دیا کہ وہ بلقیس بانو کو پچاس لاکھ روپے معاوضہ کے ساتھ ساتھ سرکاری نوکری ...

بھٹکل کے نشیبی علاقوں میں کنووں کے ساتھ شرابی ندی بھی سوکھ گئی؛ کیا ذمہ داران شرابی ندی کو گٹر میں تبدیل ہونے سے روک پائیں گے ؟

ایک طرف شدت کی گرمی سے بھٹکل کے عوام پریشان ہیں تو وہیں پانی کی قلت سے  عوام دوہری پریشانی میں مبتلا ہیں، بلندی والے بعض علاقوں میں گرمی کے موسم میں کنووں میں پانی  کی قلت  یا کنووں کا سوکھ جانا   عام بات تھی، مگر اس بار غالباً پہلی بار نشیبی علاقوں میں  بھی پانی کی شدید قلت ...

مفرور ملزم ایم ڈی مُرلی 2008کے بعد ہونے والے بم دھماکوں اور قتل کااصل سرغنہ۔ مہاراشٹرا اے ٹی ایس کا خلاصہ

مہاراشٹرا اینٹی ٹیرورازم اسکواڈ (اے ٹی ایس) کا کہنا ہے کہ سن  2008 کے بعد ہونے والے بہت سارے بم دھماکوں اور پنسارے، دابولکر، کلبرگی اور گوری لنکیش جیسے ادیبوں اور دانشوروں کے قتل کا سرغنہ اورنگ آباد کا رہنے والا مفرور ملزم ایم ڈی مُرلی ہے۔

اب انگلش میڈیم کے سرکاری اسکول ؛ انگریزی میڈیم پڑھانے والے والدین کے لئے خوشخبری۔ ضلع شمالی کینرا میں ہوگا 26سرکاری انگلش میڈیم اسکولوں کا آغاز

سرکاری اسکولوں میں طلبہ کے داخلے میں کمی اور والدین کی طرف سے انگلش میڈیم اسکولوں میں اپنے بچوں کے داخلے کے رجحان کو دیکھتے ہوئے اب سرکاری اسکولوں میں بھی انگلش میڈیم کی سہولت فراہم کرنے کا منصوبہ بنایاگیا ہے۔

لوک سبھا انتخابات؛ اُترکنڑا میں کیا آنند، آننت کو پچھاڑ پائیں گے ؟ نامدھاری، اقلیت، مراٹھا اور پچھڑی ذات کے ووٹ نہایت فیصلہ کن

اُترکنڑا میں لوک سبھا انتخابات  کے دن جیسے جیسے قریب آتے جارہے ہیں   نامدھاری، مراٹھا، پچھڑی ذات  اور اقلیت ایک دوسرے کے قریب تر آنے کے آثار نظر آرہے ہیں،  اگر ایسا ہوا تو  اس بار کے انتخابات  نہایت فیصلہ کن ثابت ہوسکتےہیں بشرطیکہ اقلیتی ووٹرس  پورے جوش و خروش کے ساتھ  ...