نئی نسل کے لیے ایک بہترین دینی تحفہ مولانا الیاس ندوی کی مجالس نبوی ﷺ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 30th January 2017, 10:34 AM | اسپیشل رپورٹس | اسلام | ساحلی خبریں |

حضورﷺ کی سیرتِ مقدسہ ایک بے مثال،ابدی عملی نمونہ ہے ، جو زندگی کےاعلیٰ وارفع مقصد کے حصول میں بہتر سے بہتررہنمائی کرتاہے تو  چھوٹے  چھوٹے ، معمولی مسائل کو بھی اپنے اندر سمیٹا ہواہے اور اس کی اہم اور خاص خصوصیت یہ ہےکہ یہ عملی نمونہ دنیا کے ساتھ اخروی زندگی کی کامیابی کی ضمانت بھی ہے۔اس کی گواہی خود  قرآن کریم  نے دی ہے تو  وہیں صحابہ کرام رضی اللہ  جیسی عظیم شخصیات کی سیرتیں روشن دلیل ہیں۔موجودہ دنیا جن کو مفکرین ، مصلحین ، دانشور ، فلسفی کہتی ہے،ان کے تعلق سے صرف یہی کہا جاسکتاہے کہ وہ صرف قال کی حد تک ہی محدود ہیں اور دنیا نے ان مہان ہستیوں کی طرف سے پیش کئے گئے نظریات، فلسفہ یا پیغام کی عملی شکل  دیکھنے سے قاصر ہے، خود انہیں بھی اس کے عملی نفاذ پر اعتماد نہیں تھا اس کے برعکس خاتم النبین حضرت محمد ﷺ  کی سیرت بہت ہی آسان اور سہل انداز میں عمل پیش کرتی ہےتاکہ دنیا کو اس پر عمل کرنے میں کوئی دقت نہ ہو۔ یہ کوئی فلسفہ یا فکر نہیں بلکہ رشد وہدایت اور دنیاو آخرت کی کنجی ہے حیوان کو انسان بنانے کی عملی صورت ہے آج دنیا نے جسے شخصی تعمیر(پرسنالٹی ڈیولیپمنٹ )کا پرفریب نا م دیا  ہے در حقیقت حضرت محمد ﷺ کی سیرت ہی وہ  گائیڈنس ہے جو ہمیں  دنیا میں سب سے بہتر پرسنالٹی کی تعمیر میں  ممد و معاون ہے ، اس کے علاوہ جو کچھ ہے  وہ خس وخاشاک۔

حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی سیرت پر اب تک بے شمار مصنفین نےبساط بھر بہتر سے بہتر تصانیف پیش کرتےہوئے اللہ کی رضا حاصل کرنے کی سعی کی ہے ،اور دنیا کاہرخطہ اس سے فیضاب ہورہاہے تاقیامت یہ کام ہوتارہے گا۔ فی الوقت ہمارے سامنے وقت کے جید عالم دین، مایہ ناز ادیب، اسلامی دانشور ، مورخ ،ہر وقت دین اسلام کے کاموں میں سرگرداں  حضرت مولانا محمد الیاس ندوی بھٹکلی (استاذ جامعہ اسلامیہ بھٹکل) کی خوب صورت ، دیدہ زیب ، وزن میں بہت ہلکی مگر زندگی کے لئے بڑی قیمتی  نبی صلی اللہ کی روحانی مجالس، عطر بیز ملفوظات کا دلکش مجموعہ ’’مجالس نبویﷺ‘‘نامی تصنیف  ہے۔ 270صفحات پر مشتمل مجالس نبوی ﷺمیں  سیرت کے مختلف واقعات کو بہت ہی سلیس و سہل مگر جامع و پُر اثر،دلنشین اسلوب اور حسین پیرائے میں یکجا کرتے ہوئے معیاری کاغذ کے ساتھ شائع کیا گیا ہے، ہمارے نزدیک یہ مقدس تصنیف  انشا پردازی کی اعلیٰ مثال ہے۔ مجالس و واقعات کا انتخاب و ترتیب بھی اپنے اندر  فطری جاذبیت  رکھتاہے،نبی ﷺ کی مجلسوں کی فہرست بھی بڑی عرق ریزی کے ساتھ ترتیب دی گئی ہے، عنوانات بھی دل کو چھولیتے ہیں کلی طورپر  بہت دلسوزی کے ساتھ کتاب کو  قلم بند کیا گیا  ہے۔یہ تصنیف مطالعہ کرنے والے ہر قاری ، ہر مجلس کو یقینا ً مطہر و معطر کرتی ہے، دراصل سیرت ﷺ تاقیامت ہر انسان کے لئے ایک دلکشی و جاذبیت رکھتی ہے ہی مگر جب دینی حمیت، غیرت اسلام ، سچے عشق اور خلوص کے ساتھ سیرت ﷺ کے موضوع پر قلم اٹھا تا ہے تو صدفی صد اس میں قلبی تاثیر اور بے پناہ عملی جذبہ پیدا ہوگا۔ مسلمان تو مسلمان ، ملحد و مشرک بھی اس کا مطالعہ کریں گے تو دین اسلام اور سیرت رسول ﷺ پر غور وفکر کے لئے مجبور پائیں گے۔’’  مجالس نبوی ﷺ ‘‘اس کی عمدہ مثال ہے۔

 زندگی کی دوڑ دھوپ اور ہزار سرگرمیوں کے درمیان  جدید زمانے کے ہر موضوع کو اسلامی نقطہ نظر سے پیش کرنے میں ان تھک کاوشوں میں جٹی شخصیت مولانا محمد الیاس ندوی کےجولانیٔ قلم سے نکلی’’ مجالس نبوی ﷺ ‘‘ہرکسی کے لئے مفید ہے لیکن نوجوان نسل پر میں خاص احسان مانتاہوں۔ مغربیت کی زد میں پھنستی ہماری نئی نسل کی دینی فکر کو مہمیز کرنے میں بہت ہی کارآمد  ، مفید و مؤثر ہے۔ گرچہ سمندر کے پورے پانی کو نکال باہر کرنا ممکن نہیں ہے ہاں مگر اس میں غوطہ خور موتی ضرور نکال لاتے ہیں ایسے ہی چند موتیوں کو سیرتﷺ کے سمندر سے نکال کر انسان کی دنیا و آخرت کی فلاح کے لئے مولانا الیاس ندوی نے مجالس نبوی ﷺ کے طورپر ہمارے سامنے پیش کیا ہے۔ جو ہم سب کے لئے بڑی سعادت ہے۔

مجالس نبوی ﷺ میں  ایک انسانی زندگی کے لئے جو ضروری رہنمائی  چاہئے، وہ سب موجود ہے، نمبرشمار 34اورصفحہ نمبر 61پر ’’ اللہ سے دعا فرمائیے:-بارش رک جائے ‘‘میں اللہ کے نبی ﷺ سے بدو کے سوالات ، جواب میں دعائیں اور دعا مانگنے کا طریقہ ،آہ کیا کچھ نہیں ہے اس ایک چھوٹے سے واقعہ میں ، سبحان اللہ۔ نمبر شمار 38اور صفحہ نمبر 63پر 5جملوں پر مشتمل ’’ کیا آپ اپنے بچوں کا پیار سے بوسہ لیتے ہیں؟‘‘واقعہ میں رحمت کا مفہوم کس خوبصورتی سمجھایا گیا ہے دل موم ہوجاتاہے۔اللہ تعالیٰ  اعلیٰ کو ادنیٰ کس طرح بناتاہے صفحہ نمبر 66 پر درج 5لائن میں دیکھ لیجئے۔ ماں کی ممتا کیا ہوتی ہے ماں کو اپنے بچے سے کتنی محبت ہوتی ہے اور ہونی چاہئے اس کا ایک نظارہ صفحہ نمبر 73پر’’ بچہ کو کاٹ کر تم دونوں میں تقسیم کردیتاہوں ‘‘والی مجلس سے سیکھ سکتےہیں۔شک وشبہ نےکس کو چھوڑا ہے ہر کسی کو برباد کردیتاہے، تو پھر اس کو کیسے دور کریں نبی رحمت ﷺ سے ہمیں سیکھانا ضروری ہے صفحہ نمبر 103کامطالعہ کرلیجئے کہ جہاں آپ ﷺ کیا کہہ رہے ہیں۔وہیں صفحہ نمبر 117پر لطیفہ گوئی کے ذریعے آپﷺ نے جس صفت کا تذکرہ کرتےہوئے موت کو پیش کیاہےسبحان اللہ  کیا خوب پیش کیا گیا ہے۔ اسی طرح دنیاوی لیڈروں سے   جو بنیادی صفت آپ ﷺ کو ممتاز کرتی ہے ا س کا ایک نظارہ صفحہ نمبر 141پر ’’ کچھ ڈرنے کی بات نہیں ‘‘ کے تحت کرلیجئے، اورہمیں اپنی تربیت بھی اسی نہج پر کرنی ہے۔ آپسی ناچاکی کہاں نہیں ہوتی ، لیکن یہی جب دوکبار صحابہؓ کے درمیان ہوتی ہے تو کیا ہوتاہے صفحہ نمبر 157کو کھولئیے۔ امارت کی خواہش اور ذمہ داری پھر اہلیت کے متعلق آقائے دوجہاں نبی ﷺ کیا کہتے ہیں صفحہ نمبر 242سے سمجھئے۔ نوجوانوں کے نکڑ اور چوراہے پر کھڑے رہ کر ہنگامہ خیزی سے کون پریشان نہیں ہے اس کا حل اور آسان عمل صفحہ نمبر 243پر موجود ہے۔ والدین سے حسن سلوک موجودہ دور کا بہت بڑا المیہ بنتاجارہاہے ، اس کی بہترین تشریح صفحہ نمبر 268پر کی گئی ہے ہرنوجوان کو اس کا مطالعہ لازمی ہے۔ جگ مگ ستاروں کی محفل میں معطر پھولوں کا گلدستہ پیش خدمت ہے، غرض تعارف طویل ہوتاجارہاہے ،یہیں پر اپنے قلم کو روکتے ہوئے تمام سے التماس کرتے ہیں کہ ایک مرتبہ ضرور اس کا مطالعہ کریں ،کیونکہ مجالس نبوی ﷺ میں  پوری زندگی کا احاطہ کیا گیا ہے۔ ویسے کتاب کے متعلق قاری پوری کتاب کے مطالعہ کے بعد ہی فیصلہ کرسکتاہے ، ہم نے بس چند نمونوں کو پیش کیا ہے ۔ احساس کہہ رہاہے کہ اگر اس تصنیف کو مساجدمیں عصر یا عشاء کے بعد ، محفلوں میں بطور تذکیر ، اسکولوں اور کالجوں میں دعا کے اوقات میں روزانہ کا معمول بنائیں گے تو انشاء اللہ اس کے بہتر اثرات مرتب ہونگے۔ تصنیف کے انتساب میں صاحبِ قلم نے جن خیالات کااظہار کرتے ہوئے دعا مانگی ہے اللہ سب کے حق میں قبول کرے ۔ آمین۔                                               

                                                                                 تعارف از :عبدالروف سونور (لکچرر انجمن پی یو کالج بھٹکل)  9448776206

یہ کتاب مندرجہ ذیل پتہ پر مل سکتی ہے:

۱) مولانا ابوالحسن على ندوى اسلامك اكىڈ مى، بھٹکل [email protected]

۲) مكتبہ على العلمىہ، مد ینہ كالونى،بھٹکل

   ۳) مجلس تحقيقات ونشريات اسلام، ندوة العلماء، لكهنؤ 

۴)  مكتبة الشباب العلمیہ، ندوه روڈ، لكهنو

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کے ’میکرس ہَب‘نے کی ہے طبی عملے کے لئے’فیس شیلڈ‘۔ نوجوانوں کی ہورہی ہے ستائش!

کورونا وائرس نے جہاں ایک طرف دنیا بھر میں اپنا قہر برپا کیا ہے، وہیں دوسری طرف ڈاکٹر، طبی عملہ اور سماجی رضاکا ر اپنی جان پر کھیلتے ہوئے اس وباء کو قابو میں کرنے کی مہم چلارہے ہیں۔ ایسے میں فیلڈ میں رہ کر کام کرنے والوں کا تحفظ بہت ہی اہم ہوجاتا ہے، جس کے لئے ضروری سازوسامان یا ...

ریت میں سر چھپانے سے خطرہ نہیں ٹل جاتا پردھان سیوک جی!۔۔۔۔۔ از:اعظم شہاب

بہت ممکن ہے کہ جب آپ تک یہ تحریر پہونچے توملک ’لائیٹ آف، کینڈل آن‘ کا ایونٹ مناچکا ہو۔ کرونا وائرس کے اس قہر زدہ ماحول میں یہ ضروری بھی تھا کہ اپنے اپنے گھروں میں مقید لوگوں کے لیے کچھ تفریح کا سامان کیا جائے سو ہمارے پردھان سیوک نے یہ موقع فراہم کر دیا۔

تبلیغی مرکز کو آخر نشانہ کیوں بنایا جا رہا ہے؟۔۔۔۔۔ روزنامہ سالار کا تجزیہ

حکومت اپنی ناکامی چھپانے کیلئے کس کس چیز کاسہارا لیتی ہے۔ اس کا ثبوت نظام الدین کا تبلیغی مرکز ہے۔ دودنوں میں جس طرح حکومت اور میڈیا نے جھوٹی اور من گھڑت خبریں پھیلائیں اس سے انداز ہ ہوتا ہے کہ اس مصیبت کی گھڑی میں بھی حکومت اور میڈیا کس قدرقعرمذلت میں ہے۔

 افغانستان: سڑک کنارے بم پھٹنے سے اعلیٰ فوجی کمانڈر ہلاک

افغانستان حکام کا کہنا ہے کہ ہفتے کے روز ہونے والے بم ھماکے میں ایک اعلیٰ افغان فوجی کمانڈر ہلاک جب کہ کم از کم تین افراد زخمی ہوئے، جن میں ایک مقامی صحافی شامل ہے۔ایک اور خبر کے مطابق، ملک کے جنوب مشرقی علاقے میں بظاہر ایک ڈرون حملہ ہوا جس میں کم از کم چھ شہری ہلاک ہوئے، جن میں ...

عیدالفطر: فضائل و احکام ........... آز: عبدالرشیدطلحہ نعمانیؔ

جب بندہ تیس دن تک لگاتار روزے رکھتا ہے،روزے کےمطلوبہ تقاضے پورے کرتا ہے،قیام اللیل کے ذریعہ تقرب الہی کے ذرائع تلاش کرتاہے، خدمت خلق کے ذریعہ اپنےخالق و مالک کو راضی کرلیتا ہےاور اسی کی عبادت و فرماں برداری میں سارا وقت صرف کرتا ہےتو حق تعالیٰ  اس پیہم محنت و جدوجہد کے بعد ...

نئے سال کی آمد پر جشن یا اپنامحاسبہ ................ آز: ڈاکٹر محمد نجیب قاسمی سنبھلی

ہمیں سال کے اختتام پر، نیز وقتاً فوقتاً یہ محاسبہ کرنا چاہئے کہ ہمارے نامۂ اعمال میں کتنی نیکیاں اور کتنی برائیاں لکھی گئیں ۔ کیا ہم نے امسال اپنے نامۂ اعمال میں ایسے نیک اعمال درج کرائے کہ کل قیامت کے دن ان کو دیکھ کر ہم خوش ہوں اور جو ہمارے لئے دنیا وآخرت میں نفع بخش بنیں؟ یا ...

مٹھی بھر شر پسند عناصر ملک میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور قومی یکجہتی کی فضا کو خراب کرنا چاہتے ہیں : مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی

مرکزی جمعیت اہل حدیث( ہند) سے جاری ایک اخباری بیان کے مطابق مرکزی جمعیت اہلحدیث ہند کے امیر مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے امرتسر میں نرنکاری ست سنگ ڈیرہ پر ہوئے گرینیڈ حملہ جس میں تین افراد ہلاک اور پندرہ افراد زخمی ہوئے، کی پر زور مذمت کی ہے اور اسے بزدلانہ اورغیر انسانی ...

ماہ صفر مظفر اور بد شگونی ......... بقلم: محمد حارث اکرمی ندوی

فَإِذَا جَاءَتْهُمُ الْحَسَنَةُ قَالُوا لَنَا هَٰذِهِ ۖ وَإِن تُصِبْهُمْ سَيِّئَةٌ يَطَّيَّرُوا بِمُوسَىٰ وَمَن مَّعَهُ ۗ أَلَا إِنَّمَا طَائِرُهُمْ عِندَ اللَّهِ وَلَٰكِنَّ أَكْثَرَهُمْ لَا يَعْلَمُونَ ( الأعراف 131) ...

بھٹکل میں کورونا سے لڑنے تنظیم کےذمہ داران بھی نہایت متحرک؛ پوری ٹیم میدان میں کام کررہی ہے؛ چوطرفہ ہورہی ہے ستائش

اس وقت نہ صرف شہر بھٹکل بلکہ پوری دنیا کورونا وائرس کی وباء سے  حیران وپریشان ہے ایک طرح سے اس وباء سے  پوری دنیا کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے جبکہ لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد جس طرح سے ملک بھر میں غریب عوام اور یومیہ مزدور طبقہ کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس سے ہرکوئی واقف ہیں ...

بھٹکل میں شدت کی گرمی کے بعدوقت سے پہلے ہی برسی بارش؛ساحلی علاقوں میں بجلیوں اور بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ لوگوں کی ہوئی صبح

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹک میں گذشتہ کچھ دنوں سے شدت کی گرمی سے عوام پریشان تھے، درجہ حرارت بڑھتے ہوئے بھٹکل میں پیر کو 37 ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا، مگر منگل صبح قریب 5 بجے  اچانک آسمان میں بجلیوں کی زبردست چمک اور  بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ بارش شروع ہوگئی اور دیکھتے ہی ...

بھٹکل سے مزید تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ؛ آج موصول ہونے والی تمام رپورٹس بھی نیگیٹیو؛ کیا کسی کی رپورٹ پوزیٹیوآنے کا خدشہ ہے ؟

کورونا وائرس کو لے کر شہر سمیت پورے ملک میں لاک ڈاون جاری ہے اور ہر روز مشکوک لوگوں کے تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے ہیں۔اب تک بھٹکل سے جن لوگوں کے تھوک کے نمونے  جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے تھے،  راحت کی خبریں موصول ہورہی تھیں یہاں تک کہ مینگلور اور کاروار میں ...

بھٹکل میں کورونا وائرس کو لے کر کیاسوشیل میڈیا میں کسی طرح کی سازش رچی جارہی ہے ؟ مسلمانوں سے دور رہنے اورکسی بھی طرح کا لین دین نہ رکھنے کے مسیجس وائرل

ایسا لگتا ہے کہ کورونا وائرس کی وباء فسطائی اور فرقہ وارانہ ذہنیت والے غیر مسلموں کے لئے مسلمانوں کے خلاف اپنی بھڑاس نکالنے کا نیا ہتھیار بن گئی ہے۔ ایک طرف کورونا وائرس کے نام پر مسلمانوں سے دوری رکھنے کی تلقین کی جارہی ہے  اور مسلمانوں سے کسی بھی طرح کی خریداری کرنے کی ...

کورونا کے نام پر مسلمانوں پر حملہ؛ باگلکوٹ میں تین مسلم لوگوں کو ایک گاوں میں داخل ہونے سے روکنے کی واردات

باگلکوٹ کے مدھول پولیس اسٹیشن کے حدود میں آنے والے ایک گاؤں میں چند شرپسندوں نے مسلمانوں کو اپنے گاؤں میں داخل ہونے سے عملاً روکتے ہوئے ان پر حملہ کرنے کی واردات پیش آئی ہے  جس کی ویڈیو کلپ بھی سوشیل میڈیا پر  وائرل ہوگئی ہے۔