طالبان کے تین قیدی رہا، مغوی پروفیسروں کی رہائی کا امکان

Source: S.O. News Service | Published on 19th November 2019, 8:09 PM | عالمی خبریں |

واشنگٹن،19/نومبر (آئی این ایس انڈیا) افغانستان میں مغوی دو غیر ملکی پروفیسروں کی قیدیوں کے تبادلے کی ڈیل میں رہائی کا امکان پیدا ہو گیا ہے۔ طالبان کے تین قیدی رہا کر دیے گئے ہیں اور انہوں نے ڈیل منگل ہی کو کرنے کا بتایا ہے۔افغان طالبان نے کہا ہے کہ افغانستان میں قید ان کے تین قیدی رہائی کے بعد قطر پہنچ گئے ہیں۔ اطلاعات ہیں کہ ان کی رہائی طالبان کی طرف سے اغوا کیے گئے دوغیر ملکی پروفیسروں کے بدلے کا نتیجہ ہے۔ ان تینوں قیدیوں کو طالبان کے اندرونی حلقے میں انتہائی اہم خیال کیا جاتا ہے۔ انہیں سخت سکیورٹی کی بگرام جیل میں رکھا گیا تھا۔تاہم ابھی یہ واضع نہیں کہ مغوی امریکی پروفیسر کیون کنگ اور آسٹریلوی ٹموتھی ویکس کو رہا کر دیا گیا ہے یا نہیں۔ طالبان کے مطابق قیدیوں کے تبادلے کی ڈیل منگل کو مکمل کر لی جائے گی۔ ان دونوں پروفیسروں کو سن 2016 میں کابل سے اغوا کیا گیا تھا۔ایسی اطلاعات ہیں کہ مسلسل قید میں رہنے کی وجہ سے ٹموتھی ویکس اور کیون کنگ کی صحت میں شدید گراوٹ پیدا ہو چکی ہے۔ ان دونوں پروفیسروں کا تعلق افغان دارالحکومت کابل میں واقع امریکن یونیورسٹی سے ہے۔ غیر ملکی پروفیسروں کی رہائی کے لیے قیدیوں کے تبادلے کی ڈیل کی تفصیلات صدر اشرف غنی نے بارہ نومبر کو ایک خصوصی پریس کانفرنس میں بتائی تھیں۔مغوی امریکی پروفیسر کیون کنگ اور آسٹریلوی ٹموتھی ویکس کو سن 2016 میں کابل سے اغوا کیا گیا تھا۔طالبان نے ان مغربی پروفیسروں کی دو مرتبہ ویڈیوز بھی ریلیز کی تھیں۔ ایک ویڈیو اغواء کے ایک برس بعد ہی جاری کی گئی تھی۔ زرد رنگت اور علیل دکھائی دینے والے دونوں پروفیسروں نے اپنی اپنی حکومتوں سے اپنی اپنی رہائی کی بات چیت شروع کرنے کی اپیل کی تھی۔ ان کی رہائی کا ایک ریسکیو آپریشن بھی امریکی فوج نے کیا تھا لیکن کارروائی کے وقت اس مقام پر دونوں پروفیسر  موجود نہیں ہوئے تھے۔قطر پہنچنے والے طالبان کے تین قیدیوں میں انس حقانی بھی شامل ہیں جن کا تعلق حقانی نیٹ ورک سے ہے۔ انس حقانی کی گرفتاری سن 2014 میں خلیجی ریاست بحرین میں ہوئی تھی۔ وہ حقانی نیٹ ورک کے لیڈر جلال الدین حقانی کے بیٹے اور موجودہ کمانڈر سراج الدین حقانی کے چھوٹے بھائی ہیں۔ حقانی نیٹ ورک کو ایک انتہائی خطرناک عسکریت پسند گروپ تصور کیا جاتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بدھ کو ہندوستان بھر  میں منائی جائے گی عیدالاضحٰی  ؛ سعودی عربیہ، دبئی ، عمان و دنیا کے دیگر کئی  ملکوں میں آج منگل کومنائی جارہی ہے  عید 

بھٹکل اور ریاست کرناٹک سمیت پورے ملک میں کل بدھ 21 جولائی   کو عید الاضحیٰ منائی جائے گی، البتہ سعودی عربیہ، متحدہ عرب امارات،  عمان، کویت اور گلف کے دیگر ملکوں سمیت دیگر مختلف ممالک میں آج منگل کو ہی عید منائی جارہی ہے۔

امریکا کا افغان امن عمل کی حمایت کیلئے ’ٹھوس اقدامات‘ کی ضرورت پر زور

امریکا نے افغان امن عمل کی حمایت کے لیے ’ٹھوس اقدامات‘ کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق امریکا کی جانب افغان امن عمل سے متعلق بیان افغانستان کے لیے امریکا کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد اور وزیر اعظم عمران خان کے مابین ہونے والی ملاقات کے بعد سامنے آیا۔

حجاب کے متعلق یوروپی عدالت کا فیصلہ اسلاموفوبیا کی علامت ہے: ترکی

  ترکی نے  یورو پی کمپنیوں کو ملازمین کے حجاب پہننے پر پابندی کی اجازت دینے کے یوروپی عدالت انصاف کے فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بڑھتے ہوئے اسلاموفوبیا کی علامت اور مذہبی آزادی کی صریحاً خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

آسٹریلیا میں 80 فیصد مسلمانوں کو امتیازی سلوک کا سامنا ہے: انسانی حقوق کمیشن کی رپورٹ

آسٹریلوی انسانی حقوق کمیشن کا کہنا ہے کہ آسٹریلیا میں مسلمانوں کی اکثریت کو امتیازی سلوک کا سامنا ہے۔ آسٹریلوی انسانی حقوق کمیشن کی پیر کے روز شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق آسٹریلیا میں 80 فیصد مسلمانوں کو تعصب یا امتیازی سلوک کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

جرمنی کو تاریخ کے بدترین سیلاب کا سامنا، ہلاک شدگان کی تعداد 150 سے تجاوز، 1000 لاپتہ

 جرمنی کو اس وقت 200 سالہ تاریخ کے بد ترین سیلاب کا سامنا ہے، جس کے نتیجہ میں اب تک 150 سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ 1000 سے زائد افراد لاپتہ ہیں۔ اتنا ہی نہیں سیلابی صورت حال کے پیش نظر 2 لاکھ گھروں کی بجلی کی سپائی بھی منقطع ہو گئی ہے۔

عراق: اسپتال کے کورونا وارڈ میں خوفناک آتشزدگی، 52 افراد جان بحق

عراق کے شہر ناصریہ میں اسپتال کے کورونا وارڈ میں آگ لگ گئی جس کے نتیجے میں 52 افراد جان بحق ہو گئے۔ حکام کے مطابق 16 افراد کو بچا لیا گیا جبکہ 22 زخمی ہیں جن میں سے دو افراد کی حالت نازک ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ کورونا وارڈ میں مزید افراد کی موجودگی کی اطلاعات ہیں جن کی تلاش جاری ہے۔