دسہرہ کی چھٹیوں کے بعد کرناٹک میں اسکولوں کا باقاعدہ آغاز

Source: S.O. News Service | Published on 23rd October 2021, 11:49 AM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو، 23؍اکتوبر (ایس او نیوز) دسہرہ تقریبات کی چھٹیوں کے بعد ریاست بھر میں جمعرات سے اسکولوں کاآغاز ہوگیا ہے اور 6 تا 10 ویں جماعت کے طلبہ کے لئے کلاسس کے ساتھ اکشرداسوہا اسکیم کا بھی آغاز کیا گیا ہے۔

کووڈ کی وجہ سے اس مرتبہ تاخیر سے اسکول شروع ہونے کی وجہ سے حکومت نے اس مرتبہ صرف یکم اکتوبر تا 20 اکتوبر صرف 11 دنوں کی دسہرہ چھٹی دی تھی۔ چھٹیوں کے بعد طلبہ نے جو ش و خروش کے ساتھ پہلے دن کلاسس میں حاضری دی اور مختلف اسکولوں میں دوپہر کے کھانے کی اسکیم کے ساتھ میٹھے پکوان بھی پکائے گئے ۔

اطلاع کے مطابق بنگلور کے راجا راجیشوری نگر، چناسندرا ، ووڈا نے کندی، دوڈابدرکلو، اندھرہلی، نندنی لے آؤٹ کے کرشنا نندانگر، شیواجی نگر سمیت شہر کے اکثر علاقوں میں پرائمری اور ہائی اسکولوں میں کلاسس کا آغاز کیا گیا  ہے۔ متعلقہ حلقوں کے ڈی ڈی پی آئی اور بی ای او نے اسکولوں کا دورہ کر کے جائزہ لیا اور خود بچوں کو کھانا پروسا۔ حکومت کی ہدایت کے مطابق اسکولوں  کے اساتذہ اور اکشرداسوہا عملہ نے باورچی خانہ کو پاک و صاف کیا اور غذائی اجناس خرید کر دوپہر کے گرم کھانے کو تیار کیا۔ محکمہ پرائمری و سکینڈری تعلیم کے افسروں نے بتایا کہ اسکولوں میں بچوں کی حاضری کے حساب سے دوپہر کا کھانا  تیار کیا گیا جبکہ چند اضلاع میں اکشرادا سوہا اسکیم شروع کرنے میں تاخیر ہوئی ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات: نندی مجسمے کے راستے کو پیدل چلنے والے راستہ میں تبدیل کرنے اپیل

گزشتہ چند دنوں سے میسورو ضلع میں مسلسل بارشوں کی وجہ سے میسور کے قریب واقع چامنڈی پہاڑ پر زمین کھسکنے کے واقعات پیش آرہے ہیں جس کی وجہ سے پہاڑ پر واقع چامنڈیشوری دیوی کے درشن کو پہنچنے والے زائرین کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

چکبالاپور ضلع میں کانگریس کی ساکھ بحال کرنے کی کوشش تیز

چکبالاپور اسمبلی حلقہ میں کانگریس پارٹی کی ساکھ باقی رکھنے اور نچلی سطح سے پارٹی کی مضبوطی پرتوجہ دیتے ہوئے اگلے اسمبلی انتخابات میں پارٹی کو کامیاب کرانے کی ہر ممکنہ کوشش کی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار کے پی سی سی ممبر وینشام (ونے شام) نے اپنی رہائش پر نامہ نگاروں سے گفتگو ...

وشوا کنڑا کلا کوٹہ کے زیر اہتمام تہنیتی اجلاس، ڈاکٹروں کو لالچی نہیں بلکہ دلدار ہونا چاہئے:ڈاکٹر منجوناتھ

ئے دیوا انسٹی ٹیوٹ آف کار ڈیا لوجی کے ڈائرکٹر و پد ماشری ڈاکٹر سی این منجوناتھ نے کہا کہ ڈاکٹر کو پیشہ و ر اور دلدار ہونا چاہئے نہ کے دولت کا لالچی۔وشوا کنڑا کلا کوٹہ کے زیر اہتمام منعقد تہنیتی اجلاس سے خطاب کر تے ہو ئے ڈاکٹر منجوناتھ نے اس خیال کا اظہار کیا او رکہا کہ دنیا میں ...

ایس ڈی پی آئی کے عہدیداروں کا اخباری نمائندوں کے ساتھ”میڈیا مکالمہ“پروگرام ، ریاستی صدر عبدالمجیداور دیگر نے کئی موضوعات پر تفصیلی روشنی ڈالی

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) نئے ریاستی عہدیداروں نے پریس کلب میں اخباری نمائندوں کے ساتھ”میڈیا مکالمہ“پروگرام کا انعقاد کیا،

ہاسن چرچ میں ہنگامہ کرنے والے شرپسندوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ

ریاست کرناٹک کے  ہاسن ضلع کے ایک چرچ  میں جب مسیحی برادی کے لوگ اپنی خصوصی عبادت میں مشغول  تھے ، تبھی راشٹرییہ سویم سیوک سنگھ کے ذیلی تنظیمیں بجرنگ دل و وشوہ ہندو پریشد کے ورکرز اچانک چرچ میں گھسے اور ہنگامہ کرنے کی کوشش کی۔

بزدل مودی حکومت کسی کے ساتھ انصاف نہیں کر سکتی: راہل گاندھی

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے ایوان بالا راجیہ سبھا کے 12 ارکان کی معطلی کے خلاف جمعرات کو پارلیمنٹ کے کیمپس میں مسلسل تیسرے دن بھی دھرنا دیا اور کہا کہ مودی حکومت بزدل ہے۔ اس لیے وہ کسی کے ساتھ انصاف نہیں کر سکتی۔

گجرات کے ساحل پر تیز ہوا اور طوفانی لہریں، کشتیاں الٹ گئیں، 10 افراد لاپتہ

  گجرات کے سمندری ساحلی علاقہ کے ضلع گر سومناتھ کے نوا بندر کے قریب خراب موسم کے درمیان اچانک تیز ہوا اور طوفانی لہروں کی وجہ سے سمندر میں ایک درجن سے زیادہ کشتیاں الٹ گئیں، جن میں سوار 10 سے زیادہ افراد کے ڈوبنے کا اندیشہ ہے۔

بھیما-کوریگاؤں معاملہ: سماجی کارکن سدھا بھاردواج کو بامبے ہائی کورٹ نے دی ضمانت

بامبے ہائی کورٹ نے بدھ کے روز وکیل اور سماجی کارکن سدھا بھاردواج کو بڑی راحت دی۔ عدالت نے 2018 بھیما-کوریگاؤں اور ایلگر پریشد نسلی تشدد معاملے میں ملزم سدھا بھاردواج کو ضمانت دے دی ہے۔ عدالت نے ہدایت دی ہے کہ بھاردواج کو ضمانت کی شرطوں کو آخری شکل دینے کے لیے آئندہ بدھ کو ...

کورونا بحران: ایک سال کے اندر 11716 کاروباریوں کی خودکشی

  مرکزی حکومت نے منگل کے روز پارلیمنٹ میں اطلاع دی کہ 2020 میں 11716 کاروباریوں نے خودکشی کر لی۔ یہ تعداد 2019 کے مقابلہ 29 فیصد زیادہ ہے۔ ’آج تک‘ کی رپورٹ کے مطابق اس بات کے مکمل ثبوت ہیں کہ 2020 یعنی کورونا بحران کے دوران کاروباریوں نے شعبہ زراعت سے وابستہ لوگوں سے زیادہ معاشی تناؤ ...