ارملا ماتونڈکر کو راس نہیں آئی کانگریس، پارٹی سے دیا استعفیٰ

Source: S.O. News Service | Published on 10th September 2019, 9:10 PM | ملکی خبریں |

ممبئی،10؍ستمبر (ایس او نیوز؍ یو این آئی) اس سال لوک سبھا انتخابات کےدوران کانگریس میں شامل ہونے والی بالی ووڈ اداکارہ ارملا ماتونڈکر نے منگل کو پارٹی سے استعفی دے دیا۔ انہوں نے پارٹی کے ٹکٹ پر شمالی ممبئی حلقہ سے لوک سبھا کا انتخابات لڑا تھا لیکن انہیں بھارتیہ جنتا پارٹی کے گوپال شیٹی سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

ارملا ماتونڈکر نے اپنے ایک بیان میں پارٹی سے استعفی دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ’’میں نے کانگریس سے استعفی دے دیا ہے۔ میرے دل میں پہلی مرتبہ استعفی دینے کا خیال اس وقت آیا تھا جب میرے 16 مئی کو لکھے گئے خط پر اس وقت کے ممبئی کانگریس صدر ملند دیوڑا نے کوئی کارروائی نہیں کی اور اس خط میں لکھی خفیہ باتوں کو میڈیا میں لیک کردیا گیا۔ یہ میرے ساتھ ایک دھوکہ تھا۔

دراصل اس خط میں انہوں نے لوک سبھا انتخابات میں ملی شکست کی وجوہات اور مقامی کانگریس لیڈروں کی جانب سے تعاون نہیں کئے جانے کی بات کہی تھی۔ انہوں نے کہا کہ خط میں جن لوگوں کا ذکر کیا گیا تھا انہیں ان کے کاموں کے لئے جوابدہ قراردینے کے بعد انہیں ایوارڈ کے طور پر نئے عہدے دے دیئے گئے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو ایئر پورٹ پر بم رکھنے کا معاملہ ؛ ملزم آدتیہ راؤ سے پوچھ تاچھ کیلئے مرکزی وزارت داخلہ سے اجازت کا انتظار

گودی میڈیا نے منگلورو ایئر پورٹ پر بم رکھ کر تہلکہ مچانے والے سنگھ پریوار سے جڑے نوجوان آدتیہ راؤ کے معاملہ پر پوری طرح اب تک خاموشی اختیار رکھی ہے اور اب تک اس سلسلہ میں کوئی خبر ہی نہیں دی گئی تھی، اس معاملہ پر پردہ ڈالنے کی بھی کوشش جاری ہے ،

مزدوروں کا 85 فیصد ریل کرایہ مرکز کے ذریعہ ادا کرنے کا جھوٹ عدالت میں بے نقاب

مہاجر مزدوروں کو ان کے آبائی وطن روانہ کرنے کے لیے ریلوے کا 85 فیصد کرایہ مرکزی حکومت کی جانب سے ادا کیے جانے کا بی جے پی کاجھوٹ آج اس وقت بے نقاب ہوگیا جب سپریم کورٹ کے روبرو مرکزی حکومت کے سالیسٹر جنرل تشار مہتہ نے اس بات کا اعتراف کیا کہ ریلوے کرائے کا پورا خرچ ریاستی حکومتوں ...

بنگال بی جے پی صدردلیپ گھوش کا شرمناک بیان، کہا ”ٹرینوں میں مزدوروں کی موت معمولی واقعہ“

مغربی بنگال بی جے پی کے صدر دلیپ گھوش نے شرمک اسپیشل ٹرین میں بھوک اور پیاس کی وجہ سے ہونے والی اموات کو 'معمولی اور چھوٹا' واقعہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس کے لیے انڈین ریلوے کو ذمہ دار نہیں ٹھہرایا جا سکتا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں اس چھوٹے سے واقعے کو حد سے زیادہ حساس ...