بریکنگ نیوز

نیپال میں نئی ​​حکومت کی تشکیل کے لیے سرگرمیاں تیز

Source: S.O. News Service | Published on 27th November 2022, 12:38 PM | عالمی خبریں |

کھٹمنڈو ،27؍نومبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) پڑوسی ملک نیپال میں وفاقی اور صوبائی مقننہ کے انتخابات کے زیادہ تر نتائج سامنے آنے کے بعد ہفتہ کو اپنی پہلی میٹنگ میں نیپالی کانگریس کے صدر اور وزیر اعظم شیر بہادر دیوبا اور سی پی این (ماؤسٹ سینٹر) کے چیئرمین پشپا کمل دہل نے ہفتے کے روز حکمران اتحاد کو آگے بھی جاری رکھنے پر اتفاق ظاہر کیا ہے۔

وفاقی اور صوبائی پارلیمانوں کی شکل کا خاکہ واضح ہونے کے ساتھ، یہ واضح ہو گیا کہ کانگریس سب سے بڑی پارٹی کے طور پر ابھری ہے، جبکہ سی پی این- یو ایم ایل ہے۔ ان کے بعد دوسرے مقام پر ہے۔ ان پارٹیوں اور ان کے اتحادیوں نے نئی حکومت کے لیے اتحاد بنانے کی سرگرمیاں شروع کر دی ہیں۔

حکمران اتحاد اور اپوزیشن دونوں ایوان زیریں کے لیے درکار 138 نشستوں کی جادوئی تعداد سے کم ہونے کا امکان ہے، اس لیے کسی ایک جماعت کے پاس اتنی تعداد نہیں ہوگی کہ وہ وفاقی حکومت بنا سکے۔

وزیر اعظم کے معاون بھانو دیوبا نے کہا کہ دیوبا اور دہل نے چار جماعتوں – کانگریس، ماؤسٹ، سی پی این (یونیفائیڈ سوشلسٹ) اور نیشنل پیپلز فرنٹ کے انتخابی اتحاد کو جاری رکھنے پر اتفاق کیا ہے۔ تاہم وہ مزید فیصلے کے لیے حتمی نتیجے کا انتظار کر رہے ہیں۔

یو ایم ایل نے حکومت بنانے اور ممکنہ طور پر حکومت کی قیادت کرنے کا دعویٰ بھی پیش کیا ہے۔ پارٹی کے صدر کے پی شرما اولی نے دہل کو گورکھا-2 میں جیت پر مبارکباد دی اور مستقبل میں مل کر کام کرنے کی پیشکش کی۔

یو ایم ایل کے ڈپٹی جنرل سکریٹری بشنو رمل نے کہا کہ ہماری پوزیشن واضح ہے۔ ملک کے استحکام اور حکومت کی بار بار تبدیلی کی صورتحال کو ختم کرنے کے لیے کانگریس اور یو ایم ایل کو یکجا ہونا چاہیے۔

اگر کانگریس موجودہ اتحاد کے ساتھ جاری رہتی ہے تو ہمارے پاس متبادل تلاش کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے، لیکن اس سے سیاسی استحکام یقینی نہیں ہوگا، انہوں نے مزید کہا ’’لیکن اگر کانگریس قیادت کا دعویٰ کرتی ہے، تو یہ یو ایم ایل کے لیے حکومت میں شامل ہونا ضروری نہیں ہے۔ اس صورت حال میں، یو ایم ایل اگلے پانچ برسوں کے لیے باہر سے حکومت کی حمایت کر سکتی ہے‘‘۔

معاملےکے باخبر لوگوں کا کہنا ہے کہ چونکہ 20 نومبر کو ہونے والے انتخابات کے حتمی نتائج سامنے آنے میں کچھ وقت لگ سکتا ہے، اس لیے دیوبا اور دہل حکمران اتحاد کے دیگر رہنماؤں کے ساتھ بیٹھ کر حکومت سازی پر تبادلہ خیال کریں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

دنیا بھر میں بڑھتی مسلم دشمنی نسل پرستی،عدم برداشت دیکھ رہے ہیں: اقوام متحدہ

کوپن ہیگن کی ایک مسجد کے قریب اسلام مخالف شخص کی جانب سے ڈنمارک میں ترک سفارت خانے کے سامنے مسلمانوں کی مقدس کتاب جلانے کے چند گھنٹے بعد اقوام متحدہ نے خبردار کیا کہ انٹرنیٹ نے نفرت انگیز تقریر کو بھڑکایا جس سے مجرموں کو اپنا جھوٹ، سازشیں اور دھمکیاں پھیلانے میں مدد ملی۔

قرآن کو جلانے کے خلاف مظاہروں میں شدت

سویڈن اور ہالینڈ میں انتہائی دائیں بازو کے کارکنوں کی طرف سے حالیہ دنوں میں اسلام کی مقدس کتاب کو نذر آتش کرنے کی مذمت کیلئے جمعہ کو کئی مسلم اکثریتی ممالک میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے-

دنیا بھر میں ہورہی ہے چھٹنی،سروے سے کھلا راز، ہر 4 میں سے 1 ہندوستانی کو ملازمت سے برطرفی کا خدشہ

دنیا بھر کی بڑی ٹیک کمپنیوں میں  ملازمین کو نوکریوں سے برطرف کیا جارہا ہے۔ اور ذرائع کی مانیں تو  ہر 4 میں سے 1 ہندوستانی ملازمت کے خاتمے  کو لے کر پریشان ہے۔ دوسری طرف 4 میں سے 3 ہندوستانی بڑھتی ہوئی مہنگائی سے پریشان ہیں۔

افغانستان میں ریکارڈ سردی ، اب تک 157 افراد ہلاک

افغانستان میں اس وقت شدید سردی پڑ رہی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سردی نے گزشتہ 15 سال کا ریکارڈ توڑ دیا ہے اور درجہ حرارت گر کر مائنس 34 ڈگری سلسیس تک پہنچ گیا ہے۔ سردی کی اس شدت نے گزشتہ ایک ہفتہ میں لوگوں کو بری طرح حراساں کیا ہے اور سردی کی وجہ سے اموات کی تعداد میں بھی زبردست ...

قرآن کی بے حرمتی کیخلاف عالمِ اسلام میں شدید احتجاج، ترکی ، عراق ، ایران ، لیبیا ، سعودی عرب، یو اے ای اور دیگر اسلامی ممالک میں عوام سڑکوں پر نکل آئے

اسلام کی  مخالفت میں  زہر اگلنے والے  ڈینش سیاست داں راسموس پالودان کے ذریعہ اسٹاک ہوم میں ترک سفارت خانے کے سامنے  قرآن مقدس کا نسخہ نذر آتش کرنے کے خلاف پاکستان، ایران اور ترکی سمیت کئی اسلامی ملکوں میں احتجاجی مظاہرے ہورہے ہیں۔