کاروار کے چھوٹے سے لڑکے نے قائم کیا’اسپِننگ اسکیٹنگ‘ میں ورلڈ ریکارڈ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 29th April 2019, 8:46 PM | ساحلی خبریں |

کاروار29/اپریل(ایس او نیوز) کاروار کے پانچ سال کی چھوٹی سی عمر کے لڑکے نے ’اسپننگ اسکیٹنگ‘ میں ورلڈ ریکارڈ قائم کرتے ہوئے اپنے شہر اورضلع کا نام دنیا میں روشن کردیا ہے۔

کاروار کے اجّی ہوٹل کے احاطے میں منعقدہ لِمبو اسپننگ اسکیٹنگ مقابلے میں کائیگا رولر اسکیٹرس کی نمائندگی کرنے والے محمد ثاقب نے مسلسل 25 منٹ تک اسپننگ اسکیٹنگ کرتے ہوئے ورلڈ ریکارڈ میں اپنا نام داخل کرلیا۔اس قسم کی مشکل اسکیٹنگ میں سابقہ عالمی ریکارڈ مسلسل16منٹ کا تھا جسے بیلگاوی کے روہن کوکنے نامی ایک لڑکے نے انجام دیاتھا۔ اسے پانچ برس کے ثاقب نے 25منٹ میں بدلتے ہوئے ریکارڈ اپنے نام کرلیا۔ثاقب کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ کائیگا رولر اسکیٹنگ کلب میں مسلسل مشق کیا کرتا ہے۔

اس کھیل میں اسکیٹس باندھ کر اپنے دونوں پاؤں پوری طرح مقابل سمتوں میں پھیلاتے ہوئے 180ڈگری زاویے پر بیٹھنے کی پوزیشن میں اسپننگ کی جاتی ہے جو کہ ایک بہت ہی دشوار عمل ہوتا ہے۔اور صرف پانچ سال کی عمر میں اس قدر مہارت کے ساتھ اس کھیل کامظاہرہ کرنے پر ثاقب کی بہت ہی زیادہ ستائش کی جارہی ہے۔اس طرح اس لڑکے کا نام ایشیا بُک آف ریکارڈ اور انڈیا بُک آف ریکارڈ میں درج ہوگیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بنٹوال میں ایمبولینس اور ٹرک کا تصادم۔ 1خاتون ہلاک، 4زخمی    

نیرلکٹے کے پاس پیش آنے والے ٹرک اور ایمبولینس کے تصادم میں ایک خاتون موقع پر ہی ہلاک ہوگئے جبکہ ایمبولینس میں موجود مریض سمیت دیگر 4افراد زخمی ہوگئے ہیں، جنہیں علاج کے لئے پتور کے سرکاری اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

کاروار:اپنی نجی خواہشات کے لئے دوسروں پر الزام عائد نہ کریں : وزیر دیش پانڈے کا ہیبار پرپلٹ وار

اغی گروپ میں شامل یلاپور کے رکن اسمبلی شیورام ہیبار نےاپنے فیس بک پیج پر ضلع نگراں کار وزیر آر وی دیش پانڈے کے خلاف لگائے گئے الزاما ت کا وزیر دیش پانڈے نے بھی فیس بک پر  ہی  کچھ اس طرح جواب دیا ہے۔ ’ہیبار اپنے نجی اور انفرادی فیصلوں اور خواہشات کے لئے خود ذمہ دار ہیں ، اس ...

اڈپی ضلع پولیس نے کروائی گائیں چرانے کے معاملات میں ملوث157 افرادکی پریڈ۔ شہر بدرکرنے اور غنڈہ ایکٹ لاگو کرنے کی دی گئی وارننگ

اڈپی ضلع میں پولیس نے گائیں چرانے کے معاملات میں شامل رہنے والے افراد کو مختلف مقامات پر طلب کرکے ان کی اجتماعی پریڈ کروائی اور انہیں تنبیہ کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ اس طرح کی وارداتوں میں اگر وہ ملوث ہونگے تو پھر ان کے خلاف شہر بدر کرنے یا پھر غنڈہ ایکٹ لاگو کرنے جیسے اقدامات کیے ...