اڑیسہ میں سیکیورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں مارے گئے 4 ماؤنواز، ایک خاتون بھی شامل

Source: S.O. News Service | Published on 5th July 2020, 10:03 PM | ملکی خبریں |

بھونیشور،5جولائی(آئی این ایس انڈیا) اڑیسہ کے کندھمال ضلع میں اتوار کے روز ایک گھنے جنگل میں سکیورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں کم سے کم چار ماؤ نواز مارے گئے۔

پولیس کے ڈائریکٹر جنرل ابھے نے بتایا کہ انکاؤنٹر میں کچھ ماؤنواز زخمی بھی ہوئے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ انٹیلی جنس  اطلاعات کی بنیاد پر اسپیشل آپریشن گروپ (ایس او جی) کے افسران اور ضلعی رضاکار فورس (ڈی وی ایف) کے افسران کے ایک دستہ نے علی ا لصباح کندھمال ضلع کے تمودی بندھ علاقے میں ایک جنگل میں چھاپہ ماری کی تھی۔سکیورٹی فورسز جیسے ہی ماؤنوازوں کے ٹھکانے کے قریب پہنچے، ماؤنوازوں نے گولیاں چلانا شروع کردیا، جس کی وجہ سے انکاؤنٹر شروع ہوگیا۔ اس دوران چار ماؤ نواز مارے گئے۔

ڈائریکٹر جنرل نے بتایا کہ اس علاقے سے اسلحہ اور گولہ بارود کا ایک بڑا ذخیرہ برآمد کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان چاروں افراد پر کالعدم سی پی آئی (ماؤ نواز) کے ممبر ہونے کا شبہ ہے۔پولیس کے ڈائریکٹر جنرل نے یہ بھی بتایا کہ علاقے میں سرچ آپریشن جاری ہے۔ کندھمال سپرنٹنڈنٹ پولیس پرتیک سنگھ دیگر اعلی پولیس افسران کے ساتھ جائے وقوع پہنچے۔ بتایا گیا کہ ہلاک ماؤنوازوں میں ایک خاتون ماؤنواز بھی شامل ہے۔

چیف سکریٹری اے کے ترپاٹھی نے سیکیورٹی فورسز کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس مہم نے عسکریت پسندوں سے لڑنے کے اڑیسہ کے عزم کو تقویت بخشا ہے۔ انہوں نے ٹویٹ کیاکہ کندھمال میں کامیاب مہم پر اڑیسہ پولیس کے افسران اور جوانوں کو مبارکباد، قابل جرات کام۔ چار ماؤ نوازوں کی ہلاکت کی تصدیق ہوگئی ہے۔ اس سے ریاست کو انتہا پسندی سے پاک کرنے اور ریاست کی مجموعی ترقی کو تقویت دینے کے ہمارے عزم کو تقویت ملی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کورونا: ہندوستان میں ہلاکتوں کی تعداد 46 ہزار کے پار، 24 گھنٹے میں پھر 60 ہزار سے زائد کیسز درج

ہندوستان میں کورونا وائرس کے بڑھتے قہرکے درمیان اس جان لیوا وبا سے شفایابی حاصل کرنے والوں کی تعداد میں بھی تیزی سے اضافہ ہورہا ہے اور گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 56 ہزار سے زیادہ افراد کی شفایابی کے بعد اب تک تقریبا 16.40 لاکھ صحت مند ہوئے ہیں۔