سپریم کورٹ کالجیم نے کی تیسری دفعہ ہائی کورٹ جج کے بطور ایڈوکیٹ ناگیندرا نائک کی سفارش؛ بھٹکل انجمن کالج سے فارغ ہیں ناگیندرا نائک

Source: S.O. News Service | Published on 5th September 2021, 6:16 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل،5؍ ستمبر (ایس او نیوز) سپریم کورٹ کالجیم نے کرناٹکا ہائی کورٹ جج کے بطور تقرر کے لئے تیسری مرتبہ بھٹکل کے ایڈوکیٹ ناگیندرا نائک کی سفارش کی ہے ۔
    
خیال رہے کہ اکتوبر 2019  میں  سپریم کورٹ کالجیم نے ہائی کورٹ جج کے بطور جن 8 وکیلوں کے نام پیش کیے تھے اس میں بھٹکل سے تعلق رکھنے والے ایڈوکیٹ ناگیندرا  نائک کا نام بھی شامل تھا ۔ مگر مرکزی حکومت نے اس فہرست میں سے صرف ناگیندرا نائک کے نام کو ہی نظر انداز کردیا تھا ۔ پھر دوسری مرتبہ کالجیم نے مارچ 2021 میں ناگیندرا نائک کو ہائی کورٹ جج کا عہدہ دینے کی سفارش مرکزی حکومت سے کی تھی ۔ اس مرتبہ بھی حکومت نے اسے نظر انداز کردیا ۔ اس دوران 24 اپریل 2021 کو ایک جج کے تقرر پر دوبارہ غور کرنے کے بعد ناگیندرا نائک سمیت 6 وکیلوں کو 4 ہفتے کے اندر جج کے منصب پر فائز کرنے کا حکم دیا تھا ۔ مگر اس مرتبہ بھی مرکزی حکومت نے ان 6 وکیلوں میں سے بھٹکل کے ناگیندرا نائک اور کیرالہ کے کے کے پال کے نام نظر انداز کر دئے ۔
    
پتہ چلا ہے کہ یکم ستمبر کو نئے ججس کے تقرر کی جو سفارش بھیجی گئی ہے اس میں پھر سے ناگیندرا نائک کا نام شامل رکھا گیا ہے ۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ مرکزی حکومت اس دفعہ کالجییم کی سفارش کے ساتھ کیا سلوک کرتی ہے ۔  
    
ناگیندرا نائک نے انجمن کالج بھٹکل سے گریجویشن کیا اور پھر بنگلورو سے ایل ایل بی کیا ہے ۔ وہ گزشتہ 28 برس سے ہائی کورٹ میں وکالت کر رہے ہیں ۔ اگر مرکزی حکومت اس بار سفارش قبول کرتی ہے تو ناگیندرا نائک ہائی کورٹ جج کے عہدے تک پہنچنے والے  بھٹکل کے پہلے وکیل بنیں گے ۔ اس لئے بھٹکل اور ضلع میں ان کے چاہنے والوں کی نظریں مرکزی حکومت کے فیصلہ پر ٹکی ہوئی ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں زوردار بارش سے ہوئے نقصانات پر ایم ایل اے نے کہا؛ 4483 بارش سے متاثرہ مکانات میں سے اب تک 3890 گھروالوں میں معاوضہ تقسیم

   2 اگست کو بھٹکل میں  ہوئی زوردار بارش کے نتیجے  میں جو  نقصانات  ہوئے تھے، اس پر بھٹکل  ایم ایل اے  سنیل نائک نے کہا کہ مشکل کی  اس گھڑی میں پہلے دن سے ہی  وہ عوام کے ساتھ کھڑے ہیں ۔ بارش سے جملہ  4483    مکانات میں پانی گھس جانے سے گھروں کے اندر موجود کافی چیزوں کو نقصان پہنچا ...

بھٹکل تعلقہ میں برسات کی تباہ کاریاں - اہم دستاویزات سیلاب کی نذر ہونے سے متاثرین کو ہوسکتی ہیں دشواریاں

بھٹکل تعلقہ کے مختلف علاقوں میں پچھلے دنوں شدید بارش کے بعد جو سیلابی کیفیت پیدا ہوئی تھی اس دوران جن گھروں میں پانی گھس آیا تھا ان میں سے کئی لوگوں کا کہنا ہے کہ ان کے ساز و سامان کے علاوہ کئی اہم دستاویزات بھی  پانی میں بھیگ کر خراب ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے انہیں بڑی دشواریوں کا ...

بھٹکل : مٹھلّی گرام میں لال پتھروں کی کھدائی والے علاقے میں بسنے والوں پر منڈلا رہا ہے خطرہ

گزشتہ دنوں ہوئی بھاری برسات کے بعد مٹھلّی گرام پنچایت علاقے میں پہاڑی کھسکنے سے چار افراد کی موت واقع ہونے کا جو واقعہ پیش آیا تھا اس کے بعد وہاں پر بسنے والے لوگ خوف اور خدشات میں گھر گئے ہیں ۔ 

بھٹکل میں زوردار بارش کا سلسلہ جاری؛ منڈلّی اسکول کی دیوار بیٹھ گئی - اسکول میں چھٹی رہنے سے ٹل گئی ٹریجڈی؛ اپسر گونڈا میں پہاڑی میں شگاف

سنیچر کے دن پوری رات برسنے والی بھاری بارش کی وجہ سے     منڈلّی میں واقع سرکاری اسکول نمبر 1 کی دیوار گر گئی اور چھت کا ایک حصہ  بھی منہدم ہوگیا ۔   واردات اتوار کو پیش آئی۔ یہ تو اچھا ہوا کہ اتوار ہونے کی بنا پر اسکول میں چھٹی تھی، اس لئے  ایک بڑا حادثہ ٹل گیا۔

بھٹکل تینگنگونڈی کے ماہی گیروں کو ایک ایک لاکھ روپیہ معاوضہ فراہم کرنے کا مطالبہ لے کر ویلفئیر پارٹی نے تحصیلدار کو دیا میمورنڈم

گذشتہ ہفتہ بھٹکل میں ہوئی  زبردست بارش میں جہاں کئی  مکانوں ، دکانوں  اور کھیتوں وغیرہ کو نقصان پہنچا وہیں ماہی گیروں کی کشتیاں اور مچھلیوں کا شکار کرنے والی بوٹوں کو بھی نقصان پہنچا ہے، کئی ماہی گیروں کی کشتیاں سمندر میں بہہ کر لاپتہ بھی ہوئی ہیں  تو بعض  کی کشتیاں سمندر میں ...

بی جے پی کو ترقی کا مطلب ہی معلوم نہیں ہے: رام لنگاریڈی

بی جے پی حکومت کے سربراہ ملک کی ترقی کے بارے میں سوچنے کی بجائے سرکاری ملکیت والے اداروں کو پرائیوٹائز کرنے اور صنعت کار ادانی اورامبانی کو مزید دولتمند بنانے میں لگے ہوئے ہیں،جس سے ملک کے عوام کو کئی مشکلو ں کا سامناکرناپڑرہاہے۔بی جے پی کو ترقی کا مطلب ہی معلوم نہیں ہے۔یہ بات ...

اس ملک کوبی جے پی نے کیا دیاہے؟: سابق وزیراعلیٰ سدارامیا

کانگریس پارٹی نے اس ملک کو آزادی دلائی اور ہمیں یہاں آزادی سے زندگی گزارنے کا موقع دیاہے،مگر اس ملک کیلئے بی جے پی جیسی بدعنوان اور فرقہ پرست پارٹی نے کیا دیاہے؟یہ سوال سابق وزیراعلیٰ و اپوزیشن لیڈرسدارامیانے کیا۔

جشن آزادی کی مناسبت سے75الیکٹرک بسیں دوڑانے کافیصلہ، بنگلورو شہرکے بس اسٹانڈوں میں 300چارجنگ اسٹیشن قائم کئے جائیں گے: بی ایم ٹی سی

آزادی کے75سال کی منا سبت سے منائے جا رہے امرت مہا اتسو کے موقع پر بنگلور شہر کے مسافروں کیلئے بنگلور میٹرو پالیٹن ٹرانسپورٹ کارپوریشن(بی ایم ٹی سی)نے مزید 75 الیکٹرک بسوں کو سڑکوں پر دوڑانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ریاستی حکومت عوام پرورمنصوبے جاری کرنے میں ناکام:کانگریس

)مہا دیو پورہ اسمبلی حلقہ کے منوکولا لو وارڈ کے سابق کانگریس کارپوریٹر ایس،ادے کمار نے الزام لگایا کہ ریاستی حکومت اپنے دوراقتدار کے دوران عوامی مفادات پروگرامس کو جاری کرنے میں نا کام رہی ہے،اور وہ ترقیاتی کاموں پر توجہ دینے کے بجائے 40فیصد کمیشن کے دھندہ کو اپناتے ہو ئے ...