بہار پر کورونا وائرس سے زیادہ آسمانی بجلی کا قہر، ایک ہفتہ میں 125 سے زائد ہلاکتیں

Source: S.O. News Service | Published on 3rd July 2020, 11:06 PM | ملکی خبریں |

پٹنہ،3؍جولائی(ایس او نیوز؍ایجنسی) بہار میں اب تک جتنے لوگوں کی موت کورونا وبا سے نہیں ہوئی ہے، اس سے زیادہ اموات گزشتہ ایک ہفتہ میں آسمانی بجلی گرنے کی وجہ سے ہو گئی ہے۔ بہار میں گزشتہ ایک ہفتہ کے دوران 125 سے زیادہ لوگوں کی موت آسمانی بجلی کی زد میں آنے کی وجہ سے ہوئی ہے۔ جمعرات کو ایک بار پھر بہار میں آسمانی بجلی گرنے کا واقعہ سرزد ہوا جس میں 26 لوگوں کی موت ہو گئی۔

بہار کے ڈیزاسٹر مینجمنٹ محکمہ کے ایک افسر نے بتایا کہ مختلف ضلعوں سے فون پر ملی خبر کے مطابق ریاست میں جمعرات کو آسمان سے بجلی گرنے سے 26 لوگوں کی موت ہو گئی۔ ان میں پٹنہ میں 6، مشرقی چمپارن میں 4، سمستی پور میں 7، کٹیہار میں 3، شیوہر اور مدھے پورہ میں 2-2 اور پورنیہ و مغربی چمپارن ضلع میں 1-1 افراد کی موت آسمانی بجلی کی زد میں آنے سے ہو گئی۔

اس درمیان محکمہ موسمیات نے اگلے 48 گھنٹے میں بہار میں زبردست بارش اور بجلی چمکنے کے لیے الرٹ جاری کیا ہے۔ اس سے پہلے منگل کو بہار کے مختلف اضلاع میں آسمانی بجلی گرنے سے 11 لوگوں کی موت ہو گئی تھی جب کہ 26 جون کو ریاست میں اسی طرح کے حادثہ میں 96 لوگ ہلاک ہو گئے تھے۔

یہاں قابل ذکر ہے کہ بہار میں کورونا وبا کی وجہ سے اتنی اموات نہیں ہوئیں جتنی کہ آسمانی بجلی گرنے کی وجہ سے محض ایک ہفتے میں ہو گئی ہیں۔ جہاں تک کورونا کے قہر کا سوال ہے تو بہار میں اب تک 10 ہزار سے زائد لوگ اس وائرس کے انفیکشن میں اب تک مبتلا پائے گئے ہیں جن میں سے 78 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ اس سے صاف ہے کہ کورونا جیسی کسی وبا سے زیادہ بہار کے لوگوں کے لیے غریبی اور خط افلاس کی زندگی خطرناک ہے۔ ایسا اس لیے کیونکہ آسمانی بجلی کا شکار زیادہ تر غریب اور بے گھر لوگ ہی ہوتے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بے لگام میڈیا پر جمعیۃ کی عرضی: جب تک عدالت حکم نہیں دیتی حکومت خود سے کچھ نہیں کرتی: چیف جسٹس

مسلسل زہر افشانی کرکے اور جھوٹی خبریں چلاکر مسلمانوں کی شبیہ کوداغدار اور ہندوؤں اورمسلمانوں کے درمیان نفرت کی دیوارکھڑی کرنے کی دانستہ سازش کرنے والے ٹی وی چینلوں کے خلاف داخل کی گئی

دہلی فسادات: پروفیسر اپوروانند کی حمایت میں سامنے آئے ملک و بیرون ملک کے دانشوران

 ملک اور بیرون ملک کے ایک ہزار سے زائد معروف دانشوروں، نوکر شاہوں، صحافیوں، مصنفوں، ٹیچروں او اسٹوڈنٹس نے دہلی یونیورسٹی کے پروفیسر اپوروانند سے مشرقی دہلی میں فسادات کے معاملے میں پوچھ گچھ کئے جانے اور انکا موبائل فون ضبط کرنے کے واقعہ کی شدید مذمت کی ہے اور پولیس کے ذریعہ ...

کالعدم چینی کمپنیوں سے بی جے پی کے گہرے رشتے ہیں: کانگریس

 کانگریس نے الزام عائد کیا ہے کہ حکومت نے قومی سلامتی کے لیے خطرہ بتاتے ہوئے جن چینی کمپنیوں پر پابندی لگائی ہے ان میں سے کئی کے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) سے گہرے رشتے ہیں اور گزشتہ عام انتخابات میں ان کمپنیوں نے اس کے لیے تشہیری مہم کا کام کیا تھا۔

ریا چکرورتی کا سوشانت کے ساتھ جڑنے کا واحد مقصد ان کی جائیداد ہڑپنا تھا: بہار پولیس کا حلف نامہ

 بہار پولیس نے اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کی مبینہ خودکشی کے معاملے میں سپریم کورٹ میں دائر حلف نامے میں کہا کہ کلیدی ملزمہ ریا چکرورتی اور اس کے اہل خانہ کا اداکار کے ساتھ جڑنے کا واحد مقصد اس کی جائیداد ہڑپنا تھا۔