مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ معاملہ:خفیہدستاویزات بم دھماکہ متاثرین کو مہیا کرا ئے جائیں، بی اے دیسائی

Source: S.O. News Service | Published on 11th September 2019, 6:28 PM | ملکی خبریں |

ممبئی،11؍ ستمبر  (ایس او نیوز؍پریس ریلیز) مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ معاملے میں آج بم دھماکہ متاثرین نے اس معاملے کے اہم ملزم کرنل پروہیت کی جانب سے عدالت میں داخل کردہ خفیہ دستاویزات کی آئینی حیثیت پر سوال اٹھاتے ہوئے بم دھماکہ متاثرین کو مہیا کرائے جانے کی گذارش خصوصی این آئی اے عدالت کے جج سے کی۔

بم دھماکہ متاثرین کو قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) کی جانب سے آج خصوصی این آئی اے عدالت میں سینئر ایڈوکیٹ بی اے دیسائی نے بحث کی اور عدالت کو بتایا کہ قانون کے مطابق خفیہ دستاویزات عدالت میں داخل کرنے کا اختیار صرف منسٹری آف ڈیفینس کواور محکمہ ڈیفینس کے منسٹر کے حلف نامہ کے ذریعہ ہی خفیہ دستاویزات عدالت میں پیش کیئے جاسکتے ہیں لیکن اس معاملے میں ملزم نے نام نہاد خفیہ دستاویزات داخل کرکے اسے متاثرین کی پہنچ سے پرے کیا ہوا ہے جس پر بم دھماکہ متاثرین کو شدید اعتراض ہے نیز تعجب اس بات پر ہے کہ قومی تفتیشی ایجنسی NIAنے بھی اس معاملے میں خاموشی اختیار کررکھی ہے۔

سینئر ایڈوکیٹ بی اے دیسائی نے خصوصی این آئی اے عدالت کے جج ونود پڈالکر کو بتایا کہ قانون شہادت کی دفعہ 123 کے تحت کوئی بھی کسی بھی دستاویز کوخفیہ دستاویزات کی کٹیگری میں ظاہر کرنے سے پہلے عدالت کو دیگر فریق کی رائے بھی لینا چاہئے لیکن اس معاملے میں ایسا نہیں کیاگیا اور اب ملزم خفیہ دستاویزات کا بہانا بنا کر عدالت کی کارروائی کو بند کمرے میں کرانا چاہتے ہیں۔

ایڈوکیٹ بی اے دیسائی نے عدالت کو مزیدبتایا کہ اس معاملے میں این آئی اے کا کردار مشکوک رہا ہے لہذا متاثرین کو موقع دیا جانا چاہئے تاکہ وہ عدالت کے سامنے دلائل پیش کرسکیں۔

دوران بحث بی اے دیسائی نے عدالت کو بتایا کہ کریمنل پروسیجر کوڈ میں متاثرین کو اہم مقام حاصل ہے اوران کے رائے لیئے بغیر کوئی بھی فیصلہ کرنا ان کے ساتھ نا انصافی ہوگی۔

این آئی اے کی جانب داخل کردہ عرضداشت جس میں انہوں نے مقدمہ سماعت بند کمرے میں کیئے جانے کی درخواست کی ہے پر بم دھماکہ متاثرین نے اعتراض کیا ہے جبکہ بھگواء ملزمین نے این آئی اے کی عرضداشت کی حمایت کی ہے، سادھوی پرگیا سنگھ ٹھاکر کے وکیل کے علاوہ تمام فریقین کی بحث مکمل ہوچکی ہے۔عدالت نے سادھوی پرگیا سنگھ ٹھاکر کے وکیل کو بحث کرنے کے لیئے آخری چانس دیا ہے اور معاملے کی سماعت جمعہ تک ملتوی کردی۔

دوران سماعت عدالت میں آج جمعیۃ علماء مہاراشٹر کی جانب سے ایڈوکیٹ انصار تنبولی، ایڈوکیٹ شاہد ندیم، ایڈوکیٹ ہیتالی سیٹھ ودیگر موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کیرالہ میں آر ایس ایس کارکن گرفتار، پوچھ تاچھ میں ہوئے حیرت انگیز انکشافات

پڑوسی ریاست کیرالہ  کے کنور میں آر ایس ایس دفتر کے پاس واقع پولس پوسٹ پر بم پھینکے جانے کے الزام میں پولس نے آر ایس ایس کارکن کو گرفتار کرنے کی خبر موصول ہوئی ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق تمل ناڈو کے کوئمبٹور سے آر ایس ایس کا یہ ورکر بدھ کے روز گرفتار ہوا جس کے بعد اس سے سختی کے ...

اندرا جے سنگھ کے بیان پر کنگنا کا نازیبا تبصرہ؛ ایسی خواتین کی کوکھ سے عصمت دری کرنے والے پیدا ہوتے ہیں

نربھیا عصمت دری معاملہ مستقل خبروں میں بنا ہوا ہے اور اب مجرموں کو پھانسی دینے کا معاملہ سرخیوں میں ہے۔ نربھیا کے والدین ذرائع ابلاغ کے لئے سیلیبریٹی سے کم نہیں ہیں اور اسی وجہ سے حال ہی میں دہلی اسمبلی انتخابات میں یہ بات بہت تیزی کے ساتھ پھیلی کہ نربھیا کی والدہ اسمبلی چناؤ ...

راجستھان: کوٹہ میں بھی خواتین نے بنایا ’شاہین باغ‘، احتجاج کا سلسلہ 9 دنوں سے جاری

دہلی کے شاہین باغ سے تحریک لیکر ملک کے مختلف طول و عرض میں شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف خواتین کے مظاہروں کا سلسلہ لگاتار جاری ہے۔ ت تکنیکی تعلیمی اداروں کے لیے مشہور راجستھان کے شہر کوٹہ میں بھی خواتین نے ایک ’شاہین باغ‘ قائم کر لیا ہے اور گذشتہ 9 روز سے ...

میری بیٹیوں پر مقدمہ درج ہوا تو امت شاہ پر کیوں نہیں؟ منور رانا

شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف مظاہرے میں شامل ہونے کی پاداش میں اپنی بیٹیوں کے خلاف مقدمہ درج لکھے جانے کے بعد اردو کے نامور شاعر منور رانا نے امت شاہ کی لکھنؤ ریلی پر سوال اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے جلسہ عام سے خطاب کر کے انتظامیہ کی طرف سے ...

ملک گیر احتجاج: ’شاہین باغ کی دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے ایل جی کے پاس لے جایا گیا‘

قومی شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف شاہین باغ مظاہرین انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ احتجاج جاری رہے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے لیفٹننٹ گورنر سے ملاقات کرائی گئی تھی اور جو لوگ انہیں وہاں لے کر گئے تھے وہ شاہین باغ خواتین مظاہرین کی ...