آئی ایم اے فراڈ کیس میں سی بی آئی کی تازہ ایف آئی آر، 2؍ آئی پی ایس افسر سمیت پانچ پولیس والوں کے نام شامل

Source: S.O. News Service | Published on 5th February 2020, 2:44 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،5/فروری (ایس او نیوز) کروڑوں روپئے کے آئی ایم اے فراڈ کیس کی جانچ میں ایک  بار پھر شدت پیدا کرتے ہوئے سی بی آئی نے منگل کے روز ریاست کے 2 ؍ اعلیٰ پولیس افسروںسمیت 11 ؍ افراد کے خلاف ایف آئی آر دائر کردی ہے ۔ اس کیس کی جانچ کے مرحلے میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ 2؍ اعلیٰ پولیس عہدیداروں نے بھی آئی ایم اے سے خوب مالی فائدہ حاصل کیا ہے۔جن ملزمین پر ایف آئی آر درج ہوئی ہے ان میں 2آئی پی ایس افسر سمیت پولیس کے پانچ افسران شامل ہیں۔ آئی پی ایس افسر ہیمنت نمبالکر ، اجئے ہلوری، کمر شیل اسٹریٹ پولیس تھانے کے انسپکٹر ایم رمیش ، سب انسپکٹر گوری شنکر ، سی آئی ڈی کے ڈی وائی ایس پی سری دھر و دیگر کے خلاف بنگلورو کے سی بی آئی دفتر میں ایف آئی آر درج کی گئی ہے اس ایف آئی آر میں سی بی آئی نے پانچوں پولیس والوں کو کلیدی ملزم قرار دیا ہے جبکہ آئی ایم اے کے سربراہ منصور خان کو چھٹا ملزم بنایا گیا ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ 2016 کے دوران ہی ریزرو بینک آف انڈیا کی طرف سے آئی ایم اے کے کاروبار میں فراڈ کی نشاندہی کرتے ہوئے ریاستی پولیس سے کہا گیا تھا کہ اس کی جانچ کر کے رپورٹ دی جائے۔ اس مرحلہ میں ہیمنت نمبالکر سی آئی ڈی کے سربراہ تھے انہوں نے اس کیس کی جانچ کرنے کے بعد ریاستی حکومت اور آر بی آئی کو ایسی رپورٹ روانہ کی جس میں آئی ایم اے کے کاروبار کو کلین چٹ دی گئی تھی ۔ جانچ سے قبل کمر شیل اسٹریٹ پولیس تھانے کے انسپکٹر رمیش کو ایک مکتوب بھی روانہ کیا گیا تھا اور ان سے کہا گیا تھا کہ آئی ایم اے کے کاروبار کی جانچ کر کے اس سلسلہ میں رپورٹ روانہ کی جائے رمیش نے بھی آئی ایم اے کے کاروبار کی بھرپور تعریف کرتے ہوئے رپورٹ روانہ کی اور وہی رپورٹ اعلیٰ حکام تک پہنچادی گئی ۔ ان پر الزام ہے کہ آئی ایم اے کمپنیوں کی مبینہ دھاندلیوں پر پردہ پوشی کرنے کی کوشش کی گئی۔ سی بی آئی کی طرف سے ایف آئی آر درج ہونے کے بعد امکان ہے کہ جلد ہی ان افسروں کو گرفتار کرنے کی تیاری شروع کردی جائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

دبئی میں ایک سواری نے ایک شخص کو رونڈ ڈالا؛ مہلوک ایشیائی شخص کی شناخت ہنوز نہیں ہوپائی؛ پولس نے عوام سے کی تعاون کی اپیل

یہاں ایک سواری کی ٹکر میں ایک شخص ہلاک ہوگیا مگر اُس شخص کی شناخت ابھی تک معمہ بنی ہوئی ہے اور یہ کون ہے، کس ملک یا کس  شہر سے ہے کچھ پتہ نہیں چل پایا ہے۔ پولس کا کہنا ہے کہ یہ ایشیاء کے  کسی ملک سے تعلق رکھتا ہے۔

توہین آمیز فیس بک پوسٹ اور اس پر تشدد دونوں قابل مذمت

شان رسالتﷺ میں گستاخی کرتے ہوئے کئے گئے ایک فیس بک پوسٹ اور اس کے نتیجے میں شہر بنگلورو میں گزشتہ روز پیش آنے والے پر تشدد واقعات کی مذمت کے لئے چہار شنبہ کی صبح ممتاز علمائے کرام وقائدین کی زوم کانفرنس کے ذریعے ایک میٹنگ ہوئی

ایس ایس ایل سی نتائج میں حاصل اول مقام برقرار رکھنے افسر توجہ دیں: وزیر تعلیم ڈاکٹر سدھاکر

70 سالہ تاریخ میں چکبالاپور ضلع ایس ایس ایل سی امتحانات میں ریاست میں اول مقام جو حاصل کیا ہے۔ یہ ہمارے لئے بہت خوشی کی بات ہے۔ مگر اس سے اوپر جا نہیں سکتے مگر اس مقام کو بچائے رکھنا ہی ہمارے لئے ایک چیلنج ہے۔اس سلسلے میں ضلع کے افسروں کو توجہ دینا ضروری ہے۔

بھٹکل کا نوجوان اُدیاور میں ہوئے سڑک حادثہ میں شدید زخمی؛ علاج کے لئے مالی تعاون کی اپیل

بھٹکل مخدوم کالونی کا ایک نوجوان اُڈپی کے اُدیاور میں سڑک حادثہ میں شدید زخمی ہوا ہے اور اسے منی پال کستوربا اسپتال شفٹ کیا گیا ہے، نوجوان کی مالی حالت کمزور ہونے  کی وجہ سے علاج کے لئے  قریب تین لاکھ  روپیوں کی فوری ضرورت ہے۔ نوجوان کی شناخت سمیرسوکیری (34) کی حیثیت سے کی گئی ...

بھٹکل میں الحاج محی الدین مُنیری کے نام سے موسوم ہائی ٹیک ایمبولنس کا خوبصورت افتتاح

   یہاں نوائط کالونی میں  دبئی کے معروف تاجر جناب عتیق الرحمن  مُنیری کی طرف سے ان کے والد مرحوم الحاج محی الدین مُنیری کے نام سے منسوب ایک ہائی ٹیک ایمبولنس کا خوبصورت افتتاح عمل میں آیا جس میں بھٹکل کی سرکردہ شخصیات سمیت علماء و عمائدین   موجود تھے۔

بنگلورو فساد: مسلمانوں نے پیش کی ہم آہنگی کی مثال، انسانی زنجیر بناکر مندر کی حفاظت

کرناٹک کی راجدھانی بنگلورو میں سوشل میڈیا کی ایک قابل اعتراض پوسٹ کے بعد بھڑکنے والے فرقہ وارانہ فساد کے درمیان مسلم نوجوانوں نے مذہبی ہم آہنگی کی مثال پیش کرتے ہوئے ایک مندر کی حفاظت کی اور ہندوستان کی اس خوبصورت تصویر کو نمایاں کیا جس پر ہر ہندوستانی کو فخر ہونا چاہیے۔

 بھٹکل جالی پٹن پنچایت کی نئی عمارت کی تعمیرروک دی جائے۔ پنچایت اراکین نے کیا اسسٹنٹ کمشنر سے مطالبہ 

بھٹکل جالی پٹن پنچایت کے اراکین نے اسسٹنٹ کمشنرکو میمورنڈم دیتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ ایڈمنسٹریٹر کی حیثیت سے تحصیلدار نے جالی پٹن پنچایت کی نئی عمارت تعمیر کرنے کا جو کام شروع کیا ہے