کرناٹک میں کورونا کا قہر جاری ، 24 گھنٹوں میں ریکارڈ 397 مریض ، بنگلورو میں 173 نئے مریضوں کے ساتھ تعداد 1680

Source: S.O. News Service | Published on 25th June 2020, 10:57 AM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،25؍جون (ایس او نیوز)  ہر گزرتے دن کے ساتھ کورونا اب سماجی سطح پر عوا م کے گھروں پر دستک دینے لگا ہے۔ خصوصاً بنگلورو شہر میں گزشتہ 4 دنوں سے کورونا بنگلورو شہر کے تقریباً تمام 198 وارڈس کو اب اپنی لپیٹ میں لے چکا ہے۔

چہارشنبہ کی شام 5 بجے تک 24 گھنٹوں میں کرناٹک بھر میں جہاں  397 نئے مریض اسپتالوں میں داخل ہوئے ہیں وہیں، 24 ؍گھنٹوں میں 14 اموات کے ساتھ کورونا سے فوت ہونے والوں کی تعداد 164 تک جا پہنچی ہے۔ 24 گھنٹوں کے دوران  ریاست بھر میں صرف 149 مریض صحت یاب ہوئے ہیں اور 3799 مریض زیر علاج ہیں۔

ریاست میں کورونا سے متاثر مریضوں کی تعداد 10 ؍ ہزار کا نشانہ پا کر کے 10120 ہوچکی ہے۔ 112 مریض جن کی حالت نازک ہے وہ زندگی کیلئے جنگ لڑ رہے ۔ چہارشنبہ کے دن جو 397 نئے مریض پائے گئے ہیں ان میں بیرونی ریاستوں  سے لوٹ کر آئے 75 افراد اور 8 بیرونی  ممالک سے آئے ہوئے ہیں۔ بقیہ ان باہر سے آئے لوگوں کے رابطہ میں آئے ہوئے مریض ہیں۔

چہارشنبہ کے دن صرف باگل کوٹ اور ہاویری 2 اضلاع ہی ایسے ہیں جہاں کوئی نیا مریض پایا نہیں گیا ہے۔ جبکہ بیلاری 34، کلبرگی 22، رام نگرم 22، اُڈپی 14، یادگیر 13، دکشن کنڑا ، دھارواڑ اور کوپل میں 12 مریض پائے گئے ہیں۔ جبکہ چکمگلورو ، ٹمکورو، ہاسن ، بیلگاوی میں ایک اور کورگ ، چامراج نگر ، چترادرگہ ، منڈیا میں فی ضلع 2 نئے مریض پائے گئے ہیں۔ چہارشنبہ کے دن جو 14 مریض ہلاک ہوئے ہیں ان میں بنگلورو میں 5، بیلاری میں 4 ، رام نگر م 2 ، کلبرگی 2 اور ٹمکورو میں 1 مریض فوت ہوا ہے۔ چہارشنبہ کے دن 397 نئے مریض پائے گئے، 149 صحت یاب ہوئے، 8 فوت ہوئے، کورونا سے متاثر مریضوں کی تعداد 10120 اور اموات 164 ۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں ایک ہی دن 6257 کورونا پوزیٹیو معاملات ، 86 اموات

کرناٹک میں کورونا وائرس کا خوفناک پھیلاؤ رکنے اور تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے، ہر گزرتے لمحے اور دن کے ساتھ کورونا وائرس کے نئے معاملات میں اضافہ ہی ہوتاجار ہا ہے۔ ریاست میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا متاثرین کی تعداد تشویشناک حد تک اضافہ یکھا جارہا ہے۔ ریاست میں ایک ہی دن ...

کرناٹک: ایس ایس ایل سی سپلیمنٹری امتحانات ستمبر میں منعقد کئے جائینگے

ایس ایس ایل سی سپلیمنٹری امتحان آئندہ ماہ ستمبر میں منعقد کئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور دو ایک دن میں امتحان کی تاریخ اور ٹائم ٹیبل کا اعلان کردیا جائے گا۔ یہ بات کرناٹک سکینڈری ایگزامنیشن بورڈ کی ڈائرکٹر وی سو منگلا نے کہی۔

بنگلور میں احتجاجیوں اور پولس کے درمیان زبردست جھڑپ؛ پولس فائرنگ میں دو کی موت؛ فیس بُک پر توہین آمیز پوسٹ پرعوام نے کیا تھا پولس تھانہ کا گھیراو

 فیس بُک پر مبینہ طور پر  پیغمبر اسلام حضرت محمد ﷺ کے خلاف توہین آمیز مسیج پوسٹ کرنے پر سخت برہمی ظاہر کرتے ہوئے بنگلور کے جی ہلی پولس تھانہ کے باہر  جمع ہوکرایک فرقہ کے لوگوں نے جب احتجاج کیا تو یہی احتجاج بعد میں تشدد میں تبدیل ہوگیا جس کے نتیجے میں بتایا جارہا ہے کہ ...

اننت کمار ہیگڈے نے لگایابی ایس این ایل میں دیش دروہی افسران موجود ہونے کا الزام

اپنے متنازعہ بیانات کے لئے پہچانے جانے والے رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے نے الزام لگایا کہ بھارت سنچار نگم لمیٹڈ کے اندر دیش دروہی افسران بیٹھے ہوئے جس کی وجہ سے اس کے کام کاج میں کوئی ترقی نہیں ہورہی ہے۔ اس لئے آئندہ دنوں میں اس کی نج کاری (پرائیویٹائزیشن) کیا جائے گا۔

بنگلور: ٹرانسفرس کے احکامات ملتوی کرانے میں مبینہ طور پر با رسوخ اساتذہ کی لابی شامل، چار سال سے ڈگری کالجوں کے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے

ریاست کرناٹک کے سرکاری فرسٹ گریڈ کالجوں میں خدمات انجام دے رہے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے ہیں، جس کے سبب انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس تعلق سے الزامات لگائے جارہے ہیں کہ  چند با رسوخ لکچررس کی طرف سے سیاسی اثر و رسوخ کا استعمال کرکے تبادلوں کی کاروائی ملتوی ...

باپ کی املاک پر بیٹی کا بیٹے کی طرح یکساں حق: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے منگل کو ایک دور رس نتائج والے اپنے فیصلہ میں کہا ہے کہ ہندو غیر منقسم خاندان کی آبائی املاک میں بیٹی کو بیٹے کی طرح ہی حقوق حاصل ہوں گے، یہاں تک کہ اگر ہندو جانشینی (ترمیمی) ایکٹ 2005 کے نفاذ سے قبل ہی اس کے والد کی موت کیوں نہ ہوگئی ہو۔

بنگلور: ٹرانسفرس کے احکامات ملتوی کرانے میں مبینہ طور پر با رسوخ اساتذہ کی لابی شامل، چار سال سے ڈگری کالجوں کے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے

ریاست کرناٹک کے سرکاری فرسٹ گریڈ کالجوں میں خدمات انجام دے رہے لکچررس کے تبادلے نہیں ہوسکے ہیں، جس کے سبب انہیں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس تعلق سے الزامات لگائے جارہے ہیں کہ  چند با رسوخ لکچررس کی طرف سے سیاسی اثر و رسوخ کا استعمال کرکے تبادلوں کی کاروائی ملتوی ...