یوپی میں دلتوں کو مندر جانے سے روکاگیا تو میں خود داخل کراؤں گا؛غنڈہ گردی پرزبانی جمع خرچ ؟

Source: S.O. News Service | Published on 19th May 2017, 11:39 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ19مئی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)متھرا اسکینڈل اور سہارنپور تشدد کو لے کر اتر پردیش کے لاء اینڈآرڈرپراٹھتے سوالات پروزیراعلیٰ یوگی ادتیا ناتھ نے جمعہ کو ایوان میں جواب دیا۔یوگی نے کہا کہ ریاست میں دلتوں کے مندر میں داخلے پر روک نہیں ہے۔ہونا بھی نہیں چاہئے لیکن اگر کہیں دلتوں کو روکا گیا، تو میں جا کر مندر میں ان کی رسائی کراؤں گا۔انہوں نے کہا کہ سماج وادی لوگ گؤ کشی کی مخالفت کریئے،مندر کی بات کریئے، قوم پرستی کی بات کریئے۔آر ایس ایس آپ کے ساتھ کھڑے ہوں گے۔اس کے ساتھ ہی یوگی نے تین طلاق پر بھی اپنی بات رکھی اور سوشلسٹوں سے کہا کہ وہ تین طلاق کی مخالفت کریں۔سی ایم یوگی نے کہا کہ جو غلط ہے وہ غلط ہے۔سماجوادی لوگ فیصلہ کریں کہ کیا مسلم خواتین کو انصاف نہیں ہوجانا چاہئے۔سماجوادی لوگوں کو بھی ٹرپل طلاق کی مخالفت کرنی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ایوان میں وندے ماترم سن کراچھالگا۔اگر آر ایس ایس نہیں ہوتا تو لوگ وندے ماترم کوبھول گئے ہوتے۔ یوپی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ ہم فیصلہ کر چکے ہیں کہ ریاست میں جرائم تبدیل نہیں ہوں گے، نہ ہی مجرموں کے تحفظ کی۔اگر کسی نے غریب، تاجر یا کسی کا ظلم و ستم کیا، تو اسے اپنے مستقبل کے بارے میں سوچنا ہوگا۔اگرچہ یوگی آدتیہ ناتھ کے قانون کو بہتر بنانے کے دعوے صرف جمع خرچی ثابت ہو رہے ہیں۔
 

ایک نظر اس پر بھی

کشمیر میں موبائل انٹرنیٹ سروس معطل

ترال میں سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں سبزار احمد بھٹ کے مارے جانے کے پیش نظر احتیاطی طور پر آج وادی کشمیرمیں موبائل انٹرنیٹ سروس معطل کر دی گئی۔

یوگی حکومت لاء اینڈرآرڈرلاگو کرنے میں بری طرح ناکام،ہرطرف خوف کا ماحول، دلتوں کودبایا جارہا ہے؛ کانگریس نائب صدر کا الزام

کانگریس نائب صدر راہل گاندھی ہفتہ کو نسلی تشدد سے متاثر سہارنپور کے متاثر خاندانوں سے ملنے پہنچے۔یہاں انہوں نے کچھ متاثرہ خاندانوں سے ملاقات کی۔

پانڈیچری کے وزیراعلیٰ کا مویشیوں کی فروخت پرپابندی سے متعلق نوٹیفیکشن واپس لینے کامطالبہ؛ حکومت کوکھانے پینے کی پسندپربندشیں مسلط کرنے کاکوئی حق نہیں

پانڈیچیری کے وزیراعلیٰ وی نارائن سامی نے ذبح کے لئے مویشیوں کی فروخت پرپابندی لگانے کے نوٹیفکیشن جاری کرنے پرمرکزی حکومت کوآڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ حکومت کو لوگوں کے کھانے پینے کی پسندپربندشیں مسلط کرنے کاکوئی حق نہیں ہے۔