سعودی فورسز نے خمیس مشیط میں یمنی حوثیوں کا داغا بیلسٹک میزائل ناکارہ بنا دیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 1st December 2017, 8:39 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

ریاض یکم دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سعودی عرب کی فضائی دفاعی فورسز نے جمعرات کے روز جنوب مغربی صوبے عسیر میں واقع جنوبی شہر خمیس مشیط کی جانب یمن سے آنے والا ایک بیلسٹک میزائل مار گرایا ہے۔یمن سے سعودی عرب کی جانب اس ماہ کے دوران میں یہ دوسرا بیلسٹک میزائل حملہ ہے۔اس سے پہلے سعودی فورسز نے 4 نومبر کو دارالحکومت ریاض کے شاہ خالد بین الاقوامی ہوائی اڈے کے نزدیک ایک بیلسٹک میزائل ناکارہ بنا دیا تھا۔

عرب لیگ نے 19 نومبر کو مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں وزرائے خارجہ کے ایک غیر معمولی اجلاس میں کہا تھا کہ یمن میں مارچ 2015ء میں جنگ کے آغاز کے بعد سے سعودی عرب کی جانب 78 بیلسٹک میزائل داغے جا چکے ہیں۔حوثی باغیوں نے قبل ازیں 10 اکتوبر کو سعودی عرب کے سرحدی علاقے جازان کی جانب زمین سے زمین پر مار کرنے والا ایک میزائل داغا تھا اور وہ ایک گاؤں الجرادیہ میں واقع ایک اسکول کی عمارت پر جا کر گرا تھا۔ اس سے اسکول کی عمارت اور بعض شہری املاک کو نقصان پہنچا تھا۔

سعودی فورسز نے ستمبر میں حوثیوں کا خمیس مشیط کے ہوائی اڈے کی جانب چلایا گیا ایک اور بیلسٹک میزائل ناکارہ بنا دیا تھا اور یمن میں حوثیوں کی میزائل داغنے کی جگہ کو تباہ کردیا تھا۔حوثی جنگجو آئے دن ایرانی ساختہ بیلسٹک اور دوسرے میزائل سعودی علاقوں کی جانب داغتے رہتے ہیں۔سعودی حکام کا کہنا ہے کہ حوثی سرحدی علاقوں میں اسکولوں اور شہری تنصیبات کو نشانہ بنا رہے ہیں اور یہ بین الاقوامی انسانی حقوق کی صریح خلاف ورزی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

تبدیلی کی صورت میں سعودی عرب سے بہتر تعلقات ممکن:حسن روحانی

ایران کے صدر حسن روحانی کا کہنا ہے کہ سعودی عرب کے ساتھ تعلقات استوار کیے جا سکتے ہیں۔ ایرانی صدر نے آج نشر کی جانے والی اپنی تقریر میں کہا کہ اگر یمن پر بمباری کا سلسلہ ترک کرنے کے ساتھ ساتھ اسرائیل کے ساتھ اپنے مبینہ تعلقات کو ختم کر دے،