معروف سائنس دان اسٹیفن ہاکنگ انتقال کرگئے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 15th March 2018, 12:32 PM | عالمی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

لندن 14مارچ ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا )اسٹیفن ہاکنگ 21 سال کی عمر میں ایک انتہائی کم یاب اور مہلک بیماری 'موٹر نیورون' کا شکار ہونے کے بعد عمر بھر کے لیے معذور اور وہیل چیئر تک محدود ہوگئے تھے۔معروف برطانوی سائنس دان اسٹیفن ہاکنگ 76 برس کی عمر میں انتقال کرگئے ہیں۔ہاکنگ کے انتقال کا اعلان ان کے خاندان نے ایک بیان میں کیا ہے جس کے مطابق ان کا انتقال بدھ کو علی الصباح برطانیہ کے شہر کیمبرج میں واقع ان کی رہائش گاہ میں ہوا۔ہاکنگ نظریاتی طبیعات کے سب سے ماہر سائنس دان مانے جاتے تھے جن کے کائنات کے اسرار و رموز، وقت اور بلیک ہولز سے متعلق نظریات کو خاص و عام میں مقبولیت حاصل ہوئی۔ہاکنگ کو بین الاقوامی شہرت 1988ء میں منظرِ عام پر آنے والی ان کی کتاب 'اے بریف ہسٹری آف ٹائم' (وقت کی مختصر تاریخ) سے ملی تھی جس کا شمار ایسی مشکل ترین کتابوں میں ہوتا ہے جو اپنے موضوع کی پیچیدگی کے باوجود عوام میں مقبول ہوئیں۔اسٹیفن ہاکنگ کی اس کتاب نے ہی انہیں البرٹ آئن اسٹائن کے بعد نظریاتی طبیعات کی دنیا کا سب سے بڑا نام بنا دیا تھا۔ اس کتاب کی اب تک ایک کروڑ سے زائد جلدیں فروخت ہوچکی ہیں۔کیمبرج یونیورسٹی نے پروفیسر ہاکنگ کو ان کے مشہور مقالے "پراپرٹیز آف ایکسپنڈنگ یونیورسز' (مسلسل بڑھنے والی کائناتوں کی خصوصیات) پر 1966ء میں پی ایچ ڈی کی ڈگری دی تھی۔اپنے اس مقالے میں اسٹیفن ہاکنگ نے کائنات کے آغاز اور اس کے مسلسل بڑھنے اور پھیلنے سے متعلق اپنا نظریہ پیش کیا تھا جو آج بھی مشہور ہے۔اسٹیفن ہاکنگ 21 سال کی عمر میں ایک انتہائی کم یاب اور مہلک بیماری 'موٹر نیورون' کا شکار ہونے کے بعد عمر بھر کے لیے معذور اور وہیل چیئر تک محدود ہوگئے تھے اور ڈاکٹروں کا خیال تھا کہ وہ چند ماہ سے زیادہ نہیں جی پائیں گے۔تاہم اس کے باوجود وہ نہ صرف 50 سال سے زائد عرصہ اس بیماری کے ساتھ زندہ رہے بلکہ مسلسل تحقیقی کام بھی کرتے رہے۔ اس عرصے کے دوران ہاکنگ نے لاتعداد تحقیقی مقالہ جات اور کتابیں لکھیں اور بے شمار لیکچر دینے کے ساتھ ساتھ تقریبات سے خطاب بھی کیا۔اسٹیفن ہاکنگ اپنی بیماری کے باعث نہ صرف چلنے پھرنے بلکہ بولنے سے بھی معذور ہوگئے تھے اور وہ خصوصی طور پر تیار کیے گئے سافٹ ویئر اور مشین کے ذریعے لیکچر دیا اور گفتگو کیا کرتے تھے۔واضح ہو کہ موصولہ اطلاع کے مطابق ان کی آخری رسومات کی ادائیگی کے متعلق تاحال کوئی تفصیل سامنے نہیں آئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ایس بی آئی برطانیہ میں قانونی جنگ میں ٹیکس دہندگان کا پیسہ برباد کر رہا ہے : مالیا 

مسائل میں گھرے شراب کاروباری وجے مالیا نے ایک بار پھر سے قرض لوٹانے کی پیشکش اپنی بات دہرانے کے لئے سوشل میڈیا کا سہارا لیا ہے۔ انہوں نے SBI پر بھارتی ٹیکس دہندگان کا پیسہ برطانیہ میں مقدمے پر برباد کرنے کا الزام لگایا۔ برطانیہ کے ہائی کورٹ نے 63 سالہ مالیا کے لندن کے بینک اکاؤنٹ ...

تھائی لینڈ میں نوجوان جرمن خاتون سیاح کا ریپ کے بعد قتل

تھائی لینڈ میں جرمنی سے تعلق رکھنے والی ایک نوجوان خاتون سیاح کو ریپ کے بعد قتل کر دیا گیا۔ تھائی پولیس نے ایک مبینہ ملزم کو گرفتار کر لیا ہے، جس نے اس چھبیس سالہ سیاح کو ریپ کے بعد قتل کرنے کا اعتراف بھی کر لیا ہے۔تھائی لینڈ کے دارالحکومت بنکاک سے پیر آٹھ اپریل کو ملنے والی جرمن ...

جنگ مسلط کردہ یمن میں ہیضہ کی وبا، ویکسین رسائی کی منتظر

جنگ زدہ ملک یمن میں ہیضے کی ہلاکت خیز وبا کئی ملین افراد کو متاثر کر چکی ہے لیکن اقوام متحدہ کے اہلکاروں کو اب تک ادویات پہنچانے کی اجازت نہیں مل پائی۔یمن میں لاکھوں افراد ہیضے کے مرض میں مبتلا ہیں اور اب بھی ہر روز ہزاروں نئے کیسز سامنے آ رہے ہیں۔ سن 2017 کے موسم گرما میں اقوام ...

بوئنگ 737 طیاروں کے سافٹ ویئر کو مزید بہتر بنانے کی منظوری

 امریکی فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن (ایف اے اے) نے بوئنگ 737 میکس طیاروں کے سافٹ ویئر کو بہتر بنانے اور پائلٹوں کی تربیت میں تبدیلی کی منظوری دے دی ہے۔ یہ رپورٹ مقامی میڈیا نے دی ہے۔ دو بڑے حادثوں کے بعد کئی ممالک نے ان طیاروں کی پرواز پر روک لگا دی ہے۔

ہلیال میں جے ڈی ایس لیڈر کے گھر پر انتخابی افسران کا چھاپہ ۔تلاشی کے بعد خالی ہاتھ واپس لوٹے افسران؛ کیا بی جےپی کو شکست کا خوف ہے؟

پارلیمانی انتخابات کے پیش نظر چیک پوسٹس پر تلاشی مہم کے علاوہ ہلیال شہر کے گوداموں، شراب کی دکانوں، موٹر گاڑیوں کی بھی مسلسل تلاشیاں لے رہے ہیں۔