پونچھ میں پاک فوج نے کی جنگ بندی کی خلاف ورزی، خاتون کی موت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th August 2017, 10:44 AM | ملکی خبریں |

جموں،12/اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)پاکستانی فوج کی طرف سے جموں کشمیر کے پونچھ ضلع میں کنٹرول لائن (ایل او سی) کے پاس سرحدی دیہات اورہندوستانی چوکی کو نشانہ بنا کر آج کی گئی فائرنگ میں 40 سالہ ایک خاتون کی موت ہو گئی۔ حکام نے یہ معلومات دی۔دفاعی ترجمان نے بتایا کہ پاکستانی فوج نے بغیراشتعال کے ایل او سی کے قریب پونچھ سیکٹر میں صبح تقریبا سوا پانچ بجے چھوٹے اور خود کار ہتھیاروں سے اندھا دھند فائرنگ کی اور مارٹر کے گولے داغے۔سر حد ی چوکیوں پر تعینات ہندوستانی فوج کے جوانوں نے اس کا پختہ اور مؤثر طریقے سے جواب دیا۔انہوں نے بتایا کہ چھ بج کر 64 بجے دونوں جانب سے فائرنگ تھم گئی۔پولیس کے ایک افسر نے بتایا کہ صبح تقریباََپانچ بجکر 20 منٹ پر سرحد پار سے داغے گئے مارٹر گولے گوکلاد یلران گاؤں میں رہنے والے محمد شبیر کے گھر کے قریب گرے، جس دھماکے ہونے سے شبیر کی بیوی رقیہ بیگم کی موت ہو گئی۔آٹھ اگست کو پونچھ ضلع کے کرشناگھاٹی سیکٹر میں پاکستانی فوج کی جانب سے کی گئی فائرنگ اور گولہ باری میں سپاہی پون سنگھ سگرا (21) شہید ہو گئے تھے۔اس سال یکم اگست تک پاکستانی فوج کی طرف سے جنگ بندی کی خلاف ورزی کے 285 واقعات ہوئے ہیں۔ سال 2016 میں یہ اعداد و شمار 228 سے کافی کم تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کی نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کا اثر گجرات انتخابات کے نتائج میں نظر آئے گا: اکھلیش یادو 

سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو نے کہا ہے کہ نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کی وجہ سے تاجروں پر کافی برا اثر پڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسان مخالف اور تاجر مخالف پالیسیوں کی وجہ سے بی جے پی کا گراف نیچے آتا جا رہا ہے۔

گجرات میں سات انتخابات میں دو بار ووٹنگ کے فیصدی میں کمی، دونوں بار بی جے پی کو نقصان تو کانگریس کا فائدہ 

گجرات میں ہفتہ کو پہلے مرحلہ میں19ضلعوں میں کی89نشستوں پرتقریباً 68فیصدی ووٹنگ ہوئی اس بار 2012کے اسمبلی انتخابات سے تقریباً 3فیصدی ووٹنگ ہوئی۔ 2012 میں پہلے مرحلے میں19 میں سے15 اضلاع میں ووٹنگ ہوئی تھی۔

خواتین کمیشن نے زائرہ وسیم کے ساتھ ہوئی چھیڑ خانی کو بتایا انتہائی شرمناک فعل 

قومی خواتین کمیشن نے زائرہ وسیم کے ساتھ شرمناک حادثہ قرار دیا ہے ۔زائرہ وسیم نے سوشل میڈیا کے ذریعے وستارا ایئر لائنزکی فلائٹ سے دہلی سے ممبئی جانے والی پرواز میں جس طرح ہراساں کیے جانے کی بات کہی ہے وہ بھارتی تہذیب و ثقافت کے شرم کی بات ہے ۔