چنئی میں برقع پوش خواتین نےمسجدکے امام کو زندہ جلادیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 30th August 2018, 11:57 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

چنئی،30؍اگست(ایجنسی)تمل ناڈو کی راجدھانی چنئی میں حیران کرنے والا واقعہ پیش آیا ہے جہاں چندبرقع پوش خواتین نے مسجد کے امام کو زندہ جلادیاہے۔چنئی کے علاقہ تریپولین میں بڑی مسجد کے سامنے واقع دفتر میں پیرکی رات تقریباً8بجے امام مسجد سید فجرالدین بیٹھے ہوئے تھے کہ چند برقع پوش خواتین وہاں داخل ہوئیں۔

ذرائع کے مطابق ان میں سے ایک نے فجرالدین پر اچانک کیمیکل حملہ کیا اور انھیں نذرِ آتش کر دیا۔ واقعہ کو انجام دینے کے بعد وہ خواتین فرار ہو گئیں۔ پولیس کا اس سلسلے میں کہنا ہے کہ ’’پیر کی شب تقریباً 8 بجے 5 خواتین کے ساتھ ملزمہ بھی برقع پہن کر فجرالدین کے دفتر پہنچی۔ جب دیگر خواتین فجرالدین سے بات کر رہی تھیں تبھی ملزمہ خاتون نے ان کے اوپر ایک کیمیکل پھینک کر اس میں آگ لگا دی۔‘‘

پولیس مزید بتاتی ہے کہ ’’سید فجرالدین کو آگ لگانے کے بعد خاتون وہاں سے بھاگنے لگی۔ اس دوران امام کے ایک دوست نے ملزمہ کو پکڑنے کی کوشش کی لیکن وہ بچ نکلی۔‘‘اس واقعہ میں امامِ مسجد بری طرح جھلس گئے تھے جنھیں فوری طور پر اسپتال پہنچایا گیا لیکن زخموں کی تاب نہ لانے کی وجہ سے ان کا انتقال ہو گیا۔

تریپولن پولیس نے قتل کا معاملہ درج کرکے جانچ شروع کر دی ہے ۔تاہم ہنوز قصوروار خاتون کی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔ پولیس خاتون کی شناخت اور قتل کی وجہ بھی تلاش کر رہی ہے۔ اس واقعہ کی تفتیش کرنے میں مصروف پولیس ٹیم کا کہنا ہے کہ جس طرح سے واقعہ کو انجام دیا گیا اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ قتل منصوبہ بند تھا۔جانچ ٹیم میں شامل ایک پولیس اہلکار کا کہنا ہے کہ ’’جس بلڈنگ میں امام کا دفتر ہے اسی میں دکان چلانے والے 61 سالہ مانی نے واقعہ کے بعد خاتون کا پیچھا کر کے اسے پکڑ لیا تھا لیکن وہ انھیں دھکا دے کر بھاگ گئی۔ اس کے بعد مانی نے تریپولین پولیس کو واقعہ کے بارے میں مطلع کیا۔

واقعہ کی اطلاع ملتے ہی موقع پر پہنچی پولیس نے دیکھا کہ امام کے دفتر کا کچھ حصہ بھی خاکستر ہو گیا ہے۔‘‘معاملے کی جانچ کر رہے ایک افسر نے بتایا کہ جس طرح خاتون امامِ مسجد کو جلا کر پیدل بھاگی ہے، اس سے اندازہ لگایا جا رہا ہے کہ آس پاس کہیں کوئی گاڑی اس کا انتظار کر رہی ہوگی۔ یہ سب کچھ منصوبہ بند معلوم ہو رہا ہے۔ زخمی حالت میں اسپتال پہنچے سید فجرالدین کا علاج کرنے والے ڈاکٹر نے مہلوک کی حالت کے بارے میں پولیس کو بتایا کہ ان کے جسم پر پٹرول اور کیروسین کا کوئی نشان نہیں ملا ہے۔ یہ پتہ لگانے کے لئے کہ امام پر کون سا کیمیکل پھینکا گیا، امام کے کپڑوں اور جائے وقوع سے ملی کچھ چیزوں کو ٹسٹ کے لئے فورنسک لیب بھیج دیا گیا ہے اور پولیس تحقیقات میں مصروف ہوگئی ہے۔ذرائع سے ملنے والی خبر بہت زیادہ واضح نظر نہیں آرہی ہے کیوں کہ امام مسجد کے دفتر میں داخل ہونے والی تقریباً5برقع پوش خواتین کی بات سامنے آرہی ہے جس میں سے ایک نے واقعہ کو انجام دیا تووہاں موجود4خواتین کو ن تھیں اور وہ کیا کرنے آئی تھیں ؟وہ واقعہ کے بعد کہاں چلی گئیں؟۔پولیس اس معاملہ میں کیا دیگر خواتین کی تلاش کررہی ہے؟۔یہ سوالات حل طلب ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

سون بھدر معاملے میں انصاف کا مطالبہ، پرینکا گاندھی کو حراست میں رکھنے کی مخالفت میں کانگریس کا پارلیمنٹ کے احاطے میں مظاہرہ

اتر پردیش کے سون بھدر ضلع میں 10 قبائلیوں کے قتل کے معاملے میں انصاف کی طلب اور پرینکا گاندھی واڈرا کو حراست میں رکھے جانے کی مخالفت کرتے ہوئے کانگریس کے ممبران پارلیمنٹ نے پیر کو پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں مظاہرہ کیا۔

منگلورو میں ڈینگی سے ٹی وی جرنلسٹ ہلاک 

بی ٹی کے لئے ویڈیو جرنلسٹ کے طور خدمات انجام دینے والے ناگیش پاڈوکی موت کے ساتھ منگلورو میں ڈینگی بخار سے ہونے والی ہلاکتوں میں ایک او ر اضافہ ہواہے۔خیال رہے کہ اس سے قبل ڈینگی بخار میں مبتلا تین افراد کی موت واقع ہوچکی ہے۔

جنوری 19 کو ہوں گےانجمن حامئی مسلمین بھٹکل کے انتخابات؛ اسحاق شاہ بندری الیکشن کمشنر منتخب

قومی تعلیمی ادارہ انجمن حامئی مسلمین بھٹکل کے عام انتخابات اگلے سال 19 جنوری کو ہوں گے جس کے لئے آج سنیچر کو  ہوئی انتظامیہ میٹنگ میں  الیکشن کمشنر کا انتخاب عمل میں آیا ہے۔  اس بات کی تصدیق انجمن کے جنرل سکریٹری جناب صدیق اسماعیل نے کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ  آج کی میٹنگ میں ...

بھٹکلی جماعت المسلمین مینگلورو کا مستحسن اقدام : بنٹوال میں ہوئے سڑک حادثے میں شدید زخمیوں کی عیادت کرنے اور اُنہیں ہرممکن تعاون دینے جماعت کے وفد کا اسپتال دورہ

بھٹکلی  جماعت المسلمین مینگلور کے ایک وفد نے  مینگلور کے مختلف اسپتالوں کا دورہ کرتے ہو ئے  کل جمعہ کو سڑک حادثے میں ہوئے زخمی بھٹکلی لوگوں کی عیادت کی اور اُن کے رشتہ داروں سے بات چیت کرتے ہوئے جماعت کی جانب سے ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا۔

انکولہ میونسپالٹی چیف آفیسر کو ڈی سی نے لیا آڑے ہاتھ۔ کہا؛ اگر تم ایماندار ہوتے تو کٹہرے میں کھڑے نہ ہوتے

انکولہ میونسپالٹی میں ڈھنگ سے کام نہ ہونے کی شکایت ملنے پر  اُترکنڑا کے ڈپٹی کمشنر  ڈاکٹر ہریش کمار انکولہ پہنچ کر  میونسپل چیف آفسر بی پرہلاد کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ اگر تم  ایمانداری سے اپناکام انجام دے رہے ہوتے  تو اس طرح کٹہرے میں کھڑے ہونے کی نوبت نہ آتی ۔ ڈپٹی ...