مینگلور میں زچگی کے بعد خاتون کی موت۔ لاش کی آخری رسومات کے لئے مائیکے اور سسرال میں تنازعہ۔ پولیس کی مداخلت سے مسئلہ ہوا حل

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 31st August 2018, 7:46 PM | ساحلی خبریں |

منگلورو31؍اگست ( ایس او نیوز) لیڈی گوشن اسپتال میں آپریشن سے زچگی کے بعد مزید علاج کے لئے وینلاک اسپتال میں داخل کی گئی خاتون دپیکا اچاریہ کی موت نے مائیکے اور سسرال میں اس وقت ایک تنازعہ کھڑا کردیا جب لاش کو اسپتال سے اپنی تحویل میں لینے کا موقع آیا۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق دپیکا کے شوہرپرکاش اچاریہ اور اس کے گھر والوں نے لاش کو آخری رسومات ادا کرنے کے لئے مائیکے والوں کے حوالے کرنے کے لئے یہ شرط رکھی کہ جب تک اس کے جسم پر موجودزیورات انہیں واپس لوٹائے نہیں جاتے تب تک وہ لاش کو تحویل میں لینے کے کاغذات پر دستخط نہیں کرے گا۔یا پھر سسرال والے ہی آخری رسومات انجام دیں گے۔ اور اپنی شرط منوانے کے لئے پرکاش اچانک لاپتہ ہوگیا۔

کہاجاتا ہے کہ ساڑھے سات مہینے کی حاملہ دپیکا خصوصی رسم ادا کرنے کے بعد 23اگست کو زچگی کے لئے موڈبیدری میں واقع اپنے ماں باپ کے گھر آئی تھی۔ پھر اچانک حمل سے متعلقہ مسئلہ پیداہوجانے پر 25اگست کوموڈبیدری کے ایک نجی اسپتال میں اسے داخل کیا گیا۔ وہاں سے اسی دن اس کو لیڈی گوشن اسپتال میں منتقل کیا گیاجہاں اس کی حالت دیکھتے ہوئے سیزیرین آپریشن کے ذریعے ایک مرد بچے کی ڈیلیوری کی گئی، اور مزید علاج کے لئے دیپکا کو وینلاک اسپتال میں منتقل کیا گیا۔ 28اگست کو وینلاک اسپتال میں ہی دیپکا کی موت واقع ہوگئی۔اس کے ساتھ ہی مائیکے اور سسرال والوں کے بیچ تنازعہ کھڑا ہوگیا۔ دونوں طرف کے حامی اسپتال میں جمع ہوگئے اور زبردست تکرار شروع ہوگئی۔

پانڈیشور پولیس کو جب اس واقعے کا علم ہواتو اس نے اسپتال پہنچ کرسب سے پہلے وہاں پر موجود ہجوم کو منتشر کیا ۔پھر دونوں خاندانوں کے کچھ ذمہ داروں کو پولیس اسٹیشن لے جاکر سمجھانے بجھانے کا کام کیا۔پانڈیشور پولیس انسپکٹر سائی ناتھ نے بتایا کہ اس مسئلے کو باہمی گفت و شنید سے حل کرلیاگیا اور اس کے بعد29اگست کی شام کو دپیکا کی لاش آخری رسومات کے لئے اس کے سسرال والوں کے حوالے کی گئی۔

دیپکا کے گھر والوں نے بتایا ہے کہ دپیکا نے جس بچے کو جنم دیاتھا وہ فی الحال اسپتال کے آئی سی یو میں زیر علاج ہے۔ اور دپیکا کے شوہر نے بچے کو اپنی تحویل میں لینے کا فیصلہ کیا ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو:آر ایس ایس پرچارک تربیتی کیمپ میں امیت شاہ کی شرکت۔ سرخ دہشت گردی ، رام مندر، سبریملا اور انتخابات پر ہوئی خاص بات چیت

ملک کی مختلف ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کی مصروفیت کے باوجود بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے منگلورو میں آر ایس ایس ’ پرچارکوں‘ کے لئے منعقدہ 6 روزہ تربیتی کیمپ کے اختتام سے ایک دن پہلے ’سنگھ نکیتن‘ میں پہنچ نے کے لئے وقت نکالااور تربیتی کیمپ کے شرکاء سے خطاب کیا۔

بھٹکل میں والوو بس کی درخت سے ٹکر؛ ٹہنی گرکر بس کے اندر گھس گئی؛ایک کی موقع پر موت

مینگلور سے مسافروں کو بھر کر بھٹکل بس اسٹائنڈ پر اُتارنے کے بعد والوو بس کو  ڈپو میں لے جانے کے دوران  ساگر روڈ پر  واقع ایک درخت کی ٹہنی سے ٹکراجانے کے نتیجے میں  بس کنڈیکٹر کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت پنچیّا مٹاپتی (35) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔

بھٹکل : شمس مونٹسری کے معصوم بچے چاچا نہرو کے بھیس میں :طلبا کی تخلیقی صلاحیتوں کو پروان چڑھانے نمائش اور بازار کا اہتمام

14نومبر بھارت کے پہلے وزیرا عظم جواہر لال نہرو کے یوم پیدائش کی مناسبت سے تربیت ایجوکیشن سوسائٹی کی نیو شمس مونٹسری اسکول میں معصوم اور چھوٹے چھوٹے بچے چاچا نہرو کی ٹوپی اور لباس میں ملبوس ہوتے ہوئے انوکھے انداز میں پروگرام منایا۔

کل جمعہ کو کاروار میں ہوگا جائیداد کی رجسٹریشن اور اسٹامپنگ سہولیات سے لیس کاویری آن لائن خدمات کا افتتاح

رجسٹریشن اینڈ اسٹامپ محکمہ کے عوامی معاون منصوبے ’’کاویری آن لائن خدمات ‘‘ کا 16نومبر بروز جمعہ کو باقاعدگی کے ساتھ افتتاح کئے جانے کا ضلع نگراں کاروزیر اور وزیر برائے تحصیل آر وی دیش پانڈے نے اعلان کیا۔

 ضلع ہیسکام محکمہ کی جانب سے 17نومبر کو  کاروار اور ہوناور میں ہیسکام عدالت کا قیام

اتر کنڑا ضلع محکمہ ہیسکام کی جانب سے 17نومبر کو کاروار اور ہوناور معاون علاقہ میں ہیسکام گاہکوں کے لئے کمی بیشی اور ان کی شکایات کی سماعت کے لئے عدالت کا اہتمام کئے جانےکی محکمہ کی طرف سے جاری کردہ پریس ریلیز میں جانکاری دی گئی ہے۔

کاروار: بحریہ ہفتہ کی مناسبت سے بحریہ اڈے کے زیراہتمام اسکولی بچوں کے لئے پینٹنگ مقابلہ کا انعقاد

ہندوستانی بحریہ کے زیراہتمام منائے جارہے ’’بحریہ ہفتہ 2018‘‘ کی مناسبت سے بحریہ اڈے کاروار کی جانب سے 11نومبر 2018کو دئوئیدنا سیوا سنگھ ہال میں اسکول بچوں کے لئے منعقد کئے گئے  ڈرائنگ اور پینٹنگ مقابلہ  میں 47اسکولوں کے 280طلبا شریک ہوئے۔