مغربی بنگال: بی جے پی کی رتھ یاترا سے پہلے امت شاہ کے پوسٹر پھاڑے گئے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th December 2018, 9:21 PM | ملکی خبریں |

کولکاتہ ،06؍ دسمبر (ایس او نیوز /آئی این ایس انڈیا) مغربی بنگال میں بی جے پی کی رتھ یاترا کو امت شاہ کی جانب سے ہری جھنڈی دکھائے جانے سے پہلے پارٹی کے پوسٹر بینر کچھ شرارتی عناصر کی جانب سے پھاڑ ے جانے کا دعوی کیا گیا ہے۔ یہ دعوی بی جے پی کی ریاستی یونٹ کی جانب سے کیا گیا ہے۔پارٹی کا کہنا ہے کہ پوسٹر بینر پھاڑ ے جانے کا واقعہ کوچ بہار میں ہوا ہے۔ رتھ یاترا کے لئے کوچ بہار کو ماتھابھانگا اور دنہاٹا کو جوڑنے والے ہائی وے پر کئی جگہ بی جے پی کی جانب سے استقبال کے لیے دروازے بنائے گئے۔بدھ کی صبح بی جے پی کارکنوں نے گھگھماری پر ایسے ہی ایک دروازے کوٹوٹا پایا۔امت شاہ کی تصویر والا ایک فلیکس بورڈ بھی پھٹا ہوا پایا گیا۔بی جے پی کے ایک مقامی کارکن چین داس نے بتایاکہ گزشتہ رات کچھ شرارتی عناصر نے ہمارے پوسٹروں کو پھاڑا ہمیں شک ہے کہ یہ کارنامہ ٹی ایم سی کے غنڈوں کاہے۔اگر وہ سمجھتے ہیں کہ وہ ہمیں ایسی حرکتوں سے ڈرا سکتے ہیں تو ہم انہیں بتانا چاہتے ہیں کہ ہم امت شاہ جی کی رتھ یاترا میں بڑی تعداد میں حصہ لیں گے۔کوچ بہار میں امت شاہ کی رتھ یاترا سے کچھ گھنٹے پہلے پارٹی کے بنگال معاملات کے انچارج کیلاش وجے ورگی نے بتایا کہ ابھی تک اس پروگرام کے لئے ممتا بنرجی کے انتظامیہ سے ضروری اجازت نہیں ملی ہے۔وجے ورگی کے مطابق ریاست کے چیف سکریٹری اور پولیس ڈائریکٹر جنرل کو کئی بار لکھنے کے باوجود ابھی تک کوئی جواب نہیں ملا ہے۔بی جے پی نے کلکتہ ہائی کورٹ میں عرضی داخل کرکے اس معاملے میں مداخلت کی فریاد کی ہے۔بی جے پی کی منصوبہ بندی کے مطابق امت شاہ ریاست میں تین مختلف رتھوں کو روانہ کریں گے جو ریاست کے تمام 42 لوک سبھا حلقوں سے گزریں گے۔شاہ پہلے دور کی شروعات شمالی بنگال کے کوچ بہار سے 7 دسمبر کو کریں گے۔دوسرا دور 9 دسمبر کو جنوبی 24 پرگنہ کے ساگر سے شروع ہوگا۔اسی طرح تیسرے راؤنڈ کی شروعات 14 دسمبر کو بیربھوم کے تاراپیٹھ سے ہوگی۔ایک ماہ تک چلنے والی اس یاترامیں بی جے پی کے کئی اسٹار اسپیکر حصہ لیں گے۔اس دوران آسام کے وزیر اعلی سربانند سونووال، اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ اور تریپورہ کے وزیر اعلی بپلب دیو بھی شامل ہو سکتے ہیں۔ تینوں رتھ یاترا کا اختتام کولکاتہ میں جنوری میں ہوگا۔پارٹی کو امید ہے کہ اختتام پر وزیر اعظم نریندر مودی ریلی سے خطاب کر سکتے ہیں۔بی جے پی کے بنگال صدر دلیپ گھوش نے کہاکہ ہماری رتھ یاترا بہت کامیاب ہوگی کیونکہ ٹی ایم سی خود ہی اس کی وجہ ہے۔انہوں نے اسے کامیاب بنانے کا عزم کیا ہے۔ان کی مسلسل رکاوٹیں ڈالنے سے لوگ ہماری ریلی کو لے کر زیادہ حوصلہ افزائی ہیں۔کچھ بھی ہو ہم اپنے یااترا کا آغاز کریں گے اور اسے طے شدہ پروگرام کے مطابق انجام تک پہنچائیں گے۔وہیں ٹی ایم سی لیڈر مدن مترا نے بی جے پی کے پروگرام کو پارٹی کی الوداعی یاتراقرار دیا۔مترا نے کہاکہ یقینی طور پر یہ صدی کا سب سے بڑا فلاپ شو ثابت ہوگا۔

ایک نظر اس پر بھی

مودی کا زوال یا راہل کا عروج ؟ فیصلہ منگل کو

ومبر اور دسمبر میں کئی مرحلوں میں5 ریاستوں کے اسمبلی انتخابات کے لئے ووٹ ڈالنے کا عمل پورا ہو چکا ہے۔ ان میں سے مدھیہ پردیش، راجستھان اور چھتیس گڑھ میں بی جے پی اقتدار میں ہے۔

ہندوستان کو آگ میں جھونکنے کی کوششیں تیز رام لیلا میدان میں دھرم سبھا کا انعقاد،مندر بنانے کا کیا عزم، بھگوا کپڑوں میں ملبوس رام بھکتوں کا جم غفیر

ایودھیا میں دھرم سبھا کے بعد دہلی کے رام لیلا میدان میں دھرم سبھا کے انعقاد سے سنگھ اور اس کی ذیلی تنظیموں نے واضح کر دیا ہے کہ آئندہ سال ہونے والے عام انتخابات سے پہلے رام مندر تعمیر کے مدے کو اتنا بڑا کر کے پیش کیا جائے کہ رافیل، نوٹ بندی، جی ایس ٹی، بے روزگاری، کسانوں کے مسائل ...

ڈی ایم کے سربراہ اسٹالن سونیا اور راہل سے ملے

دہلی میں اپوزیشن پارٹیوں کے اجلاس سے ایک دن پہلے ڈی ایم صدر ایم کے اسٹالن نے کانگریس صدر راہل گاندھی اور یو پی اے کی صدر سونیا گاندھی سے اتوار کو ملاقات کی اور کئی مسائل پر تبادلہ خیال کیا۔