پارلیمنٹ کے مانسون سیشن سے پہلے کانگریس نے کہا: بندوق سے نہیں حل ہو سکتا کشمیر مسئلہ

Source: S.O. News Service | Published on 16th July 2017, 10:23 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،16/جولائی (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)پارلیمنٹ کے پیر سے شروع ہو رہے مانسون سیشن سے پہلے چین کے ساتھ سکم سیکٹر میں کشیدگی اور کشمیر معاملے کا ذکر کرتے ہوئے کانگریس نے کہا کہ پارلیمنٹ میں ان موضوعات پر بحث ہونی چاہیے۔کانگریس نے اس بات پر زور دیا کہ علاقائی سالمیت اور قومی سلامتی کے مسائل پر پارٹی حکومت کے ساتھ کھڑی ہے۔حکومت نے سیشن سے پہلے کل جماعتی میٹنگ بلائی اور ایوان کی کارروائی آسان طریقے سے چلانے کے سلسلہ میں تعاون مانگا۔کل جماعتی میٹنگ میں وزیر اعظم نریندر مودی، پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار، مرکزی وزیر ارون جیٹلی، راجیہ سبھا میں حزب اختلاف کے لیڈر غلام نبی آزاد،سی پی آئی کے جنرل سکریٹری سیتا رام یچوری،این سی پی کے شرد پوار جیسے لیڈر موجود تھے۔ترنمول کانگریس، جے ڈی یو سے کوئی لیڈر موجود نہیں تھا۔کل جماعتی میٹنگ کے بعد کانگریس نے کہا کہ بندوق کشمیر میں کشیدگی ختم کرنے کا راستہ نہیں ہو سکتا ہے اور وہ دیگر اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ کل سے شروع ہو رہے پارلیمنٹ سیشن کے دوران اس مسئلے کو اٹھائے گی۔کانگریس کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد نے کہا کہ انہوں نے حکومت کو بتایا ہے کہ داخلی اور بیرونی سیکورٹی سے متعلق کچھ حساس مسائل ہیں اور پارلیمنٹ سیشن کے دوران ان پر بحث کیے جانے کی ضرورت ہے۔کانگریس لیڈر نے کہا کہ حکومت نے کشمیر میں بات چیت کے تمام دروازے بند کر دیئے ہیں،جس سے سیاسی گھٹن کی حالت بنی ہے۔انہوں نے کہاکہ بندوق سے کشمیر میں کشیدگی کا حل نہیں نکالا جا سکتا ہے۔اگر حکومت سوچتی ہے کہ کشمیر میں کشیدگی ختم کرنے کا واحد راستہ بندوق ہے،تو پھر ہم ان کے ساتھ نہیں ہیں۔راجیہ سبھا میں حزب اختلاف کے لیڈر نے کہا کہ پہلے جب بھی کشمیر کا مسئلہ اٹھا، اس میں پاکستان کے بارے میں بحث ہوئی، لیکن اب ہم چین کے بارے میں پڑھ اور سن رہے ہیں۔آزاد نے کہا کہ سکم سیکٹر میں بھوٹان کے پاس چین کے ساتھ جاری تعطل کے مسئلہ پر بھی بحث ہونی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ وہ قومی سلامتی سے جڑے مسائل پر حکومت کے ساتھ ہیں، لیکن داخلی اور بیرونی سیکورٹی کے کچھ حساس مسائل ہیں اور ان پر سیشن کے دوران بحث کئے جانے کی ضرورت ہے۔اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ قومی سلامتی سے منسلک موضوعات کے علاوہ اپوزیشن مدھیہ پردیش میں کسانوں سے منسلک مسائل، جی ایس ٹی سے متاثر ٹیکسٹائل کی صنعت اور ملازمین کے مسائل، آسام میں سیلاب کی صورتحال جیسے مسائل پر بھی بحث کرنا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو بحث کے لیے آگے آنا چاہیے اور اپوزیشن کی بات کو سننا چاہیے۔آزاد نے کہا کہ وہ پارلیمنٹ کی کارروائی میں رکاوٹ ڈالنے کے حق میں نہیں ہیں، لیکن حکومت جب ان کے واجب مطالبات پر توجہ نہیں دیتی ہے، پھر وہ اس کے لیے مجبور ہو جاتے ہیں۔
 

ایک نظر اس پر بھی

لو جہاد ملک کے لئے بڑا خطرہ: وی ایچ پی 

اپنے متانازعہ بیان سے مشہور وشو ہندو پریشد نے آج پھر لوجہاد کا شوشہ چھوڑتے ہوئے کہا کہ لو جہاد ملک کی سلامتی کے سامنے بڑا خطرہ ہے اور سیکولر برادری کو جہادیوں کے اس غلط کارروائیوں پر پردہ نہیں ڈالنا چاہئے۔

سی ایم شیوراج کا اعلان، مدھیہ پردیش میں نہیں دکھائی جائے گی ’پدماوتی‘فلم

سنجے لیلا بھنسالی کی فلم ’پدماوتی‘ کی ریلیز ڈیٹ اگرچہ ٹل گئی ہو لیکن اس فلم کے ساتھ تنازعہ ختم ہونے کا نام نہیں لے رہاہے اب وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ نے اعلان کیا ہے کہ مدھیہ پردیش میں ’پدماوتی‘فلم نہیں دکھائی جائے گی۔

بی جے پی سورج پال امّوکو بھیجا وجہ بتاؤ نوٹس، دیپکا اور بھنسالی کا سر قلم کرنے پر کیا تھا 10کروڑ کا اعلان

بی جے پی نے ہریانہ بی جے پی کے چیف میڈیا کوآرڈنیٹر کنور سورج پال امو کو وجہ بتاو نوٹس جاری کیا ہے۔امّو نے دیپکا پادکون اور سنجے لیلا بھنسالی کا سر کاٹ کر لانے والے کو دس کروڑ کا انعام دینے کا اعلان کیا تھا۔