یڈیورپا اور ایشورپا کے درمیان جنگ دوبارہ چھڑ گئی، سنگولی راینابرگیڈ کی سرگرمیاں جاری رکھنے ایشورپا کا اعلان

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 2:53 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) ریاستی بی جے پی صدر بی ایس یڈیورپااور کونسل کے اپوزیشن لیڈر کے ایس ایشورپا کے درمیان اختلافات دوبارہ سراٹھانے لگے ہیں۔یڈیورپا سے ناراض لیڈروں کوایشورپا نے دوبارہ مدعو کرتے ہوئے 27مارچ کو ایک میٹنگ طلب کی ہے، اس میٹنگ کے متعلق ایشورپا نے اخباری نمائندوں کو بتایاکہ یہ میٹنگ کسی کے خلاف  نہیں بلکہ پارٹی کو مضبوط کرنے کے مقصد کے تحت بلائی گئی ہے جس میں پارٹی کے وفادار کارکن حصہ لیں گے۔ آج شہر کی ایک نجی ہوٹل میں سنگولی راینا برگیڈ کے لیڈر مکڑپا، وینکٹیش مورتی اور دیگر کی طرف سے بلائی گئی میٹنگ کے بعد اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایشورپا نے یڈیورپا کو راست نشانہ بنایا اور کہاکہ وہ کسی سے ڈرنے والے نہیں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پارٹی اعلیٰ کمان کو انہوں نے پہلے ہی باور کروادیا ہے کہ پسماندہ طبقات کو منظم کرنے کا ان کا مقصد کیا ہے۔ اس کے باوجود بھی غیر ضروری طور پر اگر انہیں الجھایا گیا تو نتیجہ اچھا نہیں ہوگا۔انہوں نے کہاکہ ریاست میں پارٹی کو مضبوط کرنے کے مقصد کے تحت اس طرح کی میٹنگوں کا اہتمام کیاجارہاہے۔اسے قطعاً پارٹی مخالف سرگرمیوں سے تعبیر نہیں کیا جاسکتا۔ یڈیورپا کا نام لئے بغیر انہوں نے کہاکہ ریاست کی قیادت کے طریقہئ کار سے وہ پوری طرح مطمئن نہیں ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مرکزی قیادت کی ہدایت کے مطابق10 فروری کو ایک میٹنگ طلب کرکے یڈیورپا کو ریاست میں پارٹی کی پیش رفت کے بارے میں جائزہ لینا تھا، لیکن ایساکچھ بھی نہیں ہوا۔اس سلسلے میں وہ پارٹی کے قومی صدر امیت شا اور دیگر قائدین کو مطلع کریں گے۔انہوں نے کہاکہ امیت شا نے ریاست کے چار لیڈروں کو یہ ذمہ داری سونپی تھی کہ پارٹی کی پیش رفت پر نظر رکھی جائے، لیکن اب تک اس سلسلے میں ایک بھی میٹنگ طلب نہیں کی گئی۔ انہوں نے کہاکہ پارٹی کے وفادار کارکنوں کو مناسب مقام اور مرتبہ دینے کے بارے میں انہوں نے بار ہانمائندگی کی،لیکن یڈیورپا نے اس پر اب تک کوئی توجہ نہیں دی۔ایشورپا نے کہا کہ آنے والے دنوں میں سنگولی راینا برگیڈ کو ریاست گیر پیمانے پر بڑھاوا دیا جائے گا، سبھی 224اسمبلی حلقوں میں سنگولی راینا برگیڈ کو مضبوط کیاجائے گا اور ہر حلقہ میں برگیڈ کے 25 اراکین کا اندراج کیا جائیگا۔

ایک نظر اس پر بھی

لنگایت طبقہ ایک علیحدہ مذہب: ایم بی پاٹل

ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ایم بی پاٹل نے لنگایت طبقے کو علیحدہ مذہب کا درجہ دئے جانے کے مطالبہ کی حمایت کرتے ہوئے اس سلسلے میں اڈپی کے پیجاور مٹھ کے سربراہ وشویشور تیرتھا سوامی کے اس بیان کی مذمت کی ہے جس میں انہوں نے کہاہے کہ ہندومذہب کے ٹکڑے نہ کئے جائیں۔ اخباری نمائندوں سے ...

کرناٹک کے عازمین حج کا پہلا قافلہ بعافیت مدینہ پہنچا

کل منگلور سے سوئے حرم روانہ ہونے والے عازمین حج کے پہلے قافلے کی بعافیت مدینہ منورہ آمد ہوئی، منگلور سے اڑان بھرنے والے قافلے کا سعودی حکام اور ہندوستانی حج مشن کے افسران نے مدینہ کے شاہ عبدالعزیز ایر پورٹ پر استقبال کیا۔ ان عازمین میں گوا، کنٹا، بھٹکل، داونگیرے، چکمگلور، ...

ریاست میں ایک بار پھر سنگین خشک سالی کے آثار نمایاں 

پچھلے ہفتے ریاست کے شمالی اور ساحلی علاقوں میں دو دنوں تک موسلادھار بارش کے بعد ایک بار پھر ریاست میں مانسون کمزور پڑتا نظر آ رہا ہے، محکمہ  موسمیات کے ڈائرکٹر ڈاکٹر جی ایس سرینواس ریڈی نے کہاکہ یہ توقع کی جارہی تھی کہ اگلے آٹھ دس دنوں تک مانسون کی بارشوں کا سلسلہ جاری رہے ...

پندرہ اگست تک 125اندرا کینٹینوں کی تکمیل مشکوک

وزیر اعلیٰ سدرامیا اس بات کیلئے کوشاں ہیں کہ برہت بنگلور مہانگر پالیکے کی طرف سے شہر کے تمام 198وارڈوں میں اندرا کینٹین کی شروعات کی جائے اور یہاں پر غریبوں کو پانچ روپیوں میں ناشتہ اور دس روپیوں میں دوپہر اور رات کا کھانا مہیا کرایا جائے۔اس کیلئے بی بی ایم پی کی طرف سے تمام ...

مودی نے ملک کے غریبوں کیلئے کچھ نہیں کیا: سدرامیا

وزیر اعلیٰ سدرامیا نے وزیراعظم نریندر مودی پر نکتہ چینی کرتے ہوئے کہاکہ پچھلے تین سال کے دوران مودی نے اپنی بڑھائی کے علاوہ ملک کے عوام بالخصوص غریبوں کیلئے کوئی سہولت فراہم نہیں کی ہے، پھر بھی یہ ڈھنڈورا پیٹا جارہا ہے کہ مودی نے ملک کیلئے کیا کچھ نہیں کیا؟۔ مودی اور ان کے ...

کاویری کا پانی تالابوں میں بہانے کا مطالبہ،ہنسور سے بنگلور تک پدیاترا کرنے کمار سوامی کی دھمکی

سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی جنتادل (ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاستی حکومت کو متنبہ کیا ہے کہ ایک ہفتے کے اندر کرشنا راجہ ساگر ڈیم سے کاویری کا پانی اگر تالابوں میں بہایا نہیں گیاتو وہ ہنسور سے بنگلور تک احتجاجی پدیاترا کریں گے۔ آج میسور میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ...