تلنگانہ سمیت ۵ ریاستوں میں انتخابات کی تاریخوں کا اعلان؛ اویسی نے کیا فیصلہ کا خیر مقدم

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 7th October 2018, 1:33 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

حیدر  آباد/7اکتوبر (ایس او نیوز) الیکشن کمیشن نے تلنگانہ، مدھیہ پردیش، راجستھان، چھتیس گڑھ اورمیزورم میں آئندہ اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کا اعلان کردیا ہے۔ کمیشن نے چھتیس گڑھ میں دو مرحلوں میں الیکشن کرانے کا اعلان کیا ہے۔ حیدرآباد کے ممبرپارلیمنٹ اور آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے سربراہ اسدالدین اویسی نے اس کا استقبال کرتے ہوئے بی جے پی پرتنقید کی ہے۔

اسدالدین اویسی نے کہا کہ بی جے پی دیگر موضوعات سے توجہ ہٹانے کے لئے مندرکے مدعے پرالیکشن میں ایک بار پھرپولرائزیشن کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ تلنگانہ اسمبلی الیکشن کے بعد ہم عظیم اتحاد (مہا گٹھ بندھن) کے بارے میں فیصلہ کریں گے۔

اس کے ساتھ ہی اویسی نے واضح الفاظ میں یہ بھی کہا کہ صرف کانگریس یا بی جے پی ہی  متبادل نہیں ہیں، ان کےعلاوہ بھی کئی متبادل ہیں۔  حیدرآباد کے ممبرپارلیمنٹ نے یہ بھی کہا کہ نامزدگی داخل کرنے میں بہت وقت ہے، اس لئے کچھ وقت بعد یہ فیصلہ کریں گے کہ اے آئی ایم آئی ایم کتنی سیٹوں پرالیکشن لڑے گی۔ واضح رہے کہ حیدرآباد میں اے آئی ایم آئی ایم کے ابھی صرف 7 ممبراسمبلی ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

تلنگانہ میں 19فروری کو کابینہ کی توسیع

تلنگانہ کے وزیر اعلی کے چندرشیکھر راؤ دوبارہ اقتدار میں آنے کے دو ماہ کے بعد اپنی کابینہ میں توسیع کرنے کی تیاری میں ہے اور ساری بحث اب اس بات پر ٹک گئی ہے کہ اس میں کن لوگوں کو شامل کیا جائے گا۔

بھٹکل میں مجلس اصلاح وتنظیم کی جانب سے پلوامہ دہشت گردانہ حملہ کی کڑی مذمت: تحصیلدار کی معرفت وزیراعظم کو میمورنڈم ؛کڑی کارروائی کا مطالبہ

کشمیر کے پلوامہ میں دہشت گردانہ حملے کی کڑی مذمت کرتے ہوئے مجلس اصلاح وتنظیم بھٹکل نے تحصیلدار کی معرفت وزیر اعظم نریندر مودی کو اپیل سونپتے ہوئے دہشت گردی کا کرار ا جواب دینے کا مطالبہ کیا۔

بھٹکل: شرالی میں ہائی وے کی توسیع کے دوران ہنگامہ؛ پولس کی لی گئی مدد؛ عوامی مخالفت نظرانداز؛ 30میٹرکی ہی توسیع کے ساتھ کام شروع

شرالی میں قومی شاہراہ کی تعمیر 45میٹر کی توسیع کے ساتھ ہی کی جائے ، کسی حال میں بھی توسیع کو 30میٹر تک کم کرنے نہیں دیں گے۔  مقامی  عوام کی سخت مخالفت کے باوجود ضلع انتطامیہ بدھ کو 30 میٹر کی توسیع کے ساتھ شاہراہ تعمیری کام کی شروعات کی۔