اتر پردیش بلدیاتی انتخابات میں EVM کی دھاندلی؛ بیلٹ پیپرکے نظام کو دوبارہ لاگو کرنے ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 3rd December 2017, 8:05 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کالی کٹ 3/ڈسمبر ( پریس ریلیز/ایس اونیوز) سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا کے قومی صدر اے سعید نے اپنے اخباری اعلامیہ میں EVM ووٹنگ نظام کے تعلق سے اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اترپردیش کے حالیہ بلدیاتی انتخابات کے بعد EVM ووٹنگ مشین کے تعلق سے واضح طور پر اس حقیقت کا پتہ چل چکا ہے کہ کس طرح EVM کا استعمال ناقابل اعتماد ہے۔ بی جے پی اس جگہ ہی کامیاب ہوئی ہے جہاں EVM کا استعمال کیا گیا ہے اور جن جگہوں میں بیلیٹ پیپر کے نظام کا استعمال کیا گیا ہے وہاں بی جے پی بری طرح ہاری ہے۔

ایس ڈی پی آئی قومی صدر اے سعید نے اس بات کی طرف خصوصی نشاندہی کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایس ڈی پی آئی سمیت دیگر کئی سیاسی پارٹیاں ایک عرصہ سے EVMکے خلاف اعتراضات اور شکایات درج کرتی رہی ہیں  اور الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ EVMکو ترک کرکے بیلٹ پیپر سسٹم سے انتخابات کروائے۔ سیاسی پارٹیوں اور عوام کے مسلسل اعتراضات کے باوجود الیکشن کمیشن نے اتر پردیش میں EVM کا استعمال کیا ہے جس سے یہ بات صاف ثابت ہوچکی ہے کہ EVM نظام قابل اعتماد نہیں ہے اوراس میں دھاندلی اور دھوکہ دہی کرنے کے صد فیصد امکانات موجود ہے۔ الیکشن کمیشن کو چاہئے کہ وہ اپنی غفلت اور منافقت پر فوری طور پر ملک کے عوام کے سامنے معافی مانگے۔  اے سعید نے اس بات کی طرف توجہ دلاتے ہوئے کہا ہے کہ ایس ڈی پی آئی دیگر پارٹیوں نے الیکشن کمیشن سے کئی مرتبہ مطالبہ کیا ہے کہ وہ انتخابات میں EVM نظام کو ترک کر بیلٹ پیپر نظام کا استعمال کرے۔ تمام ترقی یافتہ ملک نے بھی EVMکے غلط استعمال ، دھاندلیوں اور ہیکنگ کرنے کو مدنظر رکھتے ہوئے EVMکا استعمال ترک کردیا ہے۔ ہمارے سامنے کئی ایسی مثالیں موجود ہیں  جب بھی ووٹر کسی دوسرے پارٹیوں کے نشان پر بٹن دباتا ہے تو بی جے پی کے کمل نشان کا لائٹ سلگتا ہے اور بی جے پی کو ووٹ چلا جاتا ہے۔ مدھیہ پردیش میں خو د ریاستی الیکشن کمشنر کے سامنے EVM میں اس طرح ہوتے ہوئے دیکھا گیا ہے۔ ان تمام خرابیوں اور ثبوت کے باوجود الیکشن کمیشن نے EVM کا استعمال کیا ہے جو ناقابل معافی عمل ہے۔ اتر پردیش کے نتائج کے بعد یہ بات کھل کرسامنے آگئی ہے کہ الیکشن کمیشن بی جے پی کی کٹھ پتلی ہے اور دھاندلیوں میں برابرکی شریک ہے۔  اے سعید نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ بی جے پی انتخابات میں دھاندلیوں کے ذریعے جمہوریت کا خاتمہ کررہی ہے اور الیکشن کمیشن بھی اس سازش اور مجرمانہ کارروائیوں میں برابر کی شریک ہے جو ملک کے ساتھ غداری کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور الیکشن کمیشن کو اس طرح کی دھوکہ دہی کے لیے قانون کے کٹہرے میں کھڑا کیا جانا چاہئے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ڈیزل-پیٹرول کی قیمتیں اب تک کی سب سے زیادہ

ڈیزل اور پیٹرول کی لگاتار قیمتیں بڑھ رہی ہیں اور اب وہ اب تک کی سب سے زیادہ ہو چکی ہیں۔ کانگریس نے ڈیزل اور پٹرول کی قیمت پانچ سال میں سب سے اونچی سطح تک پہنچنے پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت کو ایندھن سے ہونے والی کمائی کا استعمال الیکشن جیتنے اور حکومتیں بنانے کے ...

2019 کے لیے اپوزیشن کی ورزش شروع، بہار میں بہار لیکن یوپی ڈالے گا پی ایم مودی کی راہ میں روڑا

کرناٹک میں55گھنٹے سے بھی زیادہ چلے سیاسی ڈرامہ کے بعد آخر کار یدورپا کو وزیر اعلیٰ کے عہدے سے استعفیٰ دیناپڑا۔اب کانگریس کی حمایت سے جے ڈی ایس کی حکومت بنے گی اور کمارسوامی وزیر اعلی کی کرسی پر بیٹھیں گے۔

راجناتھ کا ہیلی کاپٹر اتارنے کے لیے پہلے 26گھنٹے کے لیے کاٹی گئی بجلی، ہنگامے کے بعدسپلائی بحال

مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کے ہیلی کاپٹر کی لینڈنگ کرنے کے لیے ستنا کے مقامی انتظامیہ نے تقریباََ20دیہات کی بجلی 26گھنٹے کے لیے کاٹ دی۔ستنا میں اس وقت شدید گرمی پڑ رہی ہے اور وہاں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت42ڈگری سینٹی گریڈ ہے۔

اداکار پرکاش راج نے پی ایم مودی پر کسا طنز،56 انچ بھول جائیے، 55گھنٹے بھی نہیں سنبھالاجاسکا کرناٹک 

کرناٹک میں محض ڈھائی دن پرانی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)کی حکومت ہفتہ (19 مئی)کی شام گر گئی۔وزیر اعلی بی ایس یدی یورپا نے یقین نہ کا سامنا کئے بغیر ہی اسمبلی ٹیبل پر اپنے استعفی کا اعلان کر دیا۔

اناملائی دوبارہ چکمگلور کے ایس پی مقرر

بی ایس یڈی یورپا کے وزیر اعلیٰ بننے کے بعد رام نگرم ضلع کے ایس پی کی حیثیت سے تبادلہ کردئے گئے چکمگلور ضلع کے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس کے اناملائی کو پھر سے چکمگلور کے ایس پی کے طور پرتبادلہ کیا گیاہے۔