امن کے لئے یو این ایلچی ریاض سے علاقائی دورے کا آغاز کریں گے

Source: S.O. News Service | Published on 7th May 2017, 11:18 PM | خلیجی خبریں |

ریاض7مئی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)یمن کے لئے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد خطے کے ملکوں کا از سر نو دورہ کر رہے ہیں جس کا مقصد یمن کے حوالے سے معطل شدہ امن مذاکرات کے عمل کو دوبارہ شروع کرنا ہے۔ یہ امن عمل گذشتہ برس کے اواخر سے تعطل کا شکار ہے۔یمنی ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں ولدالشیخ احمدسعودی عرب کے صدرمقام ریاض میں یمنی اور سعودی حکام سے ملاقاتیں کریں گے۔یو این ایلچی کے قریبی ذرائع نے بتایا کہ رمضان المبارک کے دوران مشاورت کا نیا سلسلہ شروع کرانے کی انتہائی سنجیدہ کوششیں کی جا رہی ہیں۔ متعلقہ فریق اس مشاورتی عمل سے یہ امید لگائے بیٹھے ہیں کہ یہ سارا عمل امن معاہدہ پر دستخط کا پیش خیمہ ثابت ہوگا۔ایک ملتی جلتی پیش رفت میں یمنی حکومت کے سربراہ احمد عبید بن دغر نے روس سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ باغی ملیشیا پر دباؤ بڑھائیں جبکہ دوسری جانب یو این ایلچی اسماعیل ولد الشیخ احمد نے معطل شدہ یمن امن مذکرات کا سلسلہ دوبارہ شروع کرانے کی غرض سے خطے کے ملکوں سے رابطے کا نیا دور شروع کرنے والے ہیں۔اس سلسلے میں بن دغر نے سعودی عرب میں روسی سفیر سے ملاقات کی تاکہ یمنی بحران کا حل تلاش کیا جا سکے۔ انہوں نے ماسکو پر زور دیا کہ وہ باغی ملیشیا کو یمنی شہریوں کا خون بہانے سے جیسے اقدامات سے روکنے کے لئے اپنا رسوخ استعمال کریں۔درایں اثنا روسی سفیر نے یمن کی آئینی حکومت کے صدر عبد منصور ربہ کو بتایا کہ ان ملک انہیں ہر طرح کی حمایت فراہم کرے گا۔ انہوں نے وزیر اعظم بن دغر کو روس کی اس خواہش سے آگاہ کیا ہے کہ ماسکو یمنی مذاکرات کے سلسلے کو پرامن ماحول میں طے شدہ اصولوں کے مطابق جاری رکھنے کاخواہاں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بحرین : 24 شیعہ افراد کو دہشت گرد گروپ تشکیل دینے پر جیل کی سزائیں ، شہریت منسوخ

بحرین میں ایک عدالت نے 24 شیعہ افراد کو ایک دہشت گرد گروپ تشکیل دینے اور تخریبی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے الزامات میں قصور وار قرار دے کر مختلف مدت کی قید کی سزائیں سنائی ہے اور ان تمام کی بحرین کی شہریت منسوخ کردی ہے۔

عسیر میں چیک پوسٹ پر فائرنگ سے چار سعودی سیکیورٹی اہلکار شہید

سعودی عرب میں علاقے عسیر میں چیک پوسٹ پر فائرنگ کے نتیجے میں چار سکیورٹی اہلکار شہید اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔ حملے کے وقت پانچ اہلکار ڈیوٹی انجام دے رہے تھے۔ فائرنگ سے تین اہلکار موقع پر جبکہ چوتھا ہسپتال منتقلی کے دوران جام شہادت نوش کر گیا۔