اڈپی: حادثاتی طور پرچلتی کار میں لگی آگ۔ معجزاتی طور پر بچ گئے مسافر !

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 9th September 2018, 12:38 PM | ساحلی خبریں |

اڈپی 9؍ستمبر (ایس او نیوز) چلتی کار میں اچانک آگنے اور بھڑکتے شعلوں کے درمیان مسافروں کے بال بال بچ نکلنے کا حادثہ جوڈو کٹّے کے قریب پیش آیا ہے۔ بتایاجاتا ہے کہ ماروتی 800کار ایک دیگر مسافر کے ساتھ خاتون چلا رہی تھیں ۔جب ڈرائیو کررہی خاتون نے کار کے اگلے حصے سے آگ کے شعلے نکلتے دیکھے تو اس نے سڑک پر ہی کار کھڑی کردی اور عجلت کے ساتھ دونوں کار سے باہر نکل آئے۔ پھر چند منٹوں کے اندر پوری کار آگ شعلوں میں بدل گئی۔

اتفاق سے اس موقع پر جو لوگ سڑک سے گزر رہے تھے انہوں نے بیچ سڑک پر جلتی ہوئی کار کے منظر کو اپنے موبائل میں قید کرنے میں زیادہ دلچسپی دکھائی اور کسی نے بھی فائر بریگیڈ کو اطلاع دینے کی زحمت نہیں کی۔فائر اسٹیشن حادثے کے مقام سے تقریباً نصف کلو میٹر کی دوری پر تھا۔ ایک نوجوان نے خود وہاں پہنچ کر عملے کو اس بات کی اطلاع دی۔ مگر جب تک فائر بریگیڈ کا عملہ موقع پر پہنچتا، کار پوری طرح جل کر خاکستر ہوگئی تھی۔

ٹاؤن پولیس اسٹیشن کے افسران نے جائے حادثہ پر پہنچ کر معائنہ کیا اور معاملہ درج کرلیا۔

ایک نظر اس پر بھی

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...

ہلیال میں جے ڈی ایس لیڈر کے گھر پر انتخابی افسران کا چھاپہ ۔تلاشی کے بعد خالی ہاتھ واپس لوٹے افسران؛ کیا بی جےپی کو شکست کا خوف ہے؟

پارلیمانی انتخابات کے پیش نظر چیک پوسٹس پر تلاشی مہم کے علاوہ ہلیال شہر کے گوداموں، شراب کی دکانوں، موٹر گاڑیوں کی بھی مسلسل تلاشیاں لے رہے ہیں۔

لوک سبھا انتخابات؛ اُترکنڑا میں کیا آنند، آننت کو پچھاڑ پائیں گے ؟ نامدھاری، اقلیت، مراٹھا اور پچھڑی ذات کے ووٹ نہایت فیصلہ کن

اُترکنڑا میں لوک سبھا انتخابات  کے دن جیسے جیسے قریب آتے جارہے ہیں   نامدھاری، مراٹھا، پچھڑی ذات  اور اقلیت ایک دوسرے کے قریب تر آنے کے آثار نظر آرہے ہیں،  اگر ایسا ہوا تو  اس بار کے انتخابات  نہایت فیصلہ کن ثابت ہوسکتےہیں بشرطیکہ اقلیتی ووٹرس  پورے جوش و خروش کے ساتھ  ...

بھٹکل میں بی کے ہری پرساد کا بی جے پی اور مودی پر راست حملہ، کہا؛ پسماندہ طبقات کومزید کمزور کرنے کی سازش رچی جارہی ہے

بی جے پی بھلے ہی اپنے آپ کو اقلیت مخالف پارٹی کے طور پر پیش کرتی ہو، مگر  دیکھا جائے تو یہ پارٹی حقیقتاً پسماندہ طبقات، دلت اور ادیواسیوں کو  مزید  کمزور کرنے کی سازش میں لگی ہوئی ہے اور صرف ایک طبقہ کو برسراقتدار پر لانے میں کوشاں ہے۔ یہ بات  آل انڈیا کانگریس کمیٹی (اے آئی ...